اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

Page 1 of 5 12345 LastLast
Results 1 to 10 of 44

Thread: گھر کا پیار حصہ دوئم

  1. #1
    Join Date
    Feb 2009
    Posts
    27
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    11
    Thanked in
    9 Posts
    Rep Power
    14

    Default گھر کا پیار حصہ دوئم


    حصہ دوئم
    ھم دونوں سیکس کے مزے میں گم تھے نازی اور میں ایک دوسرے کے ساتھ لیپٹے ھوے مزے کو انجواے کر رھے تھے کہ اچانک بیل کی آواز نے ہم دونوں کو چونکا دیا کہ اس ٹاُیم کون آگیا
    گھڑی کی طرف دیکھا تو بارہ بیجے تھے بیل دوبارہ بجی تو ہم لوگوں کو ہوش آیا میں جلدی سے اوپر اپنے روم کی طرف چلا گیا نازی نے بہی جلدی سے ٹراوزر اور شرٹ پہن لی اور گیٹ کھولنے چلی گی
    میں ننگا ہی روم مے آگیا تھا لن پورا جوش میں ٹن ٹن ھورھا تھا لیکن موڈ آف ہوگیا کہ اس وقت کس نے رنگ میں بھنگ ڈال دیا یہ سوچتے ہوےمیں باتھ روم میں گیا اور نازی کے نام کی مٹھ لگا کر نہا کر فریش ہوا کپڑے چینج کیے کہ اب نیچے جاکر دیکھوں کہ کون آیا تھا نیچے آیا تو دیکھا ثانی لاونج میں بیٹہی ٹی وی دیکھ رھی تھی میں لاونج میں آیا تو ثانی نے سلام کیا بھای آپ گے نی میں بولا بس ابھی جا راھا ھوں اور تم کیسے جلدی آگیں ثانی بولی کو بھای آج کالج میں اسٹرایک ھو گی تو کلاسسز آف ھو گیں میں اسکے سامنے بیٹھ گیا اسکے سامنے بیٹھتے ھوے میں نے پوچھا نازی کہاں ھے ثانی بولی آپی نہانے گی ہیں میں ٹی وی دیکھنے لگا کہ اچانک ثانی بولی اوہ میں نے اسکی طرف دیکھا تو جہاں اسکی نظر تھی میری نظر بہی اسکی نظر کے تعاقب میں گی تو میں بہی پریشان ھو گیا نیچے کارپٹ پر نازی کی پنک برا پڑی ھوی تھی میں نے ایک دم انجان بنتے ھوے ٹی وی کی طرف متوجہ ھو گیا جیسے میں نے کچھ دیکھا ہی نہی ثانی نے میری طرف دیکھتے ھوے نازی کی برا اٹھا لی میں ٹی وی دیکھنے میں مصروف رھا ثانی نے برا اٹھای اور روم۔ میں چلی گی اب یہ ایک نی مشکل کھڑی ھو گی تھی نازی جلدی میں برا اٹھنا بھول گی تھی جو اب ثانی اٹھا کر روم میں لیے گی تھی میں نے سوچا اب نازی ہی اسکو کلیر کرے گی ٹھوری دیر بعد نازی بہی نہا کر آگی اور ثانی بہی چینج کر کے آگی میری اور نازی کی نظریں ملیں لیکن میجھے اندازہ نہیں ھوا کہ ثانی نے برا کے بارے میں پوچھا یا نہی نازی بولی بھای کھانا لگا دوں میں بولا ھاں لگا دو ہم نے کھانا کھایا اس دوران نازی اور ثانی نے کو ی بات نی کی میں کھانا کھا کر گھر سے شاپ کی طرف نکل گیا اور سارے راستے یہی سوچتے ھوے شاپ پر پہنچ گیا دل اور دماغ میں یہی بات چلتی رھی شاپ پر پہنچ کر کام میں بزی ھو گیا 5بجے ٹھورا فری ھوا تو پھر وہی بات مری دماغ میں آگی میں نے موبایل اٹھا کر نازی کو مسج کیا
    میں۔ Hi
    نازی۔ جی بھای
    میں۔ کیا ھو رھا ھے
    نازی۔ کام کر رھی ھوں
    میں۔ ثانی کہاں ھے
    نازی۔ٹی وی دیکھ رھی ھے
    میں۔ تم اپنی برا تو لاونج میں ھی بھول گی تھی
    نازی۔ بھای آج تو بچ گے ثانی نے برا لا کر دی اور بولی آپی اپنی چیزوں کا خیال رکھا کریں آپ کی برا لاونج میں پڑی تھی بڑی مشکل سے بات بنای بھای یہ آج آپ کو کیا ھو گیا تھا
    میں۔ بولا جان ایک بھای کو اپنی بہن سے پیار ھو گیا ھے
    نازی۔ بھایئ یہ کیسا پیار ھے کہ بہن کے کپڑے ہی اتار دیے
    میں۔ نازی جان اس پیار کا مزا ہی الگ ھے کیوں تم کو ا چھا نہں لگا
    نازی۔ بھائ پتہ نہں مجھے تو سمجھ نہں آرھا کہ یہ ایک دم سے کیا ھو گیا
    - میں۔ جان بس کچھ نہیں سوچو i love you
    - نازی۔بھائ یہ جان نہ کریں میرا موبائل کبھی کبھی ثانی بہی استمعال کر لیتی ھے
    - میں۔ جان میسج ڈلیٹ کر دینا
    - نازی۔ٹھیک ھے لیکن آپ بہی احتیتاط کریں اب میں کام کرنے جا رھی ھوں
    - میں۔رات کو میسج پر بات کرو گی
    - نازی۔ نہی بھائ ثانی میرے ساتھ ھو تی ھے اس لیے رات کو مشکل ھے
    - میں۔اچھا جان لیکن میں تمھارے میسج کا انتیظار کروں نگا
    - نازی۔اچھا دیکھوں گی با ے
    - نازی سے پھر بات نہں ھوی میں بہی شاپ پر بزی ھو گیا دس بجے شاپ بند کی اور گھر آگیا رات کا کھانا ھم سب ساتھ ہی کھاتے تھے میں گھر آیا تو سب لوگ لاونج میں بٹھے ٹی وی دیکھ رھے تھے امی ابو کو سلام کیا ثانی بولی بھائ جلدی سے فریش ھو کر آیں بہت بھوک لگی ھے میں بولا بس تم لوگ کھانا لگاو میں فریش ھو کر آتا ھوں میں اپنے روم میں آیا شاور لیا اور چینج کرکے نیچے آگیا ٹیبل پر کھانا لگا ھوا تھا میں نیچے آیا تو سب لوگ ٹیبل پر آگے نازی اور ثانی میرے سامنے بھٹیں تھیں میرے ساتھ امی تھیں نازی کی طرف دیکھا تو نازی نارمل انداز میں کھانا کھا رھی تھی کھانا کھاتے ھوے ابو بولے کامی گھر میں سب مجھے کامی کہتے ہیں میں بولا جی ابو
    - ابو بولے کامی تمھاری پھوپھی کی بیٹی کی شادی کا کارڈ آیا ھے اگلے ہفتہ کو شادی ھے میں بولا ابو میرا تو مشکل ھے آپ کو تو پتہ ھے شاپ بند نہی کر سکتا آپ لوگ چلیں جایں ثانی بھائ چلیں نہ بہت مزا آے گا گاوں کی شادی ھے ہم لوگوں کے ساتھ VIP ٹریٹ منٹ ھو تا ھے میں بولا ثانی میرا بہی دل کررھا ھے لیکن مجبوری ھے امی ابو سے بولیں کہ آپ نازی اور ثانی کو لے جایں میں رک جاتی ھوں
    - فرینڈ میری پھو پھی رحیمیار خان کے پاس ایک جگہ ھے صادق آباد کے ایک گاوں میں رھتی ھیں تو سب لوگ اپنی راے دے رھے تھے ابو بولے بیگم پھر ھم لوگ چلتے ہیں تم تیاری کر لو

    حصہ دوئم2‎
    Inbox
    x

    kamran mahmood <[email protected]>
    1:26 AM (18 minutes ago)
    to me

    تمھارے بغیر تو میں نی جاوں نگا امی بولی کامی کو مشکل ھو گی میرے بیٹے کو ناشتہ اور کھانے کا مسلہ ھو گا بس آپ نازی اور ثانی کو لے جایں میری طرف سے معذرت کر لیجے گا میں بولا نہں کوئ مشکل نہں ھو گی آپ لوگ سب جایں ہم سب یہی بہث کر رہے تھے تو نازی بولی امی مرا جانا مشکل ھے میرے کالج کے ٹیسٹ ھو نے ھیں تو ثانی بولی آپی آپ کے بغیر تو میں بور ھو جاوں گی آپ بہی چلیں ابو بولے بس تو نازی کے ٹیسٹ ھیں تو کامی کا بہی پرابلم حل ھو گیا اسپر امی بولیں نازی بہی گھر پر اکیلی ھوگی میں ایسا کرتی ھوں کہ نجمہ کو کہہ دیتں ھوں کہ وہ کچھ دن کے لیے آجاے امی نے فون اٹھایا اور نجمہ خالہ کو کال میلا دی آپ کو نجمہ خالہ کے بارے میں بتا دوں نجمہ خالہ امی کی چھوٹی بہن ہیں نجمہ خالہ کے شوھر کویت میں جاب کرتے ہیں اور انکی شادی کو پانچ سال ھوے ہیں نجمہ خالہ اپنے ساس سسسر کے ساتھ رھتی ہیں اب خالہ کے آجانے سے نازی کے ساتھ مزا کیسے کرونگا میں تو خوش ھو گیا تھا کہ 3,4 دن نازی کے ساتھ مزا کرونگا نازی کی چودائ کا پروگرام تھا لیکن اب امی خالہ کو بہی بلا رہی تہیں نازی بولی امی خالہ کو کیوں تکلیف دے رھیں ھیں میں سب سنبھال لونگی امی بولی بیٹی تمھارے ٹیسٹ ھو نگے اور دن بھر تم گھر میں اکیلی رھو گی کامی تو رات کو دس گیارہ بجے تک آتا ھے
    امی کی بات سن کر نازی چپ ھو گی امی نے خالہ سے بات کرکے ہمیں بتا یا کہ خالہ جمیرات کو آجایں نگی یہ سن کر ابو بولے ہم تینوں جمیرات کی رات کو خیبر میل سے چلے جاتے ھیں میں نے نازی کی طرف دیکھا تو وہ نارمل تھی جبکہ ثانی اسکو بار بار یہ کہ رھی تھی کہ آپی چلو نہ نازی بولی یار مرے ٹیسٹ نہ ھو تے تو ضرور چلتی میجھے بہی پوپھی سے ملے ھوے کافی دن ھو گے ہیں ابو بولے کامی بعد میں تم اور نازی پھو پھی سے ملنے چلے جانا شاپ پر میں بیٹھ جاوں نگا میں بولا ہاں یہ ٹھیک ھے نازی نے بہی میرا ساتھ دیا نازی بولی میں اور بھائ چلیں جایں نگے
    میرے دماغ میں میں اب یہ چل رھا تھا کہ خالہ کے ہوتے ہوے تو کچھ نی ھو سکے گا ابو امی سے بولے کہ اب تم تیاری کر لینا امی نے ثانی کو بہی کہا کہ تم بہی اپنے کپڑے وغیرہ دیکھ لینا امی ابو اپنے روم میں چلے گے نازی اور ثانی بہی اپنے روم میں چلی گیں میں بہی اٹھ کر اپنے روم میں آگیا اور اسی بارے میں سچوتے ھوے سو گیا
    صبح آنکھ کھلی ٹائم دیکھا تو دس بج رھے تھے باتھ روم سے فارغ ھو کر نیچے آیا تو امی لاونج میں بیٹھی ھوی تھیں میں نے امی سے پوچھا امی خریت آپ بینک نی گیں امی بولیں آج آف کیا ھے بازار بی جانا ھے اور شادی میں جانے کی تیاری کرنی ھے امی بولیں ناشتہ بنا دوں میں بولا جی امی امی کیچن میں ناشتہ بنانے چلی گیں نازی اور ثانی کالج چلی گیں تھیں میں ٹی وی دیکھ رھا تھا کچھ دیر کے بعد امی ناشتہ لے کر آگیں میں نے ناشتہ کیا امی بولیں کامی نا شتہ کرکےمیرے روم کی الماری کے اوپر سے ہینڈ کیری اتار دینا میں بولا ٹھیک ھے ناشتہ کرکے میں امی کے روم میں گیا امی نے الماری کے پاس کرسی رکھ دی میں کرسی پر کھڑا ھو کر ہینڈ کیری اتارنے کی کوشش کر رھا تھا امی کرسی کو پکڑ کر کھڑی تھیں اچانک میری نظر نیچے گی تو امی کے جھکنے کی وجہ سے امی کے گورے گورے ممے جو بلیک برا میے قید تھے آج فرسٹ ٹائم اس طرح امی کے ممے دہکھ رھا تھا امی کے مموں پر نظر پڑتے ہی میرے سوے ہوے لن نے انگڑای لی امی اوپر کی طرف ھی دیکھ رھی تھیں امی بولی کامی جلدی کرو کیا ہوا میں بولا امی بہت پیچھے رکھا ہوا آگے کافی سامان رکھا ہوا ہے امی بولیں لاو وہ سامان اتار کر میجھے دو میں نے امی کو نیچے سامان پکڑانے لگا امی نے ہاتھ اوپر کے اور سامان کو پکڑنے کے لے ہاتھ اوپر کیا تو اچانک سامان کو پکڑتے ہوے امی کا ہاتھ میرے لن سے ٹکرا گیا جس سے لن کو اور مجھے بہی ایک جہٹکا لگا امی کا ہاتھ لگتے ہی لن ٹراوزر میں ٹن ٹن ہو گیا لن پورا کھڑا ھو گیا تھا امی کا چہرہ مرے لن کے قریب تھا اور امی کی نظر مرے لن پر تھی سامان اتارتے ہوے امی کا ہاتھ کی بار میرے کھڑے لن سے ٹیچ ہوا تھا جب سارا سامان نیچے اتار دیا تو پھر ہینڈ کیری اٹھا کر نیچے امی کو پکڑانے لگا جب امی ہینڈ کیری پکڑنے لگیں ہینڈ کیری ٹھوڑا بھاری تھا امی نے پکڑنے کی کوشش کر رھی تھییں کہ اچانک امی ہینڈ کیری پکڑنے کے چکر میں امی نے میرے لن کو پکڑ لیا امی کا ہاتھ لن پر ذرا سخت تھا میرے منہ سے سی کی آواز نکل گی امی اوہ کامی بیٹا سوری میں بولا نی کوی بات نی امی نے ہینڈ کیری نیچے رکھا امی کا چہرہ لال ہو رھا تھا میں کہڑے ہو کر ٹراوزر کے اوپر سے لن کو سہلا رھا تھا امی پھر بولیں سوری بیٹا پتا ہی نی چلا چلو تم۔نیچے آجاو میں یہ سامان اوپر رکھتی ھوں امی کی نظر لن پر تھی میں بولا نی آپ دیں میں رکھ دوں گا امی بولی نی تم۔نیچے آجاو میجھے کچھ اور دیکھنا ھے میں نیچے آگیا امی نے میرے کندھے پر

    حصہ دوئم3‎
    Inbox
    x

    kamran mahmood <[email protected]>
    Wed, Oct 2, 11:49 PM (1 hour ago)
    to me

    پر ہاتھ رکھا اور کرسی پر چھڑ گیں اب میں نیچے کھڑا تھا اور امی کرسی پر کھڑی تھیں سامان پکڑاتے ہوے میرا ہاتھ امی کی رانو سے ٹکرا رھا تھا اور پھر میں نے سامان ہکڑاتے ھوے اہنا ہاتھ امی کی چوت سے لگا دیا میں سامان پکڑے کھڑا تھا اور ہاتھ امی کی چوت کے ساتھ ٹیچ کیا ہوا تھا امی الماری کے اوپر سیٹنگ کر رھی تھیں پھر امی نے مرے ھاتھ سے سامان لیا تو میں نے ہاتھ چوت سے رگڑتے ھوے نیچے لے گیا امی کی چوت میرے منہ کے قریب تھی دل کر رھا تھا کہ چوت کو پیار کر لوں امی بولی کامی دوسری کرسی بھی لے کر آجاو اور الماری کے اوپر سامان صئح کروا دو میں لاونج میں گیا اور دوسری کرسی لا کر اس کر سی کے ساتھ جوڑ کر اسپر کھڑا ھو گیا اور امی کے ساتھ سامان ٹھیک کروانے لگا اور اسی دوران میں ٹھورا آگے ہوا تو میرا کھڑا لن امی کی چوت کے ساتھ لگ گیا نہ تو امی کچھ بولیں اور نہ ہی میں پیچھے ہوا ہم دونوں اسی طرح الماری کے اوپر سامان ٹھیک کر رھے تھے اور میرا لن چوت کے ساتھ لگا ھوا تھا امی نے بہی لن کو مہسوس کر رھی تھیں اور چپ تھیں کام ختم کرنے کے بعد میں کرسی سے نیچے اترا تو امی بولی کامی میرا ہاتھ پکڑو میں نیچے اتروں میں نے امی کا ہاتھ پکڑا اور امی ٹھوری سی صہتمند ہیں نیچے اترتے ھوے امی کی کرسی ہلی تو امی لر کھڑا کر گرنے لگیں تو میں نے پکڑ کر اپنے ساتھ لگا لیا اور امی کے ممے میرے سینے کے ساتھ دب گے اور میرے دونوں ھاتھ امی کی گانڈ پر تھے یہ سین کھچ ہی دیر رہا اور امی شرمیندہ سی ھو کر مجھ سے الگ ہو گیں یہ سب کچھ اتنا اچانک ہوا کہ سمجھ نی آیا امی کا پورا جسم کا لمس مہسوس کرکے بہت مزا آیا امی نے الگ ہوتے ہوے کہا کامی یہ کرسیاں باہر رکھو میں کیچن میں کام کر لوں میں نے کر سیاں لاونج میں رکھیں اور ٹی وی دیکھنے لگا امی نے کیچن سے آواز دی اور کہا کامی بارش ہونے والی ھے اوپر چھت پر جو کپڑے ٹنگے ھوے ہیں وہ اتار کر لے آو میں اوپر گیا تار پر سے کپڑے اتار تے ھوے کپڑوں کے ساتھ تین برا بھی ھاتھ میں آگیں برا امی نازی اور ثانی کی تھیں تینوں برا ہاتھ مے لے کر ان کے سائز کا اندازہ کر رہا تھا برا ہاتھ میں میں پکڑ کر میں امی اور بہنوں کے مموں کے بارے میں گم تھا کہ پیچھے سے امی کی آواز آی کامی میں ایکدم پیچھے مڑا تو میرے ھاتوں میں برا تھیں امی نے مرے ھاتوں میں برا دیکھتے ہوے بولی کامی کپڑے لانے کا کہا تھا تم یہ کیا کر رھے ھو امی مری طرف بڑھیں مرے ھاتھ سے برا لے کر کپڑے اتارنے لگیں اور غصہ سے بولیں یہ کیا کر رھے تھے میں بولا سوری امی بس ایسے ہی امی میرے آگے کھڑے ھو کر کپڑے اتارتے ھوے بولیں یہ کپڑے لے کر نیچے چلو باقی میں لے کر آتی ھوں میں کپڑے لے کر نیچے آگیا کپڑے لاونج میں رکھے امی ابھی اوپر ھی تھیں میں دل میں سوچ رھا تھا کہ یہ آج کیا ھو رھا اس سے پہلے کبھی امی کے ساتھ ایسا کچھ نہں کیا تھا امی کیا سوچ رھی ہونگی کے انکا بیٹا اپنی ماں کے ساتھ ہی مزے لے رھا ھے میں انہی سوچوں میں گم تھا کہ امی باقی کپڑے لے کر نیچے آگیں کامی یہ کپڑے پکڑو بارش شروع ھو گی ھے میں جب امی سے کپڑے لینے اٹھا تو دیکھا امی پوری گیلی ہو رھی تھی امی سے کپڑے لیتے ھوے میری نظر امی کی شرٹ میں سے کالی برا. پر پڑی جو شرٹ گیلی ہونے کی وجہ سے صاف نظر آ رہی تھی امی سے کپڑے لیتے ھوے میرے ھاتھ امی کے مموں سے ٹچ ھو گے کپڑے لے کر صوفے پر رکھے امی صوفے پر بیٹھ گیں اور بولیں سارے کپڑے گیلے ھو گے ہیں تم فریج سے پانی نیکالو میں چینج کر کے آتی ھوں میں کیچن میں گیا اور گلاس لے کر فریج سے پانی نیکال کر جب لاونج میں آیا تو امی بھی اپنے روم سے نکلی اور امی کو دیکھ کر تو میری سانسیں رک گیں امی نے باریک کپڑے کی شلوار قمیض پہن کر روم سے نیکل رھی تھیں اور شرٹ کے نیچے برا بھی نہں پہنی ھوی تہی امی کے مموں کی گولا ئ اور نیپل صاف نظر آ رھے تھے امی کا پورا جسم نظر آرھا تھا امی کو دیکھ کر میری حالت یہ تھی کہ امی کے کپڑے اتار کر لن چوت میں ڈال دوں لیکن یہ کرنا آسان نہں تھا امی گھر میں ڈوبٹہ نہں لیتں ہیں امی لاونج میں بیٹھ گیں اور پانی پینے لگیں باھر بارش بہت تیز ھو رہی تھی امی بولی کامی شاپ پر کب تک جاو گے میں بولا آج موڈ نہں ھے اسلم کے پاس چابی ھے وہ کھول لے گا امی بولیں چلو یہ تو ٹھیک ھے میں بولا امی پکوڑے بنا لیں پکو ڑے کھانے کا دل کر رھا ھے امی بولیں اچھا بنا دے تی ہوں اسی دوران لائٹ چلی گی امی بولیں لو اب اسنے بھی اس وقت جانا تھا زرا سی بارش ہو تو یہ لوگ لائٹ بند کر دیتے ہیں یہ کہتے ہوے امی اٹھ کر کیچن میں جانے کے لیے اٹھی تو اٹھنے سے امی کی شرٹ جیسکا گلا کافی کھلا تھا امی کے گورے اور موٹے مموں کا دیدار ھو گیا امی نے کیچن سے آواز دی کامی یہاں تو اندھیرا ھے تم چارجنگ لائٹ کیچن میں رکھ دو میں بولا امی چارجنگ لائٹ کہاں رکھی ھے امی بولں بیٹا اسٹور
    حصہ دوئم4‎
    Inbox
    x

    kamran mahmood <[email protected]>
    Wed, Oct 2, 11:55 PM (1 hour ago)
    to me

    میں رکھی ھے لاونج کے ساتھ ہی ایک اسٹور ںھے جسمیں گھر کا فالتو سامان رکھتے ہیں میں موبائل کی لائٹ میں چارجنگ لائٹ دھونڈ رھا تھا کہ امی کی آواز آی کامی کیا ھوا لائٹ ملی میں بولا امی کدھر رکھی ھے امی بولیں روکو میں آتی ھوں امی مرے پاس آیں اور بولی ھٹو میجھے اندر جانے دو میں سائڈ پر ھو گیا امی اندر اسٹور میں چلی گیں اور مجھے کہا کہ موبائل کی لائٹ آن کرو میں امی کے پیچھے مو با ئل کی لائٹ آن کر کے کھڑا ھوا تھا امی چارجنگ لائٹ ڈھوندنے لگیں اب امی مرے آگے جھکی ہوی سامان میں سے چارجنگ لائٹ ڈھو ند رھی تھیں امی کی گانڈ مرے لن۔کے سامنے تھی میں تھو ڑا آگے ہوا اور لن کو امی کی موٹی گانڈ کے ساتھ ٹچ کرکے کھڑا ہو گیا امی کی نرم۔گانڈ سے لن ٹچ ہوتے ہی لن کھڑا ہو گیا امی نے کپڑے بہی ایسے پہنے تھے کہ امی کے جھکنے سے گانڈ پوری واضع ہو گی تھی امی کو بھی فیل ہو گیا کہ میرا لن انکی گانڈ سے ٹیچ ھے امی نے لائٹ نکال کر سیدھی ھو گیں اور بولیں یہ لو مل گی میں سائڈ پر ھوا امی ۔ے مجھے لائٹ دی اور کہا کہ آن کرکے کچن میں لے آو میں نے لائٹ آن کی اور کیچن میں لے کر گیا جب لائٹ امی کے جسم پر گی تو ایسا لگا امی ننگی کھڑی ہیں چارجنگ لائٹ میں امی کا جسم صاف نظر آراھا تھا امی بولیں کامی یہ لائٹ اپر کیبنٹ پر رکھ دو میں آگے ہوا اور پھر لن کو امی کی گانڈ سے ٹچ کرکے لائٹ رکھنے لگا لیکن رکھی نی جا رھی تھی امی مرے آگے کھڑی تھیں میں اور آگے ہوا اور لن کا پورا گانڈ کے اندر کیا اور لائٹ رکھنے میں کامیاب ہوا اب امی کو بھی اس کھیل میں مزا آرھا تھا اور میرا بہی حوصلہ بڑھ گیا تھا میرا پیچھے ہٹنے کو دل نہں کر رھا تھا لیکن میں پچہے ہٹا تو امی بولیں کامی روکو کیبنٹ سے بیسن بھی نیکال دو میں نے پھر اسی طرح کیا اور اس دفہ بیسن نیکال کر میں لن کو گانڈ کے ساتھ کھڑا رھا تو امی بولیں کیا ہوا میں نے ہمت کرتے ھوے بولا امی ایک بات کہوں امی بولیں ہاں بولو میں نے لن کو گانڈ پر دباتے ہوے کہا آپ بہت پیاری ہیں امی بولیں خیریت ہے آج ماں پے بہت پیار آرھا ھے میں بولا امی آپ تو ہیں پیار کے قابل اب امی بھی کچھ مزا لینا چاھتی تھیں کو نکہ امی بہی اپنی گانڈ کو لن پر دبا رھی تہیں میں نے اپنے ہونٹ امی کی گردن پر رکھ دے امی کی سسکی نکل۔گی اور بولیں کامی یہ کیا کر کرھے ہو ایسا نہں کرو کوی اپنی ماں کے ساتھ بہی ایسا کرتا ھے مِیں بولا امی اپ اتنی سیکسی ہیں کے میں کیا کروں امی بولیں بےشرم ماں کو سیکسی کہ رھا ھے میں نے امی کو اپنی طرف گھمایا اور امی کو اپنے ساتھ لیپٹا لیا امی کے ممے مرے سینے کے ساتھ دبے ہوے تھے اور لن چوت کے ساتھ امی میری باہنوں میں قید تھیں میں امی کی کمر سہلا رھا تھا امی بولیں کامی یہ غلط ھے میں بولا امی پیار میں کچھ غلط نہی ہو تا امی i love u امی بولیں بیٹا یہ نہ کرو میں بولا امی اس مو سم کو اور اپنے بیٹے کے پیار کو انجواے کریں بس اور امی کا ہاتھ پکڑ کر لاونج میں لے آیا امی میں صوفے پر بٹھ گیا اور امی کو اپنی گود میں بٹھا لیا اور اپنے دونوں ہاتھ آگے لیجا کر امی کے ممے پکڑ کر دبانے لگا امی میرے کھڑے لن کو اپنی گانڈ پر دبا کر بٹھی تھیں میں امی کے بڑے اور ٹائٹ مموں کو دبا رھا تھا امی بہی گانڈ کو لن پر دبا رھی تہں تھو ڑی دیر اسطرح مزا کرنے کے بعد میں نے امی کو اٹھا دیا امی کے اٹھتے ہی میں نت اپنا ٹراوز اتار دیا امی بولی کامی کیا پاگل ہو گے ہو میں بولا جی جان اب تم کو چودنا ہے امی بولیں یہ کونس زبان بول رھے ہو اور امی کی نظر میرے کھڑے لن پر تھی میں بولا جان بس اب نہ ٹرپاو اور امی بولیں اور کیا میں بولا اس موسم کو انجواے کرو اور امی کو لیپٹا کر اپنے ہونٹ امی کے ہونٹوں پر رکھ دے اور امی کے ہونٹوں کو چوسنے لگا امی بہی گرم ہو گیں تھیں اپنی چوت مرے لن کے ساتھ رگڑ رھی تھیں ہونٹ چوسنے کے بعد میں نے امی کی قمیض اتارنے لگا امی نے منع کیا مگر اب منی دماغ پر چھڑ گی تھی امی کی قمیض اترتے ہی امی کو گورا بدن اور ٹائٹ ممے لائٹ براون نپل کے ساتھ میری نظروں کے سامنے تھے امی کے ممے اس عمر میں بہی جوان لڑکی کی طرح تنے ہوے تھے نپل بہی ٹائٹ تھےمیں نے زبان نپل پر ٹچ کی امی کے منہ سے سسکی نکلی اف کامی اور میں ایک نپل کو چوس رھا تھا اور دوسرے ممے کو دبا رھا تھا میں اپنا ھاتھ نیچے لے گیا اور شلوار میں ھاتھ ڈال کر چوت پر رکھا تو امی کو جیسے کرنٹ لگا ہو امی کی چوت گیلی ہو رھی تھی میں نے امی کی شلوار بہی اتار دی اپ ماں بیٹا دونو ننگے ھو گے تھے امی کی چوت پر ٹھوڑے ٹھورے بال تھے آج پہلی دفہ کسی عورت کو ننگا دیکھ رھا تھا اور وہ ننگی عورت میری ماں تھی امی کی گانڈ بہی ٹائٹ رھی امی نے اپنے جسم کو بہت فٹ رکھا ہوا تھا
    حصہ دوئم4‎
    Inbox
    x

    kamran mahmood <[email protected]>
    1:07 AM (40 minutes ago)
    to me

    امی کا سیکسی اور چیکنا جسم میری آغوش میں تھا میں امی کو اپنے ساتھ لیپٹا کر امی کے جسم پر ہاتھ پہر رھا تھا امی کے نرم نرم چوٹر اف عورت کے جسم کا بہی کیا مزا ھے اور میری امی کا جسم تو بہت سیکسی تھا یہ آج پتہ چلا باھر بارش بھی تیز ھو رھی تھی اور گھر میں ماں بیٹا ایک دوسرے سے لپٹے ھوے تھے اچانک بجلی کڑکنے کی آواز آی اور امی میرے ساتھ لیپٹ گیں امی کے ممے میرے چوڑے سینے میں دبے ھوے تھے اور لن چوت کے ساتھ میں بولا امی کیسا لگ رھا ھے امی نے نیچے سے چوت کو لن پر رگڑتے ھوے کہا بیٹے یہ آج تم نے کیا کر دیا میرے جسم میں آگ لگا دی ھے میں تو یہ سب بھول گی تھی تمھارے ابو تو جب موڈ ھو تو کر لیتے ہیں نہیں تو سو جاتے ہیں میں بولا جان میں ھوں نہ اب تم اپنے بیٹے سے چودوا لیا کرنا جب تمہارا دل کرے امی بولیں بےشرم کیسی گندی زبان بول رھا ھے میں بو لا امی سیکس کا اصل مزا اسی زبان میں تو آتا ھے امی بولیں تمھارے ابو تو ایسا کیچھ نہی بولتے میں بولا جان ابو کو چھو ڑو اور سیکس کا اصل مزا لینا ھے تو سیکس کی زبان میں بات کرکے مزا لو امی بولیں کامی بہت بےشرم ھو گے ھو میں امی کو لے کر امی کے بیڈ روم میں آگیا امی کو بیڈ پر لیٹا کر امی کے اوپر لیٹ گیا اور امی کے ھونٹوں کو چوسنے لگا امی بہی گرم ھو گی تھیں اور وھ بہی مرے ھونٹوں کو چوس رھی تھیں ہم دونوں کی زبانیں بہی ایک دوسرے کہ منہ میں میں گھوم رھی تھیں امی بولی کامی کیچھ کرو میں بولا جان کیا کروں امی بولیں جو بہی کرنا ھے جلدی کرو میں بولا جان تم بتاو تو کیا کروں امی بولیں اندر ڈال دو میں بولا کیا امی نے نیچے لن کو پکڑ کر کہا اس کو اندر ڈال دو میں بولا جان ٹھیک سے بولو مجھے سمجھ نہی آرھا امی بولیں نہی مہجے شرم آرھی ھے میں بولا اب کیسی شرم مزا لینا ھے تو پھر شرم نہ کریں امی بولی اچھا کوشش کرتی ھوں میں نے ایک ذور دار کس کیا اور بولا جی جان بولو امی بولیں کامی اپنا لن میری چوت میں ڈال دو
    مِیں بولا جان ابھی ڈالتا ھوں یہ کھہ کر میں
    امی کے اوپر سے اوٹھا اور امی کے مموں کے نپل کو منہ مے لے کر چوسنے لگا امی کے نپل اکڑے ھوے تھے اکڑے ھوے نپل چوسنے کا مزا ہی الگ ھے امی کے نپل چوس رھا تھا اور ایک ھاتھ سے نیچے چوت کو سہلا رھا تھا
    امی کامی پلیز لن چوت میں ڈال دو اور نہ ٹرپاو پلیز اف آہ آہ جانی لن اپنی ماں کی چوت میں ڈال دو میں بولا جان تھو ڑا صبر کرو پورا لن اندر ڈالوں گا یہ کہتے ہوے میں نیچے آیا اور امی کی چوت پر زبان رکھ دی جو پانی سے گیلی ھو رھی تھی چوت پر زبان رکتھے ہی امی کو کرنٹ سا لگا اف بیٹا یہ کیا کر رھے ھو اف میں بولا جان چوت کا پانی بہی پینا ھے اور یہ کہتے ھوے میں نے امی کی چوت کو منہ مے لے لیا اور چوت کو چوسنے لگا امی مزے سے سسکیاں لے رھیی تھی اور چوت سے پانی کا فوارہ نکل رھا تھا ایسا لگ رھا تھا کہ پہلی دفہ امی کی چوت کو چاٹ رھا ھوں اس سے پہلے ابو نے امی کی چوت نہی چاٹی ھو گی امی چوت چاٹنے سے پاگل ہو رہی تھیں کا می بس کر اب چود دے یہ سنتے ہی میں سیدھا ھوا اور لن چوت پہ رکھا اور چوت گیلی ھونے کی وجہ سے لن امی کی گرم چوت کے اندر چلا گیا تھا میں نے دونوں ھاتھ امی کے مموں پر رکھے اور امی کی چودای شروع کر دی اور اس موسم کو انجواے کر رھا تھا امی کی چودای جاری رھی لن چوت کے اندر باھر ھو رھا تھا امی بہی اپنی گانڈ اٹھا اٹھا کر چودای کر وارھی تھیں کامی ذور ذور سے چود بہت مزا آرھا ھے ایسا مزا تو کبہی نہی آیا ہاں کامی ماں کی چوت کو ٹھندا کردے اف اہ اور تیز میں آرھی ھوں میں بولا جان میں بہی فارغ ھونے والا ھوں چوت نے لن کو جکڑ لیا تھا امی کے فارغ ھو تے ہی مرے لن نے بہی منی کا سیلاب امی کی چوت میں چھوڑ دیا ہم دونو کا پسینے میں بھگے ھوے تھے میں نڈھال ھو کر امی کے اوپر گر گیا امی پیار سے میرے بالوں میں ھاتھ پہرتے ھوے کامی یہ کیا تھا میں بولا ماں بیٹے کا پیار امی نے میرے سر پر ہاتھ مارتے ہوے کہا بےشرم یہ تو میاں بیوی والا پیار رھا تو میں بولا جان آج سے تم میری سوٹ وائف ھو امی بولیں اچھا شوہر صاحب اب مجہے اٹھنے دو میں بولا جان ایک دفہ اور امی بولیں نہی ایک ہی دفہ میں یہ حال کردیا ھے بس اب اٹھو میں نہا لوں نازی اور ثانی بہی آتی ھو نگی میں بولا جان لو یو امی بولیں می ٹو جان چودای کا مزا آیا امی شرماتے ھوے اچھا اب اٹھو میں بولا جان پہلے بتاو چودای کا مزا آیا امی میرے گالوں پہ کس کرتے ہوے جی جانی بہت مزا آیا میں نے امی کو کس کیا اور امی کے اوپر سے اٹھ گیا امی کی چوت سے میری منی باھر نکل رھی تھی امی نے چوت پر ھاتھ پہرتے ھوے کامی لو یو امی اٹھ کر واش
    Last edited by Admin; 01-01-2020 at 11:59 PM.

  2. The Following 2 Users Say Thank You to kamoo200696 For This Useful Post:

    aloneboy86 (04-10-2019), suhail502 (08-10-2019)

  3. #2
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    141
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    76
    Thanked in
    52 Posts
    Rep Power
    17

    Default

    Yar ia ka pehle part kis name se hay or vo kahan pay para hay

  4. The Following User Says Thank You to Nadaan1122 For This Useful Post:

    suhail502 (08-10-2019)

  5. #3
    Join Date
    Sep 2019
    Posts
    3
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    2
    Thanked in
    2 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    بھائی پہلا حصہ بھی شئیر کرو۔۔۔

  6. The Following User Says Thank You to siblingsex For This Useful Post:

    suhail502 (08-10-2019)

  7. #4
    Join Date
    Jan 2010
    Posts
    113
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    66
    Thanked in
    39 Posts
    Rep Power
    22

    Default

    پہلا حصہ کہا۔ ہے

  8. #5
    Join Date
    Feb 2009
    Posts
    27
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    11
    Thanked in
    9 Posts
    Rep Power
    14

    Default


    گھر کا پیار حصہ سوئم
    اب اٹھو میں بولا جان پہلے بتاو چودای کا مزا آیا امی میرے گالوں پہ کس کرتے ہوے جی جانی بہت مزا آیا میں نے امی کو کس کیا اور امی کے اوپر سے اٹھ گیا امی کی چوت سے میری منی باھر نکل رھی تھی امی نے چوت پر ھاتھ پہرتے ھوے کہا کامی لو یو امی اٹھ کر واش روم میں چلی گیں
    میں ننگا ھی بیڈ پر لیٹا ھوا تھا اور یہ سوچ رھا تھا کہ لائف کی پہلی چودائ کی تو وہ بھی ماں کے ساتھ فرینڈز یہ سب کچھ اچانک ہوتا چلا گیا اور پتہ ہی نہی چالا کہ ماں نے اپنے بیٹے سے چو دائ کر والی لگتا ہے کہ ماں بھی لن کے لے تڑپ رہی تھی انہی سوچوں میں گم لیٹا ھوا تھا کہ امی ننگی ہی باتھ روم سے باہر آگیں امی کو اب پوری طرح ننگا دیکھ رھا تھا کیا کمال کا جسم تھا 42 کے ممے تھوڑی باہر کو نکلی ہوی گانڈ اور تھوڑا سا باہر کو نیکلا ہوا پیٹ اور اس کے نیچے چوت گورا بدن جو نہنانے کی وجہ سے چمک رھا تھا اور امی کے ننگے جسم کو دیکھ کر لن نے بھی ہوشیاری پکڑ لی تھی امی لن کی طرف دیکھتے ہوے کامی یہ تو پھر کھڑا ہے میں بولا جان تم ہو جو اتنی سیکسی امی بولیں بس بس زیادہ مسکہ نہں اب اٹھو نہا لو بارش بھی رک گی ھے میں پکوڑے بنا لوں نازی اور ثانی بھی آنے والی ہو نگی میں اٹھ کر امی سے لپٹ گیا اور گانڈ پر ھاتھ پھرتے ہوے بولا جان ایک اور راونڈ ہو جاے امی نے میرے لن سے چوت کو رگڑتے ہوے کہا نہی کامی اب نہی یہ سب کیسے ہو گیا اور نہی ہو نا چاہے تھا میں نے امی کے ہونٹوں پر کس کرتے ہوے کہا جان یہ نہ سوچوں بس یہ پیار تھا اور جب پیار ہوجاے تو پھر کیچھ نہی سوچنا چھاے اب تم میری بیگم ہو اور تم کو چودنا میرا فرض ہے امی بولیں کامی آج تو یہ ہو گیا اور گھر میں تمھاری دو بہنیں بہی ہیں اگر کسی کو پتہ چل گیا تو ہم لوگ کہیں منہ دیکھانے کے قابل نہیں رہیں نگے میں بولا جان کیچھ نہی ہو گا اور کسی کو پتہ نہں چلے گا گھر کا پیار گھر میں رھے گا امی بولیں کامی پلیز بس یہ خیال رکھنا اب جو ہو گیا ہے وہ اور کسی کو پتہ نہ چلے میں بولا جان میں کس کو بتاوں نگا امی بولیں اچھا اب مجھے چھوڑو اور تم بھی فریش ھو جاو میں بولا اچھا اب کب دو گی امی بولیں کیا میں بولا چوت امی نے مجھ سے الگ ہو تے ہوے کہا کہ چلو نیکلو میرے روم سے ابھی دل نہی بھرا میں بولا جان تم اتنی سیکسی ہو دل کرتا ہے چودتا رھوں امی غصہ سے کامی آج کے لیے اتنا ہی اب تم جاو میں بولا اچھا ایک شرط پر امی بولیں وہ کیا میں بولا بریزر اپنے ہاتھ سے پہناوں نگا امی بولیں اچھا الماری سے میری بلیک بریزر نیکال کر پہنا دو میں نے الماری کھولی اور امی کی بلیک بریزر نیکال کر امی کے پاس آگیا امی میری طرف پیٹھ کر کے کھڑی ہو گیں میں نے پیچھے سے لن گانڈ کے ساتھ ٹچ کیا تو امی کے منہ سے سسکی نکلی میں نے لن کو گانڈ میں دبا دیا امی نے بھی اپبے چوٹڑ میرے لن کے ساتھ جوڑ دے اسی کنڈیشن میں مینے امی کو بریزر پہنا دیا امی نے فوران مری طرف منہ کیا اور اپنی برزر کو مموں پر ٹھیک کرتے ہوے میرے لن کو دباتے ہوے بولیں کامی اس کو سمجھاو اور اپنے روم میں جاکر فریش ہو امی نے شلوار پہن لی تھی میں بھی اپنے روم میں آگیا اور نہنانے کے لیے واش روم میں گھس گیا نہا کر باہر نکلا ٹرازر اور بنیان میں نیچے آیا تو نازی اور ثانی لاونج میں ٹی وی دیکھ رھی تھیں لائٹ آگی تھی امی کیچن میں تھیں ثانی اور نازی نے میجھے دیکھا تو ******کیا میں نے جواب دیا ثانی بولی بھای آج آپ گے نہی میں بولا ثانی ایک تو بارش بہت تیز ہو رہی تھی اور دوسرے آج امی کو کام تھا تو امی نے روک لیا امی نے کیچن سے آواز دی ثانی یہ. پکوڑے لے جاو میں نازی کے برابر میں جاکر بیٹھ گیا اور نازی کے ھاتھ پر ھاتھ رکھتے ہوے آہستہ سے اس کے کان میں کہا جان کیسی ہو نازی نے پیچھے مڑ کر کیچن کی طرف دیکھا اور بولی بھای کیا کر رھے ہیں ثانی آجاے گی میں بولا جان کیچھ نہیں ہوتا نازی بولی بھای کنٹرول کریں امی بھی گھر پر ہیں میں بولا جان آج تو موسم رومینس کا ہے نازی بولی بھای ابھی تو کیچھ نہیں ہو سکتا اتنے میں ثانی پکوڑے لے کر آگی
    ثانی بولی بھای آج موسم بہت اچھا ہے ہمیں کہیں گھومانے لے جایں میں بولا بولو کہاں چلنا ہے ثانی سمندر پر چلتے ہیں میں بولا چلو پھر تیار ہو جاو امی کیچن سے نکلتے ہوے کہاں جانے کا پروگرام ہے ثانی بولی امی موسم اچھا ہے تو بھای کے ساتھ سمندر پر جانے کا کہ رہی ہوں امی بولی کو ی نی جانا کل ہم لوگوں کو رحیمیار خان جانا ہے شادی میں جانے کی تیاری کرو ثانی بولی امی تیاری ہو جاے گی امی بولیں نہیں آج نہیں آج بہت کام ہے اور تم ایسا کرو بھای کے ساتھ جاو اور ٹیلر سے اپنے اور میرے کپڑے لے آو ثانی بولی میں نی جارہی ٹیلر کے پاس آپ چلی جایں امی بولیں کامی تم بائک نیکالو میں آباعیا پہن کر آتی ہووں اور ثانی اور نازی تم لوگ جب تک گھر کی صفائ کرو امی بولیں
    امی بولیں کامی تم بائک نیکالو میں آباعیا پہن کر آتی ہوں اور ثانی اور نازی تم لوگ جب تک گھر کی صفائ کرو امی بولیں کامی تم بھی چینج کر کے آو میں اوپر گیا ٹراوزر کے اوپر ٹی شرت پہن کر نیچے آگیا امی نے میجھے دیکھا تو بولیں یہ کیا میں بولا امی بارش کا موسم ھے یہ ٹراوزر اور ٹی شرٹ ٹھیک رھے گی امی بولیں اچھا بائک نیکالو میں آرھی ھوں میں نے بائک باھر نیکال لی بارش رک گی تھی امی میرے ساتھ بائک پر بیٹھ گیں اور بولی کامی پہلے ٹیلر کے پاس چلو پھر مارکیٹ چلنا ھے کیچھ سامان لینا ھے میں بولا جو میرے آقا امی نے پیچھے سے سر پر چپت لگاتے ہوے بولیں زیادہ شوخی نہیں میں نے بائک کو برئک لگای اور امی مموں سمیت مجھ سے ٹچ ھو گیں امی نے عبایا تو پہنا ہوا تھا لیکن مجہے مہسوس ہوا کہ امی نے بریزر نہں پہنا امی بولیں یہ کیا بتمیزی ھے میں بولا بریک ھی تو لگای ھے امی بولی میں سب سمجھتی ھو ں کیوں لگای ھے میں کیا سمجھیں امی نے اپنے ممے مری کمر سے دباتے ھوے بولیں اس لے میں بولا اور یہ بریزر کس خوشی میں اتار کر آی ہیں امی بولی بس ایسے ہی میں بولا یہ کیوں نھی کہتیں کے میجھے گرم کرنے کے لیے بریزر نہں پہنی امی بولیں اچھا تو تم ایسے گرم ہو جاتے ہو میں بولا جان زرا لن۔پر ھاتھ ٹچ کرو تو پتہ چلے امی مموں کو میری کمر پر دباتے ھوے پاگل ھو گے ھو ہم روڈ پر ھیں شرافت سے بائک چلاو اسی طرح امی کے مموں کا مزا لیتے ھوے ہم لوگ ٹیلر کی دوکان پر پہنچ گے امی نے کپڑے لیے اس کے بعد ہم لوگ ایک شاپنگ سینٹر چلے گے امی نے ایک انڈر گارمنٹس شاپ کے باہر میجھے روکا کیونکہ اندر صرف لیڈیز ھی جا سکتی تھیں امی بولیں تم رکو میں آتی ھوں امی کا عبایا بہت فٹ تھا عباے میں سے بھی امی کی گانڈ چلتے ھوے دل پر بجلی گرا رھی تھی امی اندر چلی گیں کافی دیر کے بعد امی باہر نکلیں تو انکے ھاتھ میں کافی پیکٹ تھے میں بولا امی کیا پورے سال کی بریزر لے لی ھیں امی بولی نہں میری تو بس دو ہیں باقی نازی اور ثانی کی ہیں میں نازی اور ثانی کا کیا سائز ھے امی بولیں جب اوپر کپڑے اتارتے ھوے بریزر ھاتھ میں پکڑ کر کھڑے تھے اس وقت نھی پتہ چلا میں بولا موقع ہی کہاں ملا آپ جو آگی تھیں امی بولیں اچھا زیادہ باتیں نی کرو امی ایک شاپ میں گھس گیں یہ ریڈی میڈ کپڑوں کی شاپ تھی امی مرے آگے آگے تھیں شاپ کافی بڑی تھی اور ایک کارنر پر انڈرگارمنٹس کا بھی پورشن تھا وہاں ڈمی پر ایک بہت ھی سیکسی نائٹی نظر آی میں بولا امی آپ پر وہ نائٹی بہت اچھی لگے گی امی نے نائٹی کی طرف دیکھا اور بولیں اسکو تو پہننا اور نہ پہننا برابر ہے میں بولا امی یہ نائٹی لے لیں امی بولیں نہیں امی کہنے لگیں چلو یہاں کوی خاص ڈریس نہی ھے اسکے بعد امی میرے آگے گانڈ مٹکاتی ھوی دوسری شاپ میں گھس گیں وہ لوگ کھانا کھا رھے تھے تو سیلزمین امی کو دیکھ کر بولا لیڈیز سوٹ اوپر ہیں آپ اوپر چلی جایں ہم لوگ اوپر چلے گے امی ہینگر میں ٹنگے ھوے سوٹ دیکھ رھی تھیں اور میں امی کے پیچھے تھا اور جہاں موقع ملتا لن گانڈ کے ساتھ لگا دیتا اوپر کوی نہی تھا سیلز مین سب نیچے کھانا کھا رھے تھے امی مرے آگے کھڑی ڈریس کو دیکھ رھی تھیں اور میں نے پیچھے سے لن کو گانڈ کے ساتھ لگا کر کھڑا تھا امی بولی کامی شرم کرو ہم مارکیٹ میں ہیں میں بولا کچھ نہی ھو تا آپ ڈریس پسند کریں اور اسی طرح پھر امی کو ایک ڈریس پسند آگیا جو دیکھنے میں بہت سیکسی لگ رھا تھا میں بولا جان اس ڈریس میں تو قیامت لگو گی امی بولی اس ڈریس میں ایسی کیا بات ھے میں بولا جب پہنو گی تو بتا دوں نگا امی نے مسکرا کر مجھے دیکھا اور بولی ایک ھی دن میں بہت زیادہ فری ھو گے ھو میں بولا جان ابھی تو تم کو صیح سے پیار نہی کیا ھے امی بولیں اچھا یہ کوی ٹائم نھی ھے اسطرح کی باتوں کا امی نے ڈریس لیا اور ہم لوگ نیچے آگے سیلز مین نے ڈریس پیک کیا اور کہا کے اگر فیٹنگ کا پرابلم۔ھو تو آپ تبدیل کروا لیجے گا ہم لوگ شاپ سے باھر آگے امی بولیں چلو اب گھر ہم لوگ گھر کی طرف چل پڑے امی کے مممے میری کمر کے ساتھ لگے ھوے تھے امی نے شاپر مرے آگے کی طرف رکھے ھوے تھے اور نیچے والا ہاتھ مرے لن کے اوپر رھا بائک چلانے کا مزا آرھا تھاکہ گھر کے قریب جب پہنچے تو بہت تیز بارش شروع ھو گی اور گھر پہنچتے پہنچتے ہم دونوں بارش میں بھیگ چکے تھے امی کا عبا یا ان کے جسم سے چپک گیا تھا یم لوگ گھر پہنچے امی نے سامان ٹیبل پر رکھا اور چینج کرنے اپنے روم میں چلی گیں میں نے ثانی کو کہا ثانی تولیہ لانا میرا ٹراوزر اور شرٹ گیلی ھو گی تھی ثانی تولہ لے کر آی تو میں بولا رکو میں نے اپنی شرٹ اتاری ثانی میرے سامنے کھڑی تھی شرت اتارتےھوے ثانی کی نظر میرے لن پر پڑی جو ابھی بھی کھڑا تھا اور ٹروازر گیلا ھونے کی وجہ سے صاف پتہ چل رھا تھا میں نے تولہ لیا اور اپنے بالوں کو خشک کرنے لگا ثانی میرے سامنے کھڑی تھی
    ثانی کی نظر میرے لن پر پڑی جو ابھی بھی کھڑا تھا اور ٹروازر گیلا ھونے کی وجہ سے صاف پتہ چل رھا تھا میں نے تولہ لیا اور اپنے بالوں کو خشک کرنے لگا ثانی میرے سامنے کھڑی تھی
    مِجھے اندازہ ھو رھا تھا کہ ثانی کی نظر کہاں ھے میں اسی طرح کھڑے ھو کر اپنے بال خشک کرتا رھا اور ثانی میرے ہلتے ھوے لن کو دیکھتی رھی بال خشک کرنے کے بعد تولہ ثانی کو دیا اور بنیان بھی اتار دی اب میرا جسم پر صرف ٹراوزر تھا ثانی کو بنیان اور تولیہ دیا ثانی تولیہ اور بنیان لے کر چلی گی جبھی امی کمرے سے نکلیں اور بولیں یہ کیا تم نے چینج نہی کیا میں بولا نہیں میں اوپر چھت پر نہنانے جا رھا ھوں آج تو کراچی کی بارش کا مزا لے لیں امی بولیں بیمار ھو جاو گے میں بولا کیچھ نہی ھو تا مجھے اوپر جاتا دیکھ کر ثانی بولی بھای میں بھی آرھی ھوں ثانی نے نازی کو بھی کہا کہ چلو اوپر بارش میں نہاتے ھیں امی روکتی رھیں لیکن میری دونوں بہنیں میرے ساتھ اوپر چھت پر بارش انجواے کرنے آگیں میں تو ٹرازر میں ھی تھا ثانی نے شرٹ اور ٹراوزر پہنا ھوا تھا نازی شلوار قمیض میں تھی ہم۔تینوں اوپر آگے بارش بہت تیز ھو رھی تھی نازی اور ثانی کے کپڑے ان کے جسم سے چیپک گے تھے نازی اور ثانی کا جسم صاف نظر آرھا تھا نازی کا پینک بریزر اور ثانی کا اسکن کلر کا بریزر دیکھ کر موسم کا مزا آگیا تھا ھماری چھت کی دیواریں کافی اونچی تھیں اس لیے کسی طرف سے بہی ہم۔لوگوں کو کوی دیکھ نہیں سکتا تھا اتنے میں نیچے سے امی نے نازی کو آواز دی کسی کام کے لیے نازی نیچے چلی گی اوپر میں اور ثانی رہ گے تھے ثانی بولی بھای مجھے پکڑیں اور میرے آگے آگے بھاگنے لگی میں اس کے پیچھے اسکو پکڑنے کے لے بھا گا وہ میرے آگے آگے بھاگ رھی تھی کہ اچانک سلپ ھونے لگی تو میں نے آگے بڑھ کر اس کو پکڑ لیا اور اس کو گرنے نہیں دیا میں نے پیچھے سے اس کو پکڑنے کی کوشش کی تو میرا بیلنس بگڑ گیا اور میں اسکو پکڑتے ھوے زمین پر گرا لیکن وہ میرے اپر اس طرح تھی کہ میں نیچے تھا اور وہ بیک سے سیدھی میرے اوپر تھی اس کی گانڈ میرے لن کے اوپر اور مرے دونوں ھاتھ اسکے پیٹ پر تھے وہ ایک دم سوری کہتی ھوی میرے اوپر سے اٹھنے لگی اور اٹھتے اٹھتے اسکا ھاتھ میرے لن سے ٹچ ھو گیا وہ اوٹھ گی اور کھڑی ھو گی میں بولا مجھے تو اوٹھاو اس نے اپنا ھاتھ آگےکیا میں نے اسکا ھاتھ پکڑ کر اٹھ گیا میرا لن اب تو ٹرازر گیلا ھونے سے واضع ھو رھا تھا اور کھڑا ھوا بھی تھا ثانی بولی بھای اب پکڑیں وہ تھوڑا سا آگے بڑھی میں نے آگے بڑھ کر پیچھے سے اس کو پکڑ کر اپنے ساتھ لگا لیا اب میں پیچھے سے ثانی کے ساتھ ٹیچ تھا اور لن ثانی کی گانڈ پر تھا یہ کیچھ دیر ھی رھا وہ فورن میجھ سے الگ ھو گی اور اسی وقت امی کی آواز آی کہ نیچے آجاو کھانا لگ گیا ھے ثانی بولی چلیں بھای امی بلا رھی ھیں میں بولا تم چلو میں آرھا ھوں ثانی نے ایک نظر میرے لن کی طرف دیکھا اور نیچے چلی گی اب میں لن بیٹھنے کا انتیظار کرنے لگا کہ لن بیٹھ جاے پھر نیچے جاوں جب لن بیٹھ گیا تو پھر نیچے گیا امی نے میجھے دیکھا تو بولیں کامی جلدی سے چینج کر کے آو میں اپنے روم میں آیا دوسرا ٹروازر اور بنیان پہن کر نیچے آیا تو ثابی بھی چینح کر کے آگی تھی ہم نے کھا نا کھایا امی بولیں ثانی اب تم کل کی تیاری کر لو کال جانا ھے نازی بولی امی خالہ کب آیں نگی امی بولیں کل آجایں نگی نازی بولی امی خالہ کو آپ نے تکلیف دی امی بولی نازی بیٹا تم کو مشکل نہ ھو اس لے خالہ کو آنے کا کہا ھے نازی چپ ھو گی ہم لو گوں نے کھانا کھایااور میں اپنے روم میں آگیا اور آج کے دن کے بارے میں سوچنے لگا کہ آج یہ کیا ھو رھا ھے آج کا دن تو گولڈن دن تھا آج امی کی چودای کی اور اب بہنیں بھی چودنے والی ہیں اور اگر امی کو پتہ چلا تو امی کا ریکشن کیا ھو گا یہ سوچتے سوچتے میں سو گیا
    شام کو سات بجے آنکھ کھلی میں اوٹھا فریش ھو کر نیچے آیا تو ابو گھر آگے تھے سب لوگ چاے پی رھی تھے نازی بولی بھای چاے لے کر آوں میں بولا ہاں لے آو اور لاونج میں بیٹھ گیا ابو کل کا پروگرام بنانے لگے امی اور ثانی نے کل کی تیاری کر لی تھی ابو بولے کامی تم ہم لوگوں کو اسٹیشن چھوڑ آنا میں بولا جی ابو ہم لوگ باتیں کر رھے تھے کہ بیل بجی ابو بولے دیکھو کامی کون آیا ھے میں گیٹ کوھلنےگیا تو دیکھا خالہ اپنے دیور کے ساتھ آی تھیں خالہ کو دیکھ کر *** کیا اور انکو اندر آنے کا کہا خالہ میجھے دیکھ کر بولیں اور بھی بھانجے خالہ کو بھی کبھی یاد کر لیا کرو
    خالہ کو آج بہت مہنوں بعد دیکھا تھا اور خالہ نے ہلکے پینک شیڈ والی بہت خوبصورت ساڑھی پہنی ھوی تھی جسکا بلاوز تنگ اور گلا کافی کھلا لگ رھا تھا خالہ اندر آتے ھوے سب کا حال احوال لیتی ھوی اندر آگیں امی نے دیکھا تو خالہ کو گلے لگا لیا خالہ نے ابو کو ***کیا نازی اور ثانی کو پیار کیا میں بولا خالہ میں بھی
    Last edited by Admin; 02-01-2020 at 12:00 AM.

  9. The Following User Says Thank You to kamoo200696 For This Useful Post:

    suhail502 (08-10-2019)

  10. #6
    Join Date
    Feb 2009
    Posts
    27
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    11
    Thanked in
    9 Posts
    Rep Power
    14

    Default


    حصہ اول
    میرا نام کامران ھے اور میں کراچی میں رھتا ھوں میری کہانی کا تعلق میرے گھر سے ھے اب میں آپ کو اپنی فیملی کے بارے میں بتاتا ھوں اور انکا تعارف بھی کرواتا ھوں
    ابو-ریاض عمر-55سال
    امی-شبنم عمر-40سال
    بہن۔ نازنین
    بہن-ثنا
    اب آپ کو اپنی کہانی سناتا ھوں امی ابو بینک میں جاب کر تے ہیں اور میرا اپنا الیکڑانکس کا بزنس ھے میری ھوم الیکڑانکس کی دوکان ھے میری دونو بہنں کالج میں پہڑتی ہیں ھمارے گھر کا ماحول بھی دوسرے گھروں کی طرح تھا سب لوگ اپنے کاموں میں مصروف امی ابو اپنی جاب پر بہنں اپنی پھڑائ میں اور میں اپنے بزنس میں سب کچھ نارمل چل رھا تھا میں گھر میں بڑا ھوں اسکے بعد میری بہن نازنین ھے جسکو پیار سے سب نازی کہتے ہیں پہر ثنا ھے اسکو بہی پیار سے ثانی کہتے ھیں ابو ٹھورے سیرس اور سخت مزاج کے ھیں ھم لوگوں کا ماھول فرینڈلی ھے امی اور بہنوں کے ساتھ حلکا پھلکا ہنسی مزاق چلتا رہتا ھے
    سیکس کیسطرح شروع ھوا اور پھر میری دنیا ہی بدل گی دونوں بہنوں کے ساتھ ساتھ امی کے ساتھ بھی سیکس لایف شروع ھوگی
    ھم لوگ رات کا کھا نا سب ساتھ کھاتے ہیں
    مِیں دوکان سے گھر آیا اور فریش ھو کر سب کے ساتھ کھا نا کھا یا
    کھانا کھا کر میں باھر فرینڈ کے پاس چلا گیا میں روز کھانا کھانے کے بعد کچھ ٹائم کے لیے فرینڈ کے ساتھ ٹائم پاس کرتا تھا
    رات کو واپس گھر آیا تو سب لوگ سونے کے لیے اپنے روم میں چلے گے تھے امی ابو اور بہنوں کا روم نیچے ھے اور میرا روم اوپر ھے
    جب میں گھر آیا تو ٹی وی لاونج میں نازی ٹی وی دیکھ رھی تھی
    نازی کیا ھوا تم سوی نی نازی بولی بھای نیند نی آرھی اور صبح کالج بی آف ھے اس لیے جاگ رھی ھوں ثانی سوگی بور ھو رھی تھی تو ٹی وی دیکھ رھی ھوں میں بھی ٹی وی لاونج میں نازی کے پاس بیٹھ کر ٹی وی دیکھنے لگا نازی نے ٹراوز اور لوز سی ٹی شرٹ پہنی ھوی تھی نازی اور میں ٹی وی دیکھ رھے تھے میں نے کہا نازی ایک کپ چاے بنادو نازی بولی اچھا بھائ بناتی ھوں میں بولا میں جب تک چینج کر کے آتا ھوں میں اوپر آیا اور ٹراوزر اور بنیان میں نیچے آگیا نیچے آیا تو نازی کیچن کے باھر کھڑی تھی میں بولا کیا ھوا باھر کیوں کھڑی ھو نازی بو لی بھای کیچن میں چھپکلی آگی ھے میں بولا یار تم بھی بہت ڈرپوک ھو چلو دیکھاو کہاں ھے
    مِں نازی کے ساتھ کیچن میں گیا تو سامنے کیبنٹ کے پاس ایک چھپکلی تھی اسکو وھاں سے بھگا دیا لو نازی اب چلی گی اب تم چاے بنا لو نازی بولی بھای آپ یہں رکیں میں چاے بنا لوں میں بولا اب نی آے گی نازی بولی نی بھای میجھے ڈر لگتا ھے آپ نے چاے پینی ھے تو مرے ساتھ رہیں میں بولا ٹھیک ھے میں کیچن میں ھی ھوں تم چاے بناو نازی نے چاے کا پانی چولھے پر رکھا کر بولی بھای کیبنٹ سے میجھے پتی اور چینی نیکال کر دیں نازی میرے آگے کھڑی تھی میں نازی کے پیچھے کھڑا ھو کر کیبنٹ سے پتی اور چینی نیکال رھا تھا نازی کے پیچھے کھڑا ھو کر میں نے چاے کا جار نیکال کر نازی کو دیا جب جار نیکال کر نازی کو دیا تو میرا لن نازی کی گانڈ سے ٹچ ھو گیا نرم نرم چوٹر سے لن ٹیچ ھوتے ھی ھوشیار ھو گیا اور لن نازی کی نرم نرم گانڈ کو اپنے ھونے کا احساس دلانے لگا نازی کو جب لن فیل ھوا تو وہ ایکدم ساکت ھو گی میں نے جار نیکال کر اس کو دیا تو لن اسکی گانڈ کو پوری طہرح فیل کروا چکا تھا نازی نے پتی کا جار لیا اور بولی بھای آپ لاونج میں بھٹیں میں چاے لے کر آتی ھوں یہ ھم دونوں کے ساتھ فرسٹ ٹا یم ھوا تھا اور مجھے بھی عجیب لگا کے یے اچانک کا ھوگیا میں کچھ نہں بولا اور لاونج میں آکر بیٹھ گیا نازی چاے لے کر لاونج میں آگی اس نے مجھے چاے دی اور اپنے کمرے میں جانے لگی میں بولا نازی کیا ھوا بیٹھو نازی بولی نہں بھای آپ دیکھیں میجھے نیند آ رھی ھے مجھے اب شرمندگی ھو رھی تھی کے نازی میرے بارے میں کیا سوچے گی کے اس کے سگے بھائ نے بہن کی گانڈ سے لن ٹچ کیا اسی بات کو سوچتے ھوے میں نے چاے ختم کی ٹی وی آف کیا اور اپنے روم میں آکر سو گیا صبح میرے روم کا دروازہ کھلا نازی نے میجھے آواز دی بھای دس بج گے ھیں میں نے آنکھں کھولیں تو نازی مرے روم کے باہر کھڑی میجھے آواز دے رھی تھی میں نے اسکو دیکھا تو وہ رات والے کپڑوں میں تھی اسکو دیکھتے ھی میجھے رات والی بات یاد آگی اس کو دیکھتے ھوے میں بولا تم کالج نی گیں وہ بولی بھای آج میرا آف ھے میں بولا اور ثانی نازی بولی ثانی کالج چلیگی میں بولا تم چلو میں فریش ھو کر آتا ھوں میں باتھ روم گیا فریش ھو کر نیچے آیا تو نازی کیچن میں تھی امی ابو بینک چلے گے تھے میں کیچن میں گیا تو نازی ناشتہ بنا رھی تھی میں نے نازی سے پوچھا چھپکلی چھپکلی تو نی آی نازی بولی نی بھای ابھی تو نی ھے میں نے نازی سے کہا نازی گلاس دو نازی نے میجھے گلاس دیا اور میں فریج سے پانی نیکال کر پینے لگا اور اچانک مری نظر نازی کی گانڈ پر جا کر رک گی آج میں
    ٙ
    نے اپنی بہن کو سیکس کی نظر سے دیکھا نازی کی گانڈ تھوڑی باھر کو نکلی ھوی بہت پیاری لگ رھی تھی میں پانی پیتے ھوے اپنی بہن کا گانڈ کا نزارہ کر رھا تھا ٹراوزر میں اس کی گانڈ بہت سیکسی لگ رھی تھی دل کر رھا تھا کے لن پھر ٹیچ کر دوں لیکن ہمت نہی ھو رھی تھی لن بہی گانڈ کو ہلتا دیکھ کر کھڑا ھو رھا تھا کے نازی نے میجھے مڑ کر دیکھا اور بولی بھائ کیا ھوا میں بولا نی کھچ نی میں بولا میں تو اس لے کھڑا ھوں کو ی کام تو نی ھے نازی بولی بھای نہں ابہی نی جب ھو گا تو میں آپ کو آواز دے دوں گی
    میں نے ٹی وی آن کیا اور ٹی وی دیکھنے لگا تھوڑی دیر کے بعد نازی نے آواز دی بھائ ادھر آین میں کیچن میں گیا تو نازی چاے نیکال رہی تھی اسکی بیک میری طرف تھی نازی بولی باھئ یہ پراٹھے ٹیبل پر رکھیں میں آگے بھڑا اور پھراٹھے اٹھاتے ھوے لن نازی کی گانڈ سے ٹچ کیا اور پراٹھے لاکر ٹیبل پر رکھے تو پھر نازی نے آواز دی بھائ انڈ ے بی لےجایں میں پھر کیچن میں گیا اور انڈے کی پلیٹ اٹھاتے ھوے لن کو پھر گانڈ سے ٹچ کیا اور اس دفہ پھر لن کو جھٹکا لگا میں انڈے کی پلیٹ لے کر کیچن سے باھر آگیا اور پھر نازی بہی چاے لے کر باھر آگی نازی اور میں نے ناشتہ کیا نازی کیچھ بول نی رھی تھی میں بولا نازی کیا ھوا چپ کیوں ھو نازی بولی نی بھای کیچھ نی میں بولا کچھ تو ھے نازی بولی نہں بھائ کوی بات نی ھے میں چپ ھو گیا ناشتہ کرنے کے بعد نازی نے برتن اٹھاے اور کیچن میں رکھنے لگی میں نے بہی اسکی مدد کی اور اسی دوران لن کو ٹچ کرنے کا موقع ملا اب مزا آنے لگا تھا میں کیچن سے باھر آگیا اور ٹی وی دیکھنے لگا میں دوکان پر 2بجے جاتا ھوں کیونکہ کراچی میں مارکیٹ 1بجے تک کھلتی ھے ابھی 11بجے تھے میں ٹی وی دیکھتے ھوے نازی کے بارے میں ھی سوچ رھا تھا کہ نازی بہی آگی نازی باھی دوپھر کاکھانا کھا کر جایں گے میں نے اسکی طرف دیکھا تو میری نظریں اسکے مموں پر رک گی برتن دھوتے ھوے نازی کے شرٹ سامنے سے گیلی ھو گی تھی جسکی وجہ سے نازی کی پینک کلر کی برا نظر آ رھی تھی اس سے پھلے میں نے کبھی ایسے نی دیکھا تھا کیونکہ امی اور دونو بہنں کبھی مرے سامنے ڈوبٹہ نہں لےتی تھیں جب ابو آتے جب ڈوبٹہ لےتی تھیں پھلی دفہ نازی کہ مموں کو دیکھ رھا تھا گیلی شرٹ میں سے نظر آتی پینک برا میں مموں کو دیکھ کر لن سلامی دے رھا تھا بھائ کیا ھوا کیا سوچ رھے ھیں وہ میرے سامنے کھڑی تھی میں بولا ہاں کیا کہ رھی ھو نازی بولی بھئ میں پوچھ رھی ھوں آپ کھانا کھا کر جایں نگے میں بولا ہاں کچھ بنا لو نازی میرے سامنے بیٹھ گی بولی اچھا بتایں کیا بناوں میں بولا کیچھ بہی بنا لو
    بھائ ے کو ن سی ڈش ھے میں بولا نازی جو آسان لگے بنا لو اچھا دیکھتی ھوں فریج میں کیا رکھا ھے ے بات کرکے نازی فرئج کے پاس چلی گی اور فرئج کھول کر بولی بھای آلو قیمہ بنا لیتی ھوں آپ کو پسند ھے میں بولا ھاں یے بنا لو نازی فریزر سے قیمہ نیکالنے کی کوشش کرتے ھوے بولی بھای میری ھلپ کریں قیمہ فریزر میں فریز ھے میں اٹھا نازی کے پاس گیا اور بولا ھٹو میں نیکالتا ھوں نازی بولی بھای آپ بس فریزر کا دروازہ پکڑیں میں نکال لوں نگی اب میں نازی کے پیچہے فریزر کا دروازہ پکڑ کر کہڑا تہا اور نازی قیمہ کا پیکٹ نیکالنے کی کو شش کر رھی تھی جو فریزر میں برف کی وجہ سے جمع ھوا تھا اور اسکی اس کوشش میں نازی کی گانڈ میرے لن سے ٹچ ھو رھی تھی میرا لن ٹراوزر مے کھڑا ھو گیا تھا جسکا میجھے بھی مزا آرھا تھا نازی کبی آگے ھو تی کبہی پیچھے میں نے اپنا لن کو اور اسکی گانڈ پر دبادیا اور آگے ھو کر قیمہ کا پیکٹ نکالنے میں اسکی مدد کی لن بی نازی کے نرم نرم چوٹر کے ساتھ لگا ھوا تھا ایسا لگ رھا تھا کہ کسی نرم فوم کے اندر ھو پیکٹ باھر نیکالتے ھی میں پیچھے ھوا اور نازی بولی بھای شکر یہ اب آپ ٹی وی دیکھں میں کھا نا بنا تی ھوں نازی کیچن میں چلی گی میں نے نازی کو کہا کہ میں نھا کر آتا ھوں اب میرا دل مٹھ مارنے کا کر رھا تھا میں اپنے کمرے میں آیا اور کپڑے اوتار کر باتھ روم میں گھس گیا اور پہلی دفہ نازی کی گانڈ کے نام کی مٹھ ماری ابھی میں لن کا پانی نیکلنے والا تھا کہ نازی کی آواز آی بھای جلدی آیں اسکی آواز سن کر میں نے جلدی سے ٹاول لپیٹا اور روم سے باھر آیا تو نازی میرے روم کے پاس کہڑی تھی میں بولا کیا ھوا نازی بھای کیچن میں چہپکلی پہر آگی ھے مرا لن کھڑا تھا اور ٹاول میں سے صاف پتہ چل رھا تھا نازی نے مجھے دیکھا اور کیچن کی طرف گی اور بولی بھای وہ دیکھں کیبنٹ پر ھے میں کیچن میں گیا تو چھپکلی کیبنٹ پر تھی میں نازی سے بولا جھاڑو لا کر دو نازی نے جھاڑو لا کر دی میں چھپکلی کو مارنے کے لیے جاھڑو ماری تو وہ آگے جلی گی اور چھپکلی کو مارنے کے چکر میں مرا ٹاول کھل گیا اور میں نازی کے سامنے ننگا ھو گیا نازی نے جب میجھے ننگا دیکھا تو شرما کر منہ دوسری طرف

    کرکے نازی بولی بھای ٹاول میں نے جلدی سے ٹاول اٹھا کر باندھ لیا اور بولا نازی اب چھپکلی کیچن سے باھر چلی گی ھے اب تم کام کرو نازی بولی بھای آپ مرے ساتھ کیچن میں رہیں میں بولا مینے کہا نازی میجھے نہانا ھے نازی بولی بس ٹھو ری دیر پھر آپ نہالینا میں نے کہا اچھا جلدی کرو نازی بھای جلدی کیا ھے بس کر رھی ھوں اچھا بھای میجھے کیبنٹ سے مصالہوں کے جار نیکال دیں پھر آپ نہانے چلیں جایں میں نازی کے پیچھے کھڑا ھو کر کیبنٹ سے مصالہوں کے جار نیکال لر دے رھا تھا اور لن کو نازی کی گانڈ سے لگا دیا نازی کو بھی اس میں مزا آرھا تھا اور وہ بھی گانڈ کو لن کے ساتھ لگا کر کھڑی تھی اب میرے دماغ پر منی چھڑگی تھی اور لن کو نازی کی گانڈ میں اور اندر کی طرف دبا دیا اور لن کو نازی کی گانڈ سے رگڑنے لگا اور ٹاول کھول کر لن باھر نیکال کر نازی کی گانڈ پر لگا کر گھسے مارنے لگا نازی کو بہی لن گانڈ پر مہسوس کرکے مزے میں گم تھی اُف بھای یہ کیا کر رھے ہیں مینے اپنا ٹاول اوتار دیا اور نازی کے ساتھ چیپک گیا اور نازی کی گردن پر پیار کرنے لگا نازی بولی بھای نہ کریں میں آپ کی بہن ھوں میں بولا نازی love you تم بہت سیکسی ھو یہ سنتے ہی نازی میری طرگھومی اور میرا لن نازی کی چوت کے ساتھ لگ گیا میں نے اپنے ہونٹ نازی کے ہونٹوں پر رکھ دے نازی کے ممے میرے سینے سے دبے ہوے تھے اور میں نازی کے ہونٹ چوس رھا تھا نازی بہی گرم ھو گی تھی نازی نے اپنے ہونٹ مرے ہونٹوں سے ہٹاے اور بولی بھای یہ غلط ھے میجھے چھوڑ دیں میں بولا جان کیچھ غلط نہں ھے بس تم سیکس کا مزا لو اور لائف کو انجواے کرو اور نازی کو اٹھا کر لاونج میں لے آیا اور نازی کو اپنے ساتھ لیپٹا کر پیار کرنے لگا میں بولا جان تم بی شرٹ اور ٹراوزر اوتار دو نازی بولی باھی میجھے شرم آرھی ھے میں بولا دیکھو میں بہی تو تمہارے سامنے ننگا ھوں اور یہ کہکر میں اس سے الگ ھو کر کھڑا ھو گیا نازی نے اپنی آنکھں بند کر لیں اور بولی باھی آپ بہیت بےشرم ھیں میں بولا نازی دککھو تو نازی آنکھیں بند کرکے کھڑی تھی اور اسکا سانس تیز تیز چل رھا تھا جسکی وجہ سے نازی کے میمے اوپر نیچے ھو رھے تھے نازی ابہی تک اپنے دونوں ھاتھ آنکھوں پر رکھے کھڑی تھی میں آگے بڑھا اور لن کو چوت کے ساتھ ٹیچ کرکے اسکو لپٹا لیا اور بولا ۔ازی اب شرمانا چھوڑو اور اپنے کپڑے اوتار دو نازی بولی بھای ایسے ہی کر لیں میں بولا نی جان جب تم بی ہوری ننگی ھو گی تو مزا آے گا نازی بولی بہن کو ننگا کر کے اچھا لگے گا میں بولا جان ایک بھای بہی تو بہن کے سامنے ننگا ھے اور یہ کھتے ھوے میں نے نازی کے میمے دبادے نازی کے منہ سے سسکاری نیکلی اُف بھای آہ نی کریں میں بولا اچھا نی کرنا تو ٹھیک ھے میں جاتا ھوں یہ کہتے ھوے میں جیسے ہی نازی سے الگ ھوا نازی نے آنکھیں کھول دیں اور اپنے سگے بھای کو ننگا دیکھنے لگی اور جب سسکی نظر بھای کے لنمبے اور موٹے لن پر پڑی تو ایک دم اس کے منہ سے نیکلا بھای یہ تو. بہت بڑا ھے میں اسکے قریب گیا ھاتھ میں لے کر دیکھو نازی نے شرماتے ھوے لن کو ھا تھ میں پکڑا تو س فرینڈ کیا بتاوں بہن کے ھاتھ �� میں بھای کا لن ھو تو اسکا مزا ھی کچھ اور ھے میں نے آگے بڑھ کر نازی کی شرت اُتار دی اب نازی پینک برا اور ٹراوزر میں میرے سامنے کھڑی تھی میں نے نازی کا ٹراوزر بہی اتار دیا اوہ کیا سیکسی جسم تھا نازی کا گورا بدن اور ٹھوڑے سے بالوں میں چھپی ھوی چوت نازی بولی بھای کیا دیکھ رھے ھیں میں بولا اپنی پیاری بہنا کا سیکسی جسم اور یہ بالوں میں چپھی جوت جان تم بہت سیکسی ھو نازی بوی باھی آپ بہی بہت سیکسی ھو آپ کا وہ تو میں بولا وہ کیا تو نازی بولی وہ جو کھڑا ھے میں نے پوچھا کیا کھڑا ھے نازی نے لن کو پکڑ کر کہا یہ میں بولا نازی اسکو لن کہتے ھیں اور میں نے اسکی چوت پر ھاتھ پہرتے ھوے کہا اس کو چوت کہتے ھہں نازی بولی بھای یہ آپ ہی بولیں میں نی بول سکتی میں آگے بڑھا اور نازی کی برا بہی اتار دی نازی کے تنے ھوے سنگترے جو ٹینس کی بال کے سایز کے تھے اور گورے ممے لائٹ براون چھوٹھے نیپل جنکو دیکھ کر کنٹرول کرنا مشکل ھو گیا تھا مموں کو دیکھتے ہی منہ میں پانی آگیا اور میں نے نازی کے مموں کو دبانے لگا ایک ممے کو دبا رھا تھا اور دوسرے ممے کے نپل کو زبان سے ٹچ ہی کیا کہ نازی بولی. ھائ آہ اُف اور نپل منہ میں میں لیتے ھی نازی مچل گی اور تیز تیز سانسیں لینے لگی اب اس کو مزا آنے لگا تھا نازی نے میرا سر پکڑ کر اپنے ممے پر دبا دیا تھا میں اپنی بہن کا نپل چوس رھا تھا نازی میرے لن کو پکڑ کر سہلا رہی تھی نازی کے دونوں میمے چوس چوس کر لال کر دے نازی کا جسم آگ کی طرح گرم ھو رھا تھا نازی کو اپنے ساتھ لپٹا کر نازی کے ہونٹ چوس رھا تھا لن اور چوت آپس میں ملے ھوے تھے میں ۔ازی کے چوٹر سہلا رھا تھا جو بہت ہی نرم تھے ھم دونو ں سیکس کے مزے

    میں گم تھے نازی اور میں ایک دوسرے کے ساتھ لیپٹے ھوے مزے کو انجواے کر رھے تھے کہ اچانک بیل کی آواز نے ھم دونو ں کو چونکا دیا کہ اس ٹایم۔کون آگیا گھڑی کی طرف دیکھا تو بارہ بیج رھے تھے بیل دوبارہ بجی تو ھم لوگوں کو ھوش آیا میں جلدی سے اپنے روم می۔ گھس گیا نازی نے بہی جلدی سے ٹراوزر اور شرٹ پہن لی اور گیٹ کھولنے چلی گی
    Last edited by Admin; 02-01-2020 at 12:01 AM.

  11. #7
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    141
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    76
    Thanked in
    52 Posts
    Rep Power
    17

    Default

    Bohat he umda story hay maza aya thanks for 1st part update ka ab jaldi se next updat b day do

  12. #8
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    2
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    1
    Thanked in
    1 Post
    Rep Power
    0

    Default

    Bohat he umda story hay maza aya thanks for 1st part update ka ab jaldi se next updat b day do

  13. #9
    Join Date
    Oct 2009
    Posts
    23
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    7
    Thanked in
    6 Posts
    Rep Power
    14

    Default

    next update plzzzxxx

  14. #10
    Join Date
    Oct 2009
    Posts
    23
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    7
    Thanked in
    6 Posts
    Rep Power
    14

    Default

    baki parts b jldi post kro plz

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •