اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

View Poll Results: Please Rate This Story

Voters
11. You may not vote on this poll
  • More than awesome

    3 27.27%
  • Awesome

    5 45.45%
  • Normal

    3 27.27%
  • Bad

    0 0%
Results 1 to 7 of 7

Thread: سوتیلی ماں

  1. #1
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    1
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    8
    Thanked in
    1 Post
    Rep Power
    0

    Cool سوتیلی ماں


    Update # 05
    -میرا نام وقاص ہے ۔ میری عمر 20 سال ہے ۔ میرے ابو ان کا نام فرہاد ہے اور انکی عمر 50 سال ہے ۔ وہ شہر سے باہر کپڑے کا کاروبار کرتے ہیں ۔ اور اس کے لئے وہ مہینے میں صرف 2 دن کے لئے ہی گھر آتے ہیں ۔ اور گھر میں میں اور میری سوتیلی ماں فرح ہوتے ہیں ۔ میری سوتیلی ماں کی عمر 30 سال ہے ۔ میں انھیں پیار سے چھوٹی امی یا کبھی کبھی صرف امی بلاتا ہوں ۔وہ میرے ابو سے 20 سال چھوٹی ہیں ۔ اور عمر کے اس حصے میں ہیں جہاں انکی جسم کی گرمی بڑھتی جا رہی ہے ۔ دوسری شادی کے بعد ابو نے بچہ پیدا نا کرنے کا فیصلہ کیا تھا ۔ اور اس وجہ سے میری چھوٹی امی کا جسم بلکل ٹائٹ تھا ۔ انکا جسم تھوڑا بھرا بھرا تھا لیکن موٹا بلکل نہیں تھا ۔ انکے ممے قدرتی طور پر کافی بڑے اور گانڈ باہر کو نکلی ہوئی تھی ۔ انکو دیکھ کر بلکل نہیں لگتا تھا ک وہ شادی شدہ ہیں ۔ وہ ایسے لگتیں جیسے کوئی کنواری لڑکی جسے قدرت نے خوب مالا مال کیا ہوا ہو ۔ ابو مہینے میں صرف دو دن ہی گھر آتے ہیں اس میں بھی ایک دن آرام کرنے میں گزارتے ہیں اور اگر گھر پر مہمان آ جائیں 2 دن وہ امی کو وقت ہی نہیں دے پاتے اور اس سے امی کی مشکل اور بڑھ جاتی ہے ۔ ایسے میں میں نے اپنی سوتیلی ماں کی حالت کا فائدہ اٹھانے اور انکی مدد کرنے کا فیصلہ کیا ۔ کیوں کے میں نے انھیں کی بار روتے دیکھا ۔ ابو اور امی کا کمرہ گراؤنڈ فلور پے ہے اور میرا فرسٹ فلور پہ ۔ اور اکثر ہی میں کچن سے کچھ لینے نیچے آتا تو چھوٹی امی کے کمرے سے انکی رونے کی آواز آ رہی ہوتی تھی۔ میرے پوچھنے پر وہ ہمیشہ خراب طبیعت کا بہانہ کر کے ٹال دیتیں ۔ میں نے انکی مدد کا فیصلہ تو کر لیا مگر یہ تب ممکن تھا جب امی کو بھی اس مدد کی خواہش ہو ۔ اور انکے دل میں یہ خواہش جگانے کے لئے میں نے اس دن کے بعد سے میں نے پلان بنانا شروع کر دیا ۔ اگر سچ بتاؤں تو امی کی مدد تو صرف ایک بہانہ تھا۔ اصل مقصد تو اپنے اندر کی آگ کو بجھانا تھا جو میری سوتیلی ماں نے 5 سال پہلے جلائی تھی ۔

    ۔
    ۔
    ۔
    میری عمر 10 سال تھی جب میری امی اس دنیا سے انتقال کر گئیں ۔ میں اپنے والدین کی اکلوتی اولاد تھا ۔ امی کے گزر جانے کی بعد ابو اور میں ایک دوسرے کے ساتھ ہوتے ہوے بھی اکیلا محسوس کرتے تھے ۔ سب لوگوں نے ابو کو دوسری شادی کرنے کا مشورہ دیا ۔ لیکن ابو اپنے کام میں اس طرح مصرروف رہتے کے انھیں کبھی ٹائم ہی نہیں ملا کے وہ دوسری شادی کرتے ۔ اس مصروفیت کی وجہ سے ہے امی نے دوسرا بچا پیدا نا کرنے کا فیصلہ کیا تھا ۔ کیوں کے انکے لئے مجھے سمبھالنا ہے بہت مشکل کام تھا ۔
    ۔

    امی کے انتقال کو 5 سال گزر گئے ۔
    میں 15 سال کا تھا اور میٹرک کے امتحان دینے کے بعد چھٹیاں منا رہا تھا ۔ تب ایک دن میں نے اپنی دادی امی جو کے چھوٹے چاچو اور چچی کے ساتھ رہتیں تھی انکو ابو کو دوسری شادی کے لئے اصرار کرتے سنا ۔ ابو بار بار منع کر رہے تھے اور کہ رہے تھے کے انکی مصروفیت اتنی زیادہ ہے کے وہ دوسری شادی کے بعد نئی بیوی کے لئے وقت نہیں نکال پائیں گے ۔ جبکے دادی بار بار ایک ہی بات دوہرا رہی تھیں کہ انکے جانے کے دوسری شادی کروانے میں انکی کوئی مدد نہیں کرے گا اور یہ بات انکو کھاے جا رہی تھی انکا
    بیٹا ساری زندگی اکیلا رہے
    ۔
    ۔( دادی کو ہمیشہ چھوٹے چاچو سے زیادہ لگاؤ تھا کیوں کے انکی اولاد نہیں تھی ۔ میرے چاچو کام نام ریحان ہے اور چچی کا نام یاسمین ہے ۔ میرے چاچو کے بارے میں نے کسی سے سنا تھا کے وہ نا مرد ہیں اور انکا لن کھڑا ہی نہیں ہوتا تھا ۔چچی کو یہ بات ان سے شادی کے بعد پتا چلی ۔ اور چچی اپنے جسم کی بھوک مٹانے کے لئے انگلیوں اور کبھی لمبی سبزیوں کا سہارا لیتیں ۔ چاچو انکی مدد کے لئے کبھی انکی پھدی چاٹ لیتے تھے ۔ تو کبھی انگلیوں سے انکی پھدی کا جوس نکالنے کی کوشش کرتے ۔ مختصر یہ کے چچی یاسمین کی پھدی نے کبھی اصلی لن کا مزہ چکھا ہی نہیں تھا ۔)
    ۔
    ابو کے منع کرنے پر دادی نے اچانک رونا شروع کر دیا ۔ تنگ آ کر آخر ابو نے انکے آگے ہار مان لی اور دوسری شادی کی حامی بھر لی ۔ میں یہ سب سن کر کمرے میں داخل ہوا اور ابو کے پاس جا کر انکو اور دادی کو مخاطب کر کے بولا کے ابو کی شادی ضرور ہونی چاہیے ۔ میرا یہ کہنے کا مقصد تھا کے ابو میرے لئے پریشان نا ہوں ۔ آخر میں اب جوان ہو گیا تھا ۔ اور ابو کا اکیلے پن کا مجھے صحیح معنوں میں احساس ہونے لگا تھا ۔ یہ سن کر مانو جیسے ابو کے کندھے سے بوجھ اتر گیا ہو ۔ ابو فوراً دادی کو بولے کے وہ انکا رشتہ دیکھنا شروع کر دیں ۔ اس بات پر دادی بھی مسکرا دیں اور بولیں کے انہوں نے پہلے سے ہی ایک لڑکی پسند کر رکھی ہے ۔ ابو کے پوچھنے پر انہوں نے اسکا نام فرح بتایا ۔ ابو نے کچھ سوچا اور اثبات میں سر ہلایا ۔
    ۔
    فرح میرے چھوٹے چاچو کی سالی ہے ۔ جس کی اس وقت عمر 25 سال تھی اور ماسٹرز تک تعلیم حاصل کرنے کے بعد وہ گھر میں ہی رہتی تھیں ۔ میری ان سے بہت بنتی تھی کیوں کے میں انہی کے ٹیوشن پڑھ پڑھ کر پاس ہوتا تھا ۔اسکے ٹھیک 2 مہینے بعد ابو کی شادی بہت سادگی سے کر دی اور ابو چھوٹی امی کو لے کر گھر آ گئے ۔
    ۔
    ۔
    شادی کے بعد ایک مہینے تک ابو پہلے سے زیادہ وقت گھر گزارتے ۔ اور چھوٹی امی کو وقت اور پیار دونوں دیتے ۔ مگر شادی کی ایک مہینے بعد ہی ابو واپس اپنی پہلے والی روٹین پے کام کرنے لگے ۔ چھوٹی امی ہر وقت اداس رہتیں ۔ انکا کسی چیز میں دل نا لگتا ۔ میں نے انکا موڈ ٹھیک کرنے کی بہت کوشش کی لیکن وو تھوڑا سا مسکرا کر پھر خاموش ہو جاتیں ۔
    جیسے کیسے مہینے گزرا اور ابو کے آنے کا وقت قریب آیا تو چھوٹی امی کے چہرے پر پھر سے خوشی نظر آنے لگی ۔ اور وو سارا دن مجھ سے پوچھتیں کے کپڑے کونسے پہنو کھانے میں کیا بنانا چاہیے ۔ میں انکی مدد کرتا رہتا تھا ۔ ایک دن میں کالج کے لئے تیار ہو کر نکلا مگر وہاں جا کر معلوم ہوا کے ٹیچرز اور کالج کے مالک کے درمیان تنخواہ کو لے کر جھگڑا ہوا اور ٹیچرز احتجاج پر تھے جسکی وجہ سے کالج بند تھا ۔ میں نے کچھ وقت وہاں اپنے دوستوں کے ساتھ گزارا اور واپس گھر کی طرف روانہ ہوا ۔ اس وقت میرے وہم و گمان میں نہیں تھا کے آج کے دن سب کچھ بدلنے والا تھا ۔ میری سوتیلی ماں جسے ہمیشہ میں نے ماں کی نظر سے ہی دیکھا تھا آج انکے لئے میری سوچ اور نظر بدلنے والی تھی ۔ آج میرے اندر وہ آگ لگنے والی تھی جسے بجھانے میں مجھے 5 سال لگے ۔
    ۔
    ۔

  2. The Following 8 Users Say Thank You to Raheela.M For This Useful Post:

    abkhan_70 (02-09-2019), aloneboy86 (04-09-2019), azali (02-09-2019), curveslover (03-09-2019), falconn (03-09-2019), jerryshah (02-09-2019), Lovelymale (05-09-2019), omar69in (07-09-2019)

  3. #2
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    15
    Thanks Thanks Given 
    179
    Thanks Thanks Received 
    42
    Thanked in
    11 Posts
    Rep Power
    4

    Default زبردست آغاز

    آغاز سے لگ رہا ہے کہ کہانی میں کافی جان ہے
    پول میں اپنی رائے کا اظہار کرنا ابھی قبل از وقت ہے - کہانی کچھ آگے بڑھ جانے کے بعد رائے دینا زیادہ مناسب ہو گا
    اپ ڈیٹ کا انتظار رہے گا
    ہم سب کے لئے وقت نکال کر لکھنے کا شکریہ



  4. #3
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    46
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    58
    Thanked in
    30 Posts
    Rep Power
    6

    Default

    آغاز اچھا ہے
    تعارف کی رسم اچھے طریقے سے ادا ہوئی ہے
    بظاہر تو دو ٹارگٹس ہیں اس کہانی میں
    سوتیلی ماں اور چاچی
    گو کہ کہانی کا پلاٹ پرانا ہے لیکن دیکھا یہ ہو گا کہ آپ اس پرانے پلاٹ پر نئی عمارت کیسے کھڑی کرتی ہیں
    اور آپ کے قلم کی مہارت کا اصل امتحان بھی یہی ہو گا
    میری نیک تمنائیں آپ کے ساتھ ہیں

  5. The Following User Says Thank You to ArmanM For This Useful Post:

    omar69in (07-09-2019)

  6. #4
    Join Date
    Sep 2019
    Posts
    3
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    Ya story kab updated ho gi

  7. #5
    Join Date
    Nov 2019
    Posts
    4
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    1
    Thanked in
    1 Post
    Rep Power
    0

    Default

    Ye story complete kahan se mile gi

  8. #6
    Join Date
    Jan 2019
    Posts
    20
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    32
    Thanked in
    16 Posts
    Rep Power
    5

    Default

    ary behana jahan phly shuro ki ha wahn to is ko pora kr do ,,, wahn pori nai ki or yahn shuro kr di ha ,,, wahn pori hu gi to yahn pori hu gi ,, jese wahn pori nai ki wesy he yahn adhori chor do gi ,,, phly wahn ja k is kahani ko pora kro phr yahn shuro krna ...

  9. #7
    Join Date
    Nov 2019
    Posts
    4
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    1
    Thanked in
    1 Post
    Rep Power
    0

    Default

    Bro ye story complete kahan se mile gi

  10. The Following User Says Thank You to Arham981 For This Useful Post:

    omar69in (24-12-2019)

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •