اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

Results 1 to 8 of 8

Thread: سگی بھانجی کی چدائ

  1. #1
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    15
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    24
    Thanked in
    10 Posts
    Rep Power
    3

    Default سگی بھانجی کی چدائ


    میرا تعلق ایک مذہبی گھرانے سے ہے جہاں گھر کی عورتوں کو بھی پردے میں ہی رکھا جاتا ہے. لیکن گھر والوں کی بلاوجہ کی پابندیاں مجھے بالکل پسند نہی تھی اور مجھے بچپن سے ہی سیکس کا بڑا شوق تھا . پہلے تو مٹھ پر گزارا کرتا رہا لیکن جب سے انٹرنیٹ پر چدائ والی ویڈیوز دیکھی مجھے بھی پھدی لینے کا شوق چڑھ گیا . بس اسی مشن کو ذہن میں رکھتے ہوئے میں آگے بڑھا اور اپنے گھر سے ہی ابتدا کر ڈالی . میری بڑی بہن کشور کی چھوٹی بیٹی اقرمہ سے کافی گپ شپ شروع ہو گئ وقت گزرتے گزرتے وہ بلا خوف و جہجک میرے قریب آنا شروع ہو گئ اور اکثر مجھ سے موبائل لیکر کسی کو میسج کرتی تھی وہ اسوقت 15 سال کی میٹرک کی طالبہ تھی. میں جب بھی موبائل دیکھتا کبھی کوئ inbox اور sent item میں کوئ میسج نظر نہی آیا مجھے اس پر شک ہونے لگا کہ یہ ضرور کسی لڑکے سے بات کرتی ہے. میں دوسرے شہر رہتا تھا لیکن اسکا سیکسی جسم اور رسیلے ہونٹ مجھے تڑپاتے رہتے میں نے ہمت کر کے باجی کے گھر والے نمبر پر روزانہ ایک دو میسج بھجنے شروع کر دئے آخر کار ایک رات اس نمبر سے مجھے جواب آیا آپ کیسے ہیں آپکی جاب کیسی جا رہی ہے والے رسمی میسج آتے رہے. دو دن گزرے تو میں نے بھانجی کے ساتھ ذومعنی گفتگو شروع کر دی. آخرکار میں نے اسے کہا کہ مجھے ماموں نہی بلکہ اپنا دوست سمجھو اور وہ مان گئ. میں بھی خوش ہو گیا کہ اس کچی کلی کا رس چوسنے کا وقت قریب آہ گیا ہے. اس نے مجھے بتا دیا کہ میں فلاں کزن کو پسند کرتی ہوں اس سے مجھے پیار ہو گیا اور آپ میری مدد کرنا. میں نے کہا ٹھیک ہے تمہارے لیے تو میری جان بھی حاضر ہے لیکن آپ دونوں کو تو پیار مل جائے گا لیکن میری پیاس کا کیا بنے گا. وہ پہلے تھوڑی گھبرا گئ کہ آپ میرے ماموں ہو کیسی باتیں کر رہے ہیں میں نے کہا میرا اور تمہارا رشتہ دوستی کا بھی تو ہے اور دوست کے لئے تو لوگ اپنی جان قربان کر دیتے ہیں اور تم مجھے تھوڑا سا پیار بھی نہی دے سکتی. کافی دیر خاموش رہنے کے بعد وہ بھی راضی ہوگئ لیکن صرف اہک کس کی حد تک. میرے من میں لڈو پھوٹ رہے تھے کہ چلو کچھ تومانی. جب میں چھٹی لیکر گھر گیا تو موقع ملتے ہی ازے اپنا وعدہ یاد کرایا تو وہ شرما گئ. لیکن میرا لن تو اسکے جسم کے نشیب و فراز دیکھ کر پھٹنے والا ہو گیا. گرمیوں کے دن تھے سب نے کھانا کھایا اور میں بیھٹک میں سونے چلا گیا اور باقی بچے بھی سو گئے. تھوڑی دیر کے بعد باہر والے گیٹ پر ذوردار دستک کی آواز آئ کہ پڑوس میں فوتگی ہو گئ . باجی فوراً وہاں چلی گئ اور اقرمہ نے اندر سے گیٹ کو کنڈی لگا دی. بس میں خوشی کے مارے چارپائ سے چھلانگ لگا کر باہر نکل کر اقرمہ کو زبردستی ہی بیٹھک میں لے آیا اس نے کافی کوشش کی جان چھرانے کی لیکن میں یہ موقع ہاتھ سے ضائع نہی کرنا چاہتا تھا میں نے اس کے کہے بغیر ہی اسکے رسیلے ہونٹوں پر جب اپنے ہونٹ رکھے تو اسکا جسم کانپ گیا. میں نے اسے زور سے پکڑ کر اسکے منہ میں اپنی زبان ڈالی تو اسکی سانسیں تیز ہونا شروع ہو گئ اور وہ مزے کی لہر میں ڈوب گئ اور میری کمر کو کس کر پکڑ لیا میں نے اسی دوران اس کے بالوں میں انگلیاں پھیرنی شروع کر دی اور ہمت کر کے اس کا 32 کا ممہ پکڑ لیا اسکے ممے پر ہاتھ کیا رکھا وہ سسکاریاں لینے لگی میں نے فوراً اسکی قمیض کو اوپر کر کے اسکے ممے اپنے منہ میں ڈالے ہی تھے کہ اسنے زور سے میرے بالوں کو پکڑ کر اپنے مموں سے چپکا لیا میں نے جوب دل بھر کر جب اسکے مموں کی سکنگ کی تو اسکا جسم جھٹکے کھانے لگ پڑا اور اس نے جوب زور سے مجھے پکڑ لیا. پھر نڈھال ہو کر چارپائ پر لیٹ گئ اور میرا لن بھی بھانجی کی کنواری پھدی میں جانے کےلیے بےقرار تھا. میں اسکے جسم کو چومتے ہوئے اسکی شلوار آہستہ آہستہ نیچے کرنے لگ گیا اقرمہ مزے کی وادیوں میں ایسی گم تھی کہ اسنے اپنا سارا جسم میرے حوالے کر دیا اور میں نے جیسے ہی اسکی شلوار نیچے کی تو بغیر بالوں کے پنک پھدی دیکھ کر اپنے حوش حواس ہی کھو بیھٹا. میں نے بھی وقت ضائع کئے بغیر اسکی کی پھدی پر اپنے لب رکھ دئے اُف کیا گرم اور گیلی پھدی میں تو اپنے کنٹرول سے باہر ہو رہا تھا اور میرا لن لوہے کے راڈ کی طرح سخت ہوگیا. میں نے جب اسکی پھدی پر لب رکھے تو اس نے تڑپ کر کہا مزمل میں مر جاؤں گی وہ اس وقت مزوں کی دنیا میں گم تھی میں اسکی پھدی کو چوس رہا تھا کہ اسنے اپنی ٹانگوں میں ہی میرا سر دبا لیا اور اپنی گانڈ چارپائ سے اٹھا اٹھا کر سسکاریاں لے رہی تھی اور اسکی پھدی سے نکلنے والے رس نے میری زبان کو اور مزے کی دنیا میں پہنچا دیا میں فوراً اٹھا اور اپنا ناڑہ کھول کر اسکی پھدی پر اپنا لن رکھا ہی تھا کہ اسنے اپنی آنکھیں کھولی اور کہنے لگی نہی میری جوانی برباد مت کرو لیکن میں اسوقت پھدی کیلیے پاگل ہو چکا تھا اسکی مزاحمت کے باوجود بھی اسکی گوری چٹی پھدی میں اپنا لن گھسا دیا اور جیسے ہی میں نے زور لگایا تو آدھا لن اسکی پھدی میں چلا گیا اور اسنے ایک زوردار چیخ ماری لیکن میں نے فوراً اپنے لب اسکے لبوں میں رکھ دیے. درر کیوجہ سے اسکے آنسو نکلنے شروع ہو گے اور میں نے اسی دوران ایک زوردار کھسا لگا کر پورا لن جڑھ تک اسکی پھدی میں اتار دیا. پہلے تو وہ درد کیوجہ سے روتی رہی لیکں جلد ہی مزے کی وادیوں میں گم ہو گئ اور اسکی گرفت میری کمر کے گرد سخت ہو گئ میں بھی زور سے کھسے مارنے لگا اور کچھ ہی دیر بعد اسنے اپنی ٹانگیں آپس میں دبائں اور میرا لن اسکی پھدی میں فکس ہو گیا اور وہ ساتھ ہی جھٹکے کھا کر فارغ ہو گئ اسکی پھدی کی گرمی میں بھی ذیادہ دیر برداشت نہ کر سکا اور زور زور سے کھسے لگانا شروع ہو گیا اور فارغ ہونے ہی والا تھا تو میں نے لن پھدی سے نکال کر اپنی ساری منی اسکی پھدی پر گرا دی.اف یہ میرا پہلا چدائ کا بھی تجربہ تھا لیکن اسکی لزت میں زندگی بھر نہی بھول سکتا.پھر ہم اکثر موقع ملنے پر خوب چدائ کرتے تھے. قارین میری پہلی کہانی تھی کوئ کمی یا غلطی ہوئ تو مجھے کمنٹس میں ضرور بتائے گا شکرہ
    Last edited by irfan1397; 20-12-2019 at 03:19 PM.

  2. The Following 4 Users Say Thank You to Zindagi11522 For This Useful Post:

    abidkazmi (29-12-2019), abkhan_70 (21-12-2019), aloneboy86 (20-12-2019), Lovelymale (20-12-2019)

  3. #2
    Join Date
    Oct 2009
    Posts
    23
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    7
    Thanked in
    6 Posts
    Rep Power
    14

    Default

    Short story bht... thori explain kro n next b likho first experience k bd b

  4. #3
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    29
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    50
    Thanked in
    18 Posts
    Rep Power
    5

    Default

    نہیں بھائ آپ سے غلطی کوئ نہیں ہوئ بس کہانی کی ایسی کی تیسی کر دی ہے

  5. The Following 2 Users Say Thank You to Imran200516 For This Useful Post:

    masoo14m (09-10-2019), mirzaishq028 (06-10-2019)

  6. #4
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    15
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    24
    Thanked in
    10 Posts
    Rep Power
    3

    Default

    Yar yeah story to parso main nay khud likhi upload ke lakin samnay ai nahi r yeah ap nay upload kr de. Main nay aik 2 post pay procedure poucha tha story upload krnay ka lakin abhi confirm nahi hoa tha r yeah story ap nay upload kr de

  7. #5
    Join Date
    Sep 2019
    Posts
    35
    Thanks Thanks Given 
    2
    Thanks Thanks Received 
    30
    Thanked in
    16 Posts
    Rep Power
    5

    Default

    سب کچھ جلدی میں ہی کر لیا��

  8. #6
    Join Date
    Sep 2019
    Posts
    35
    Thanks Thanks Given 
    2
    Thanks Thanks Received 
    30
    Thanked in
    16 Posts
    Rep Power
    5

    Default

    آپ اور کہانی لکھیں وہ اس سے بہتر ہو گی

  9. #7
    Join Date
    Dec 2019
    Posts
    1
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    V nice, im shafaque here, call for advise

  10. #8
    Join Date
    Sep 2010
    Posts
    21
    Thanks Thanks Given 
    39
    Thanks Thanks Received 
    28
    Thanked in
    8 Posts
    Rep Power
    60

    Default

    اچھا لکھا ہے۔ لیکن واقعے کو کہانی نہیں بنا سکے۔ کہانی لکھتے ہوئے جزئیات کا خیال رکھیں اور کوشش کریں کہ جہاں کسی پل کو طویل کر کے سسپنس قائم ہو سکتا ہو، پیدا کریں۔ باقی یہاں بہت اچھے لکھاری موجود ہیں، اُن سے بھی رہنمائی مل جائے گی آپ کو۔ اس پہلی شیئرنگ پر آپ کو بہت سی داد۔ مزید لکھیے۔ لکھنا آ جائے گا۔ تحریر وقت کے ساتھ ساتھ نکھرتی جائے گی۔

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •