اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

Page 15 of 19 FirstFirst ... 5111213141516171819 LastLast
Results 141 to 150 of 182

Thread: محبت کے بعد....................

  1. #141
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    رات کا کھانا ہم لوگوں نے چھت پر ہی کھایا۔۔ مزے کی بات یہ ہے کہ اس گاؤں کی ساری چھتیں آپس میں کچھ اس طرح سے ملی ہوئیں تھیں کہ کسی ایک کی چھت پر چڑھ کر آپ سارے محلے کی چھتوں پر جا سکتے تھے ۔۔کھانا کھاتے ہوئے اچانک ہی تائی اماں نے آنٹی کی طرف دیکھا اور کہنے لگی صائقہ ایک جگہ اور دیکھنے سے رہ ہی گئی ہے اس پر آنٹی نے چونک کر تائی اماں کی طرف دیکھا اور کہنے لگی وہ کون سی جگہ ہے آپا؟ تو تائی اماں جواب دیتے ہوئے کہنے لگیں ۔۔۔ دکھن کے محلے والی بشیراں ۔۔۔ بشیراں کا نام سنتے ہی آنٹی ایک دم سے بولی ۔۔۔






    اوہ ہاں ۔۔۔۔ اس کو تو میں بھول ہی گئی تھی۔۔۔۔۔ پھر بات کو جاری رکھتے ہوئے مزید کہنے لگیں۔۔۔۔آپ ٹھیک کہہ رہی ہو ۔ امجد کے چھپنے کے لیئے یہ جگہ بھی آئیڈیل ہو سکتی ہے اور وہ اس لیئے کہ بشیراں کا گھر والا باہر ہوتا ہے اور وہ اپنے بچوں کے ساتھ اکیلی رہتی ہے اس پر مہرو باجی نے لقمہ دیتے ہوئے کہا۔۔۔ آپ ٹھیک کہہ رہی ہو امی۔ماسی بشیرا ں کا بیٹا۔۔ لیاقت بھی تو امجد کا ایج فیلو اور گہرا دوست ہے۔۔۔اور ویسے بھی ۔۔۔ ماسی بشیراں بہت اچھی اور مدد کرنے والی خاتون ہیں ۔۔۔ مہرو باجی کی بات ختم ہوتے ہی چوہدری شیر کہنے لگا۔۔ تو پھر ٹھیک ہے کل صبع تم موٹر سائیکل پر اس کاکے (میری طرف اشارہ کر کے ) کے ساتھ چلی جانا ۔۔چوہدری کی بات سنتے ہی آنٹی نے اپنے دونوں کانوں کو ہاتھ لگاتے ہوئے کہا ۔۔ نہ بھائی صاحب نا ں ۔۔ ۔۔۔ جب سے امجد کے ابا نے مجھے موٹر سائیکل سے گرایا تھا اس کے بعد سے میں نے دوبارہ موٹر سائیکل پر بیٹھنے سے توبہ کر لی ہے۔آنٹی کی بات سن کر چوہدری ہنستے ہوئے بولا ۔۔۔۔۔ میرا بھائی اناڑی بندہ تھا جبکہ یہ بچہ (میری طرف اشارہ کرتے ہوئے) بہت اچھی موٹر سائیکل چلا لیتا ہے چوہدری کی بات سن کر آنٹی نے فٹ سے جواب دیا ۔۔۔ یہ منڈا بائیک اچھا چلائے یا برا ۔۔۔ چاہے کچھ بھی ہو جائے ۔۔۔میں نے تو مر کر بھی بائیک کی سواری نہیں کرنی پھر چوہدری کی طرف دیکھ کر کہنے لگی ۔۔۔ ایک دفعہ جو اپنا بازو تڑوا چکی ہوں میرے لیئے وہی کافی ہے ۔۔۔ اس لیئے میں تو کسی صورت بھی موٹر سائیکل پر نہیں بیٹھوں گی ۔۔۔۔۔آنٹی کا دوٹوک جواب سن کر چوہدری ہنستے ہوئے بولا۔۔۔ چل تیری مرضی پھر ایسا کرتے ہیں کہ صبع میں جیجے سے کہہ دوں گا وہ تم کو پکی سڑک تک لے جائے گا آگے تم بس میں بیٹھ کر چلی جانا۔۔۔ پھر کچھ توقف کے بعد کہنے لگا۔۔۔۔ ایسا کرنا کہ تم اپنے ساتھ مہرو کو لے جاؤ ۔۔۔تائے کی بات سن کر مہرو اپنے کانوں کو ہاتھ لگا کر بولی ۔۔۔ نہ تایا جی نا۔۔۔ میں نے امی کے ساتھ ان ڈربے والی بسوں میں ہرگز نہیں جانا۔اس کے بعد چوہدری نے باری باری تائی اور مینا سے بھی یہی بات پوچھی۔۔۔ لیکن جب باری باری سب نے جانے سے انکار کر دیا ۔تو آنٹی کو غصہ آ گیا ۔۔ اور وہ ترش لہجے میں کہنے لگی تم لوگوں نے میرے ساتھ نہیں جانا تو نہ جاؤ ۔۔۔ مجھے بشیراں کے گھر کا راستہ آتا ہے اورمیں اکیلی بھی جا سکتی ہوں اس پر چوہدری سنجیدہ ہوتے ہوئے بولا ۔۔۔ نہ کڑیئے ۔۔۔۔ تم اکیلی کہیں نہیں جاؤ گی ایسا کرو اپنے ساتھ اس منڈے کو لے جاؤ۔۔۔۔۔ چوہدری کی بات سن کر آنٹی نے ایک نظر میری طرف دیکھا اور کہنے لگیں ۔۔۔۔۔۔۔ کیوں بیٹا ۔۔۔کیا تم میرے ساتھ جانے کو تیار ہو؟ مرتا کیا نہ کرتا ۔۔۔ میں نے ہاں میں سر ہلا دیا حالانکہ میرا خیال تھا کہ آنٹی اور مہرو چلی جاتیں تو پیچھے میں نے نوراں کے ساتھ موج مستی کرنی تھی۔۔۔۔لیکن یہ نہ تھی ہماری قسمت۔۔۔۔۔





    اگلی صبع میں بعد از ناشتہ تیار ہو کر اپنے کمرے میں بیٹھا ناول پڑھ رہا تھا کہ اتنے میں چوہدری شیر بھی اپنے کھیتوں سے ہو کر گھر آ گیا۔۔اور آتے ساتھ ہی مجھ سے بولا ۔۔۔ کیوں منڈیا جانے کے لیئے تیار ہو؟ تو میں نے اثبات میں سر ہلا دیا ۔۔۔اس کے بعد وہ وہیں بیٹھ کر میرے ساتھ گپ شپ لگانے لگا ۔۔۔ کچھ ہی دیر بعد عزیز بھی گھر پر پہنچ گیا اور چوہدری کے پاس آکر کہنے لگا۔۔۔ چوہدری صاحب ٹانگہ تیار ہے۔۔۔عزیز کی بات سن کر چوہدری نے میری طرف دیکھا اور بولا ۔۔۔ بیٹا جا کے صائقہ کو بتا آؤ کہ ۔۔۔ ٹانگہ تیار ہے ۔۔چوہدری کی بات سن کر میں پلنگ سے اُٹھا اور آنٹی کے کمرے کی طرف جانے لگا جبکہ عزیز اور چوہدری میرے کمرے میں بیٹھ کر گپیں لگا رہے تھے ۔۔۔ کمرے سے باہر نکلا تو سامنے ہی ۔۔۔۔ دشمنِ جاں یعنی کہ نوراں آپا بیٹھی ہوئی تھی اس کی طرف دیکھتے ہوئے مجھے کل شام والا منظر یاد آ گیا ۔۔۔ میری نظریں تو اسی کی طرف لگی ہوئیں تھیں لیکن مجال ہے جو اس کافر ہ نے ایک دفعہ بھی آنکھ اُٹھا کر میری طرف دیکھا ہو ۔۔۔ میں اسی کے خیالوں میں کھویا ہوا صائقہ آنٹی کے کمرے پر پہنچ گیا تو وہ ادھ کھلا تھا جس کا میں نے کوئی خیال نہیں کیا اور دروازہ کھول کر اندر داخل ہو گیا۔۔۔۔۔۔ دروازے میں داخل ہوتے ہی میری نظر سامنے پڑی تو۔۔۔۔۔ میرے چودہ طبق روشن ہو گئے کیونکہ میرے سامنے صائقہ آنٹی کھڑی تھیں اس وقت انہوں نے صرف شلوار پہنی ہوئی تھی اور ان کا اوپری جسم یعنی کے مم ے بلکل ننگے تھے اور ان کے ایک ہاتھ میں ٹالکم پوڈر پکڑا ہوا تھا اور وہ شیشے کے سامنے کھڑی اپنے مموں پر وہ خوشبودار پوڈر چھڑک رہیں تھیں ۔۔۔ جیسے ہی میری نظروں نے ان کا ننگا بدن دیکھا ۔۔۔۔ تو ایک لمحے کے لیئے میں تو سُن ہو کر رہ گیا۔۔اور بے وقفوں کی طرح آنکھیں پھاڑ پھاڑ کر ان کو دیکھنے لگا۔۔۔جبکہ دوسری طرف مجھے اندر آتا دیکھ کر وہ چونک گئیں ۔۔۔۔ اور جلدی سے اپنے دونوں ہاتھ اپنی چھاتیوں پر رکھ لیئے۔۔۔۔ ۔۔۔ انہیں دیکھ کر میں شرمندگی اور ۔۔۔۔بوکھلاہٹ کے انداز میں ان سے بولا۔۔۔ وہ جی وہ۔۔۔ ٹانگے والا آ گیا ہے اور پھر ان کا جواب سنے بغیر واپس بھاگ گیا۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔ ۔۔۔




    اور دل ہی د ل میں سوچنے لگا کہ واہ کیا شاندار چھاتیاں تھیں۔۔۔جب میں کمرے میں پہنچا تو مجھے دیکھ کر چوہدری کہنے لگا۔۔۔۔ بتا آئے ہو پتر ؟ تو میں نے جھوٹ بولتے ہوئے کہا جی ہاں۔۔۔۔ وہ تیار ہو کر آ رہی ہیں تو میری بات سن کر چوہدری کہنے لگا۔۔۔ مطبل ابھی ایک گھنٹہ مزید انتظار کرنا پڑے گا ۔۔۔ اس کے بعد وہ اونچی آواز میں کہنے لگا۔۔ نوراں پتر ۔۔۔ چاچے کے لیئے چائے تو بنا لو ۔۔ لیکن شاید نوراں نے ان کی بات نہیں سنی اس لیئے ایک دو بار آواز دینے کے بعد۔۔۔۔وہ میری طرف دیکھ کر کہنے لگا ۔۔۔پترا زرا جا کے نوراں سے چاچے کے لیئے چائے کا تو کہہ آؤ ۔۔ چوہدری کی بات سن کر میں باہر نکلا اور سیدھا اس حسن کی دیوی کے پاس جا پہنچا ۔۔۔اور اسے چاچے کا پیغام دے دیا ۔۔میری بات سن کر وہ سر ہلا کر دھیرے سے بولی۔۔۔چاچی کے ساتھ نہ جاؤ نا ؟ تو اس پر میں نے بھی دھیمی آواز میں اسے جواب دیتے ہوئے کہا۔۔۔ میں کوئی شوق سے تو نہیں بلکہ ۔۔۔مجبوری سے جا رہا ہوں۔۔۔ تو وہ کہنے لگی۔۔۔ جلدی آنے کی کوشش کرنا ۔۔۔


  2. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  3. #142
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    کچھ دیر بعد نوراں ہاتھ میں چائے کی پیالی پکڑے کمرے میں داخل ہوئی ۔۔ تو چوہدری اس سے کہنے لگا۔۔۔ کہ پتر یہ باقی کی خواتین کہاں ہیں ؟ آس پاس کوئی نظر نہیں آ رہی ۔۔تو نوراں نے مسکرا کر جواب دیتے ہوئے کہا کہ چاچی کے ساتھ جانے کے خوف سے ساری خواتین تڑکے ہی ڈیرے پر چلی گئیں تھیں ۔۔۔۔نوراں کی بات سن کر چوہدری نے ایک فرمائشی سا قہقہہ لگایا اور کہنے لگا۔۔۔ تبھی میں بھی کہوں ۔۔۔۔کہ آخر صبع صبع یہ ساری زنانیاں کہاں چلیں گئیں ؟؟۔۔۔۔عزیز کے چائے پینے کے کافی دیر بعد بھی جب آنٹی باہر نہ آئیں تو ایک دفعہ پھر سے چوہدری مجھ سے کہنے لگا۔۔۔۔جا پتر اسے کہو کہ جلدی آئے۔۔۔ چوہدری کی بات سن کر نا چاہتے ہوئے بھی میں دھڑکتے دل کے ساتھ پھر سے کمرے کی طرف جانے لگا۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جیسے ہی میں دروازے کے قریب پہنچا ۔۔۔۔تو آگے سے آنٹی آتی ہوئی دکھائی دی۔۔۔ مجھ دیکھ کر کہنے لگیں۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔ چلو چلیں۔۔۔۔





    ۔۔۔۔۔ آنٹی جس وقت اپنے کندھے پر پرس لٹکا کر باہر نکل رہی تھی ۔۔۔۔۔۔۔تو اس وقت چوہدری شیر اور عزیز باہر کھڑے ہو کر ہمارے ہی انتظار کر رہے تھے۔۔۔۔ آنٹی کی سج دھج دیکھ کر واضع طور پر چوہدری کی آنکھوں میں ۔۔۔۔ میں نے ایک لمحے کے لیئے ستائیش اور ایک خاص قسم کی چمک دیکھی ۔۔۔۔ پھر اگلے ہی لمحے اس کی آنکھیں سپاٹ ہو گئیں اور وہ آنٹی کی طرف دیکھتے ہوئے کہنے لگا۔۔۔۔ ۔۔۔۔ جلدی کرو لیٹ ہو رہے ہو۔۔۔۔۔۔تو آنٹی جواب دیتے ہوئے کہنے لگیں ۔۔۔کوئی گل نہیں بھائی جان ہم نے کون سا گڈی چڑھنا ہے۔۔۔اور پھر ہم چلتے ہوئے گلی سے باہر کھڑے تانگے کے پاس پہنچ گئے۔۔۔ آنٹی تانگے کی اگلی سیٹ اور میں پچھلی سیٹ پر بیٹھ گیا۔۔۔ جب عزیز ٹانگے والے نے ہمیں پکی سڑک پر اتارا ۔۔۔ تو سامنے سٹاپ پر کافی لوگ کھڑے بس کا انتظار کر رہے تھے - آنٹی اور میں بھی ان لوگوں سے تھوڑا ہٹ کر ایک طرف کھڑے ہو گئے۔۔۔میں چونکہ صبع بنا ناک کیئے آنٹی کے کمرے میں چلا گیا تھا ۔۔۔۔اور وہاں پر آنٹی کی خوبصورت چھاتیوں کو ننگا دیکھ لیا تھا ۔۔ ۔۔۔۔۔ اس لیئے دل میں چور ہونے کی وجہ سے میں آنٹی سے نظریں نہیں رہا تھا اور ان سے کوئی بات کیئے بغیر مسلسل دوسری طرف دیکھ رہا تھا ۔۔۔۔میری اس حرکت کو آنٹی نے بھی محسوس کر لیا تھا اسی لیئے انہوں نے آواز دے کر مجھے اپنے پاس بلا یا ۔۔۔۔اور کہنے لگی۔۔۔ کیا بات ہے تم کچھ پریشان سے نظر آ رہے ہو۔۔۔تو میں نے نگاہیں نیچ کیے ان سے کہا ۔۔۔ایسی کوئی بات نہیں آنٹی ۔۔۔۔تو وہ میری طرف دیکھتے ہوئے کہنے لگیں اگر ایسی بات نہیں ہے تو یہ تمہارے چہرے پر بارہ کیوں بج رہے ہیں؟ اور پھر بات کو جاری رکھتے ہوئے کہنے لگی۔۔۔ بولو نہ کیا بات ہے؟ ان کی بات سن کر میں نے ایک پھیکی سی مسکراہٹ سے ان کی طرف دیکھا اور کہنے لگا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ ۔۔وہ اصل میں نے صبع مجھ سے غلطی ہو گئی تھی اور میں بنا ناک کیئے آپ کے کمرے میں چلا گیا تھا ۔۔اس لیئے۔۔۔ تو وہ میری بات کو کاٹ کر کہنے لگی۔۔۔۔۔۔۔اوہ۔۔۔اچھا تو یہ بات ہے ۔۔۔ابھی وہ مزید کچھ کہنے ہی لگی تھیں کہ دور سے بس آتی ہوئی دکھائی دی۔۔۔۔ تو وہ بس کی طرف دیکھتے ہوئے بولی ۔۔۔ تیاری پکڑ لو ۔۔۔





    اتنی دیر میں ۔۔۔۔عین ہمارے سامنے آ کر بس رک گئی ۔۔۔ اتفاق سے اس میں اترنے والی کوئی سورای نہ تھی اس لیئے بس کے رکتے ہی آنٹی نے اس کی سیڑھی کے ساتھ والا پائپ پکڑا اور اندر داخل ہو گئی ان کے پیچھے پیچھے میں بھی بس میں داخل ہو گیا ۔۔ اندر جا کر دیکھا تو پہلے سے ہی ایک جم غفیر بس میں موجود تھا ۔۔۔۔ اور ابھی اور لوگ بھی بس میں سوار ہو رہے تھے چونکہ میرے آگے آنٹی کھڑی تھیں اس لیئے کنڈکٹر ان سے مخاطب ہو کر بولا۔ باجی تھوڑا آگے آ جاؤ کہ باقی کے لوگ بھی بس میں سوار ہو سکیں تو اس پر آنٹی نے جل کر جواب دیتے ہوئے کہا آگے کون سی جگہ ہے جہاں پر میں آؤں ؟ ابھی آنٹی نے اتنی ہی بات کی تھی کہ اچانک پیچھے سے مجھے ایک دھکا لگا اور میں اچھل کر آگے کو کھسک گیا۔۔۔ میرے آگے چونکہ صائقہ آنٹی کھڑی تھیں اس لیئے دھکا لگنے کی وجہ سے میں ان کے ساتھ جا لگا۔۔۔۔۔۔۔۔ مجھے اپنے ساتھ لگتے دیکھ کر آنٹی نے بس ایک نظر میری طرف دیکھا اور پھر تھوڑا آگے کو کھسک گئی۔۔۔ لیکن چونکہ پیچھے سے لوگ مسلسل مجھے آگے کو دھکیل رہے تھے اس لیئے نا چاہتے ہوئے بھی میں آنٹی کے ساتھ بلکل جُڑ کر کھڑا ہو گیا۔۔۔۔۔۔۔۔اور آنٹی کے بلکل ساتھ جُڑ کے کھڑے ہونے کی وجہ سے ۔۔۔ آنٹی کی شاندار گانڈ بلکل میرے ۔۔۔۔آگے والے حصے کے ساتھ لگ گئی۔۔۔۔۔۔۔میرے اس طرح کھڑے ہونے سے ۔۔۔۔ وہی ہوا۔۔۔۔۔ کہ جس کا مجھے ڈر تھا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آنٹی کی شاندار گانڈ کا لمس پا کر میرے بدتمیز۔۔۔ناہنجار ۔۔۔نافرمان ۔۔پپو ۔۔۔۔۔ نے ایک انگڑائی لی ۔۔۔۔۔اور میرے لاکھ منع کرنے کے باوجود بھی ان کی شاندار گانڈ سے۔۔۔ میرا۔۔۔۔ پپو میاں۔۔۔۔ ٹچ ہونے ہی والا تھا کہ ۔۔۔ میں ڈر گیا ۔۔۔۔اور اس وقت ڈر کے مارے مجھے اور تو کچھ نہ سوجھا ۔۔۔۔۔ اور میں نے لن کو آنٹی کی گانڈ کے ٹچ سے بچانے کے لیئے جھٹ سے اپنا ایک ہاتھ آگے بڑھا کر ۔۔۔ لن کے آگے رکھ دیا۔۔۔۔۔۔اتنے میں پیچھے سے ایک اور دھکا لگا اور اب میرا ہاتھ آنٹی کی گانڈ کے ساتھ ٹچ ہو گیا۔۔۔۔۔ میرے ہاتھ کا آنٹی کی گانڈ سے ٹچ ہونے کی دیرتھی کہ اچانک آنٹی نے مُڑ کر ایک نظر میری طرف اور پھر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ نیچے میرے ہاتھ کی طرف دیکھا ۔۔۔۔۔ان کے اس طرح دیکھنے سے میں نے۔۔۔۔شرم اور ڈر کی وجہ سے تھوڑا پیچھے کی طرف کھسکنے کی کوشش کی لیکن۔۔۔بے سود۔۔۔۔میں جتنا پیچھے ہو نے کی کوشش کرتا ۔۔۔۔ دھکے سے اور آگے ہوتا جا رہا تھا ۔۔۔ جس کی وجہ سے میرے ہاتھ کی پشت آنٹی کی گانڈ میں کھُب سی گئی تھی۔۔۔۔۔ ایسا ہوتے ہی آنٹی نے ایک بار پھر سے مُڑ کر میری طرف دیکھا اور قبل اس کے کہ وہ کچھ کہتیں ۔۔۔۔۔ اچانک ان کی ساتھ والی سیٹ پر بیٹھی ہوئی مائی یہ کہتے ہوئے اُٹھ کھڑی ہوئی کہ ۔۔۔۔ آپ بیٹھ جاؤ میں نے اگلے سٹاپ پر اترنا ہے۔۔۔

  4. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  5. #143
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    اس مائی کی بات سن کر آنٹی جلدی سے آگے بڑھیں ۔۔۔ اور تھوڑی سی دھکم پیل کے بعد سیٹ پر جا کر بیٹھ گئیں یہ دیکھ کر میں نے بھی شکر ادا کیا اور سیدھا کھڑا ہو گیا۔۔۔۔۔تھوڑی دیر بعد بس ایک سٹاپ پر رکی ۔اور پہلے کی طرح پھر سے ایک جمِ غفیر بس میں سوار ہو گیا ۔۔۔اس دفعہ غضب یہ ہو ا کہ اس دفعہ کی دھکم پیل کے بعد میرے سامنے ایک پہلوان نما عورت کھڑی ہو گئی۔۔۔۔۔جس کے ساتھ ٹچ ہونے کے ڈر سے میں نے جلدی سے اپنا رُخ تبدیل کر لیا ۔۔۔۔اور تھوڑی سی کوشش کے بعد میں آنٹی کی طرف منہ کر کے کھڑا ہو گیا۔۔۔۔ اسی دوران مجھے ایک دھکا لگا اور میں کھسک کر آنٹی کی سیٹ کے بلکل ساتھ جُڑ کر کھڑا ہو گیا ۔۔۔۔۔ اور تبھی مجھے اپنی غلطی کا احساس ہوا کیونکہ سیٹ کے ساتھ جُڑ کر کھڑے ہونے کی وجہ سے میرا فرنٹ آنٹی کے کندھوں کے ساتھ بلکل ساتھ لگ گیا تھا ۔۔۔۔ اور مجھے اچھی طرح سے معلوم تھا کہ میرا نافرمان ۔۔۔ ناہنجار ۔۔۔۔اور بدتمیز پپو ان کی نرم کندھوں کا لمس پا کر ضرور کھڑا ہو گا ۔۔۔اس لیئے میں نے دوبارہ سے اپنا رُخ مڑنا چاہا تو اتفاق سے میں اس پہلوان نما عورت سے جا ٹکرایا۔۔۔ ۔۔۔ جیسے ہی میرا فرنٹ۔۔ اس کی بیک کے ساتھ ٹچ ہوا۔۔۔۔۔اس پہلوان نما عورت نے پیچھے مُڑ کر غضب ناک نظروں سے مجھے دیکھا ۔۔۔اور درشت لہجے میں کہنے لگی ۔۔۔ دھیان نال باؤ۔۔۔۔ عجیب مصیبت تھی ۔۔۔۔اگر میں سیدھا کھڑا ہوتا تو میرے ناہنجار پپو نے لازماً اس پہلوان نما عورت کی بیک سے ٹچ ہونا تھا اور اگر اسی حالت میں رہتا تو ۔۔تو اس کم بخت نے آنٹی کے کندھوں کو جا لگنا تھا ۔۔۔اب میرے ساتھ آگے کنواں اور پیچھے کھائی والا معاملہ بن گیا تھا۔۔اس لیئے میں نے کنویں (پہلوان نما عورت) کو چھوڑ ۔۔۔۔ کھائی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میں ہی گرنے کا فیصلہ کیا ۔۔۔ اور شرافت سے آنٹی کی طرف منہ کیئے کھڑا رہا۔۔۔۔ادھر بس کے ہچکولوں کی وجہ سے ۔۔۔۔۔۔۔ میرا فرنٹ بار بار آنٹی کے کندھوں کے ساتھ مس ہو رہا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اور پھر اگلے چند ہی سیکنڈ ز کے بعد ۔۔۔۔۔۔۔ میرے منت ترلوں کے باوجود بھی۔۔۔۔ پپو میاں نے ایک بھر پور انگڑائی لی۔۔۔۔۔۔اور آہستہ آہستہ کھڑا ہونا شروع کر دیا۔۔۔ادھر میں اس وقت کو کوس رہا تھا کہ جب میں شلوار قمیض پہن کر آنٹی کے ساتھ آیا تھا ۔۔۔۔اگر اس وقت میں نے شلوار قمیض کی جگہ پینٹ شرٹ پہنی ہوتی تو میرے لیئے اس صورتِ حال کو کنٹرول کرنا کوئی خاص مشکل نہ تھا۔۔۔ لیکن اب پچھتائے کیا ہوت ۔۔۔۔۔۔۔ اسی دوران وہی ہوا کہ۔۔۔جس کا ڈر تھا۔۔۔۔۔۔۔۔۔میری منت سماجب کو نظر انداز کرتے ہوئے کم بخت پپو جان انگڑائی لے کر کھڑا ہو گیا۔اور بس کے اگلے ہچکولے پر ۔۔۔ اس کی نوک آنٹی کے نازک کندھے کے ساتھ ٹچ ہو گئی۔۔۔ جیسے ہی میرے پپو کی نوک آنٹی کے کندھے سے لگی۔۔۔انہوں نے چونک کر ایک نظر میری طرف۔۔۔۔۔ اور دوسری نظر ۔۔۔۔۔میری شلوار کے آگے ٹینٹ بنے ۔۔۔۔۔۔۔ پپو کی طر ف۔۔۔پھر بڑی ہی عجیب نظروں سے میری آنکھوں میں آنکھیں ۔۔۔ڈال کر دیکھا۔۔۔۔ ان کے اس طرح دیکھنے سے میں نے خود کو کوستے ہوئے کہا ۔۔۔ مر گئے بھائی۔۔ ۔۔۔ کیونکہ آج صبع سے یہ میری تیسری غلطی تھی پہلی غلطی ان کی ننگی چھاتیوں کو دیکھنا تھی۔۔۔ اس کے بعد دوسری غلطی ۔۔۔۔ان کی گانڈ پر ہاتھ لگانا ۔۔ا۔ور اب تیسری اور بھاری غلطی۔۔۔ان کے کندھے پر لن رگڑنا تھی۔۔





    ابھی میں اسی سوچ و بچار میں گم تھا کہ ۔۔۔۔۔ اچانک ہی آنٹی نے دونوں ہاتھ اپنے سینے پر باندھے اور سر کو نیچے جھکا دیا ۔۔۔۔۔۔پھر کچھ دیر کے بعد انہوں نے سر جھکائے ہوئے۔۔۔۔اپنے بائیں بازو کو اوپر اُٹھایا۔۔جس کی وجہ سے ان کی بغل اور بازو کے درمیان ایک گیپ سا بن گیا۔۔۔۔۔ اس کے بعد آنٹی نے ۔۔۔دھیرے دھیرے اپنے دائیں ہاتھ کو آگے بڑھا کر اس گیپ سے ۔۔ گزار۔۔۔کر ۔۔۔اپنی انگلیوں کی مدد سے میرے لن کے اگلے حصے کو ٹٹولا۔۔۔۔۔۔۔ پھر بڑی آہستگی کے ساتھ اپنی انگلیوں کو میرے ٹوپے پر پھیرنا شروع کر دیا۔۔۔۔۔۔۔میں آنٹی کی یہ حرکت دیکھ کر ہکا بکا رہ گیا ۔۔۔اور حیرت سے میری آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئین ۔۔لیکن دوسری طرف میری حیرت سے بے نیاز ۔۔۔۔۔۔۔آنٹی مسلسل میرے لن کے ہیڈ پر اپنی مخروطی انگلیاں پھیر رہیں تھیں ۔۔۔۔۔۔۔۔ اور سچی بات یہ ہے کہ اس وقت آنٹی کی اس مزے دار حرکت پر مجھے مزہ بھی مل رہا تھا۔۔۔اور حیرت بھی ہو رہی تھی۔۔۔ ابھی میں اسی بارے سوچ ہی رہا تھا کہ اسی حالت میں بیٹھے بیٹھے ۔۔۔آنٹی تھوڑا اور آگے ہوئیں اور اپنی بغل اور بازو کے گیپ کے نیچے اپنے ہاتھ کو تھوڑا اور آگے بڑھا کر میرے لن کو اپنے ہاتھ میں پکڑ لیا۔۔۔۔جیسے ہی انہوں نے میرے لن کو اپنے ہاتھ میں پکڑا میں تو حیرت کے سمندر میں غوطے کھانے لگا۔۔۔ مجھے آنٹی سے اس انتہائی اقدام کی ہر گز توقع نہ تھی ۔۔۔ اس لیئے آنٹی کا اس طرح دیدہ دلیری سے میرے لن کو پکڑنے کی وجہ سے۔۔۔۔ پہلے تو میں خاصہ پریشان ہوا لیکن ۔۔۔۔۔۔۔۔ پھر یہ سوچ کر کہ ۔۔۔۔۔۔ پہل میں نے نہیں ۔۔۔کی۔۔۔۔ کچھ ریلکس ہو گیا ۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور پھر میں نے چور نظروں سے ادھر ادھر دیکھا تو بس میں ویسے ہی ہڑنگ بوم مچی ہوئی تھی۔۔۔ کسی کا کسی طرف دھیان ہی نہیں تھا۔۔۔ اور ویسے بھی جس طریقے سے آنٹی نے میرے لن کو پکڑا تھا ۔۔۔وہ بہت ہی محفوظ اور انوکھا تھا۔۔۔۔۔۔۔۔ پھر اِدھر اُدھر دیکھتے ہوئے میں بھی تھوڑا آگے کو کھسک گیا اور اپنی ٹانگیں کھول دیں ۔۔۔۔جس کی وجہ سے آنٹی کے ہاتھ کو میرے پورے لن پر رسائی مل گئی تھی ۔۔۔۔۔پہلے تو آنٹی نے میرے ٹوپے پر اپنی انگلیوں کی مدد سے مساج کیا ۔۔۔ پھر میرے لن کو پکڑ کر اسے سہلانے لگیں۔۔۔۔ آنٹی کے لن سہلانے سے مجھے بہت زیادہ مزہ مل رہا تھا۔۔۔۔دیکھنے والوں کے لیئے تو آنٹی دونوں ہاتھ سینے پر رکھے بظاہر سو رہی تھی ۔۔۔۔۔ لیکن یہ بات صرف مجھے ہی معلوم تھی کہ بظاہر سوتی ہوئی نظر والی اس آنٹی نے اپنے ہاتھ میں میرے لن کو پکڑ رکھا ہے۔۔۔۔۔


  6. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  7. #144
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    کافی دیر تک وہ میرے لن کو اپنے ہاتھ میں پکڑکر سہلاتی رہی۔۔۔۔۔پھر جب کنڈکٹر نے ہمارے سٹاپ کی اناؤنسمنٹ کی تو وہ سیدھی ہو کر بیٹھ گئیں۔۔اور پھر اپنی سیٹ سے اُٹھتے ہوئے بولیں ۔۔۔۔۔۔ ہمارا سٹاپ آ رہا ہے دروازے کی طرف چلو۔۔۔۔۔ اور پھر بس رکنے پر کسی نہ کسی طرح ہم دروازے تک پہنچ گئے ۔۔۔ بس سے ہی نیچے اتر کر وہ بڑی بے نیازی سے بولیں کہ ۔۔۔۔۔۔۔ ہم نے سامنے والی گلی میں جانا ہے۔۔۔۔۔ وہاں جا کر انہوں نے ایک دروازے پر دستک دی تو اندر سے ایک بزرگ عورت نے دروازہ کھولا ۔۔۔۔۔آنٹی کو دیکھتے ہی اس نے خوشی سے ایک نعرہ مارا۔۔۔۔۔۔۔ نی صائقہ توں؟ اور پھر آنٹی کے ساتھ گلے لگ گئی۔۔اور ہمیں اندر آنے کو کہا ۔۔۔ یہ ماسی بشیراں کی والدہ تھی پھر اس نے پوچھنے پر بتلا یا کہ اس کی بیٹی بشیربی بی۔۔۔۔۔ کے سسرال میں کوئی فوت ہو گیا تھا اس لیئے کچھ دیر پہلے ہی وہ اپنے سسرالی گاؤں جانے کے لیئے گھر سے نکلی ہے ہر چند کہ اس بزرگ کے منہ سے یہ بات سن کر آنٹی خاصی مایوس ہوئی۔۔۔۔لیکن اس کے باوجود بھی انہوں نے بڑے طریقے سے امجد کے بارے میں پوچھ گچھ کی ۔۔۔۔ تو معلوم ہوا کہ باقی لوگوں کی طرح انہیں بھی امجد کے بارے میں کچھ معلوم نہ تھا ۔۔۔ایک آدھ گھنٹے تک وہاں بیٹھنے کے بعد ۔۔۔۔ آنٹی نے ان سے اجازت لی اور پھر آنٹی مجھے ساتھ لیئے ایک دو اور گھروں میں بظاہر تو ان سے ملنے لیکن درپردہ امجد کی سن گن لینے گئی تھی۔۔۔ اور مزے کی بات یہ ہے کہ اس دوران انہوں نے بھولے سے بھی ۔۔۔۔۔ بس والے واقعہ کا کوئی ذکر نہیں کیا ۔۔۔اور نہ ہی میں نے اس بارے ان سے کسی قسم کی گفتگو کرنے کی کوشش کی۔۔۔۔خیر کوئی تین چار گھنٹے تک ادھر ادھر پھرنے اور مختلف گھروں سے معلومات لینے کے بعد۔۔۔۔ ہم نے واپسی کا قصد کیا۔۔۔۔۔





    جب ہم پکی سڑک جانے کے لیئے لاری اڈے پر پہنچے تو اس وقت اتفاق سے سکولوں کو چھٹی ہو گئی تھی اور لاری اڈے پر ملیشاء کی وردی پہنے بہت سے لڑکے کھڑے تھے ۔۔۔۔۔۔۔ اسی دوران پیچھے سے ایک بس آتی دکھائی دی تو آنٹی نے مجھے ہوشیار کرنے کے بعد خود بھی بس میں چڑھنے کے لیئے تیار ہو گئیں ۔۔۔۔۔ جیسے ہی بس رکی تو کنڈکٹر نے ہانک لگائی کہ سارے سٹوڈنٹ چھت پر چلے جاؤ ۔۔۔۔ جبکہ میں اور آنٹی بس میں سوار ہو گئے۔۔۔ حسبِ معمول بس پیک تھی اور صبع کی نسبت اس وقت بس میں زیادہ تعداد سٹوڈنٹس کی تھی۔۔۔۔۔۔۔ بس میں سیٹ نہ ہونے کی وجہ سے ہم دونوں بس کی گیلری میں سیلنگ والے ڈنڈے کو پکڑ کر کھڑے ہو گئے ۔۔۔۔ابھی ہم بس میں کھڑے ہی ہوئے تھے کہ اچانک ایک ساتھ بہت سارے سٹوڈنٹنس بس میں سوار ہو گئے۔۔۔ اور پھر جیسے ہی بس چلی۔۔۔ میں جو آنٹی کے عین پیچھے کھڑا تھا ایک زبردست دھکا لگنے کی وجہ سے کھسکتا ہوا دوسری طرف چلا گیا ۔۔۔اور میں نے مُڑ کر دیکھا تو اب میری جگہ آنٹی کے پیچھے ملیشاء کی وردی پہنے ایک اور لڑکا کھڑا تھا۔۔۔۔ اور میں نے دیکھا کہ کچھ دیر بعد اگلے ہچکولے کے بعد وہ لڑکا کھسک کر عین آنٹی کے پیچھے کھڑا ہو گیا تھا ۔۔۔۔۔جیسے ہی وہ لڑکا آنٹی کے پیچھے کھڑا ہوا ۔۔۔۔ تو اس نے فوراً ہی اپنے فرنٹ کو آنٹی کی بیک کے ساتھ جوڑ دیا تھا۔۔۔۔۔ دوسری طرف میرے خیال میں آنٹی یہ سمجھی کہ ان کے پیچھے میں ہوں اس لیئے انہوں نے بڑے آرام سے اپنی گانڈ کو اس لڑکے کے ساتھ لگا رہنے دیا۔۔۔جب اس لڑکے نے یہ دیکھا کہ اس کے آگے والی آنٹی اپنی گانڈ کو خود ہی اس کے لن کے ساتھ جوڑ رہی ہے تو وہ شیر ہو گیا۔۔۔۔اور پھر میرے دیکھتے ہی دیکھتے اس کی شلوار میں تنبو بن گیا۔۔۔اور پھر اس نے ادھر ادھر دیکھتے ہوئے اپنی قمیض کو ایک سائیڈ پر کر لیا ۔۔۔۔۔۔اور بس کے اگلے ہچکولے ۔۔۔۔۔پر اس نے اپنے لن کو آنٹی کی گانڈ کی دراڑ میں پھنسا لیا۔۔۔ اب میری پوزیشن یہ تھی کہ میں اس لڑکے سے ایک فٹ کے فاصلے پر کھڑا بصد حسرت ا س منظر کو دیکھ کر جل رہا تھا ۔۔لیکن بس میں اس قدر زیادہ رش اور ہڑبونگ مچی ہوئی تھی کہ چاہنے کے باوجود بھی میں کچھ نہ کر سکتا ہے۔۔۔۔ اس کے باوجود بھی میں نے ایک دو دفعہ آنٹی کو مخاطب کر کے یہ بتانے کی کوشش کی کہ میں ان سے دور کھڑا ہوں ۔۔۔۔ لیکن شاید شور کی وجہ سے ان کے کانوں تک میری آواز نہیں پہنچی تھی۔۔آخری چارے کے طور پر میں نے زور لگا کر اس لڑکے کی طر ف جانے کی بھی کوشش کی لیکن۔۔۔۔۔۔۔۔ میں جتنا اس کی طرف جانے کی کوشش کرتا رش کی وجہ سے اتنا ہی پیچھے ہو جاتا تھا ۔۔۔ آخر تھک ہار کر میں چپ ہو گیا ۔۔اور پھر ۔۔۔ آنٹی اور اس نامعلوم لڑکے کے درمیان ۔۔۔۔۔ جاری کھیل کو دیکھنے لگا۔۔۔۔۔۔۔اور میں نے دیکھا کہ اس لڑکا آنٹی کے ساتھ بلکل لگ کر کھڑا ہو گیا تھا جس کی وجہ سے اس کا سارا لن آنٹی کی بڑی سی گانڈ میں غائب ہو چکا تھا ۔۔اور اب وہ ادھر ادھر دیکھتے ہوئے بڑے جوش کے ساتھ سے آنٹی کی گانڈ میں گھسے مار رہا تھا جبکہ اس کے ساتھ کھڑے دو تین لڑکے ایک گھیرا سا بنا کر اس لڑکے کو حفاظت بھی فرہم کر رہے تھے اور ساتھ ساتھ بڑی دل چسپی کے ساتھ آنٹی اور اس لڑکے کا سیکس سین دیکھ بھی رہے تھے اور یہ صورتِ حال دیکھ کر میں سمجھ گیا کہ کچھ دیر پہلے انہی لڑکوں کی وجہ سے میں آنٹی تک نہ پہنچ سکا۔۔۔ اور مجھے سمجھ آگئی کہ جیسے ہی میں آنٹی کی طرف بڑھنے کی کوشش کرتا تو بڑے طریقے کے ساتھ یہی لڑکے مجھے پیچھے کی طرف دھکیل دیتے تھے۔۔۔۔۔


  8. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  9. #145
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    دوسری طرف آنٹی اور اس لڑکے کا سیکس سین جاری تھی ۔۔۔۔۔ اب وہ تھوڑا اور آگے بڑھ گیا تھا اور اس کا لن تو آنٹی کی شاندار اور موٹی سی گانڈ میں پیوست تھا جبکہ ۔۔۔اس کا دوسرا ہاتھ رینگتا ہوا آنٹی کے اگلے حصے میں چلا گیا تھا واضع طور پر اب اس نے ایک ہاتھ آنٹی کی چھاتی پر رکھا ہوا تھا اور انہیں پکڑ نے کے ساتھ ساتھ وہ آہستہ آہتہ گھسے بھی مار رہا تھا۔۔۔۔ میرے لیئے یہ نظارہ بڑا تباہ کن تھا ۔۔۔۔اور مجھے اس بات کا افسوس ہو رہا تھا کہ آنٹی کی شاندار گانڈ میں۔۔۔ میری بجائے ایک اور لڑکے کا لن گھسا ہوا تھا۔۔۔۔۔۔



    اس لڑکے کا آنٹی کے ساتھ یہ سیکس سین کافی دیر تک جاری رہا۔۔۔۔ پھر اچانک ہی میں نے اس لڑکے کو الٹا سیدھا ہوتے دیکھا تو میں سمجھ گیا کہ اب وہ چھوٹنے والا ہے۔۔۔ اس وقت اس کا لن آنٹی کی قمیض سمیت ان کی گانڈ میں پیوست تھا ۔۔۔جب اس لڑکے نے ایک جھٹکے لینے شروع کر دیئے ۔ آنٹی کی گانڈ میں لن پھنسائے ۔۔۔۔۔ جیسے ہی وہ لڑکا مکمل طور پر فارغ ہوا ۔۔۔ ۔۔۔۔تو فوری طور پیچھے ہٹ گیا۔۔۔جیسے ہی وہ لڑکا پیچھے ہٹا ۔۔۔۔۔۔ کوئ وقت ضائع کیئے بغیر ۔۔۔۔ بجلی کی سی تیزی کے ساتھ اس کے ساتھ کھڑا ہوا ۔۔۔۔۔ دوسرا لڑکا آگے بڑھا اور عین پہلے والے لڑکے کی جگہ پر کھڑا ہوگیا۔۔۔۔۔اور اب پہلے کی بجائے ۔۔۔ دوسرے لڑکے کا لن آنٹی کی شاندار گانڈ میں پیوست تھا۔۔۔۔۔میرے خیال میں شاید آنٹی کو اس ادلہ بدلی کا پتہ بھی نہیں چلا ہو گا اس کی وجہ یہ تھی کہ جس مہارت کے ساتھ ان لڑکوں نے اپنی جگہ تبدیل کی تھی اگر میں بھی غور کے ساتھ یہ سین نہ دیکھ رہا ہوتا تو مجھے بھی اس واردات کا پتہ نہیں چلنا تھا ۔۔۔۔۔میرے خیال میں لڑکوں کا وہ گروہ اس کام میں بہت ماہر تھا۔۔۔۔۔ دوسرے لڑکے کو لن پھنسائے ابھی تھوڑی ہی دیر گزری تھی کہ اچانک کنڈکٹر نے آواز لگائی پکی سڑک والے تیار ہو جاؤ ۔۔۔۔ اس کی بات سنتے ہی میں نے دیکھا کہ اچانک ہی آنٹی نے ہل جُل کی ۔۔۔اور آنٹی کے اپنی جگہ سے ہلتے ہی اس لڑکے کا لن آنٹی کی گانڈ سے باہر نکل گیا اور اس کے ساتھ ہی ان لڑکوں نے آنٹی کو راستے دے دیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔




    آنٹی کے اترتے ہی میں بھی ان لڑکوں پر قہر بھری نظر ڈالتے ہوئے بس سے نیچے اتر گیا۔۔۔۔ پکی سڑک نامی قصبے میں اترنے والے ہم دو ہی مسافر تھے۔۔۔۔ جیسے ہی بس آگے بڑھی تو میں نے دیکھا کہ آنٹی کی قمیض کا پچھلا حصہ اس لڑکے کی منی سے لتھڑا ہوا تھا ۔۔۔۔۔ ۔ لیکن میرے خیال میں آنٹی کو اس بات کا پتہ نہیں تھا اسی لیئے میرے ساتھ ساتھ چلتے ہوئے آنٹی کہنے لگیں ۔۔۔بڑے عرصے کے بعد لوکل بس میں سواری کر کے مجھے تو بڑا مزہ آیا ہے۔۔۔پھر میری طرف دیکھتے ہوئے بولی۔۔۔ کیا خیال ہے۔۔۔۔ تو اس پر میں نے جل کر کہا ۔۔۔۔ لیکن اس مزے نے آپ کی قمیض کو خاصہ خراب کر دیا ہے ۔۔۔۔ میری بات سن کر آنٹی نے چونک کر اپنا ہاتھ پیچھے کیا اور پھر اپنی انگلیوں سے قمیص کے پچھلے حصے کو ٹٹولتے ہوئے بولیں ۔۔۔ یہ تمہاری حرکت ہے ناں۔۔۔۔تو میں نے نفی میں سر ہلا کر کہا ۔۔۔ نہیں آنٹی میں تو دور کھڑا تھا۔۔۔۔ میری بات سن کر وہ سرخ ہو کر کہنے لگیں ۔۔اوہ۔۔۔ میں سمجھی یہ تم ہو۔۔۔ پھر بولیں اس طرح تو گھر جانا اچھا نہیں چلو ہم بیچ والے راستے سے پیدل گھر جاتے ہیں ۔۔۔راستے میں پانی دیکھ کر میں اپنی قمیض کو دھو لوں گی۔۔




    اس فیصلے کے تحت گاؤں والی میں روڈ سے ہٹ کر ہم دونوں ایک چھوٹی سی پگڈنڈنی پر چل رہے تھے۔۔۔۔اس دوران وہ بار بار اپنے ہاتھ کو پیچھے کر کے اپنی گیلی قمیض کو چیک کر کے میرے خیال میں انجوائے رہیں تھیں۔۔۔پھر میری طرف دیکھتے ہوئے ایک ادا سے بولی ۔۔یار تم نے مجھے بتا ہی دینا تھا ۔۔۔تو میں نے ان سےکہا آنٹی جی میں تو بڑی کوشش کی لیکن وہ تعداد میں چار پانچ تھے اس لیئے انہوں نے میری دال نہیں گلنے دی ۔۔۔ جیسے ہی میں آپ کی طرف بڑھنے کی کوشش کرتا تو وہ بڑے طریقے سے مجھے پیچھے دھکیل دیتے تھے۔۔ میری بات سن کر وہ کہنے لگی۔۔۔ میرے خیال میں تم نے اپنی آنکھوں سے یہ سارا سین دیکھا ہو گا۔۔۔ تو ان کی بات سن کر میں شرمدیہ سا ہو کر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ نیچے دیکھنے لگا۔۔۔۔۔میری اس بات پر آنٹی چلتے چلتے رک گئیں ۔۔۔اور میرے سر کو اوپر اُٹھا کر کہنے لگیں ۔۔سچ بتاؤ میں ٹھیک کہہ رہی ہوں نا ؟ تو میں نے کہہ دیا جی آپ ٹھیک کہہ رہی ہیں ۔۔۔۔۔۔ تو اس کے بعد انہوں نے کہا میری طرف دیکھ کر بتاؤ ۔۔۔کہ یہ سب دیکھتے ہوئے مزہ آیا تھا۔۔۔۔؟ تو چار و نا چار ۔۔۔۔ میں نے ان کی طرف دیکھ کر بس اتنا کہا ۔۔۔ جی۔۔۔۔ تو وہ میری اس بات کا مزہ لیتے ہوئے بولیں۔۔۔۔۔۔ اتی سی" جی" سے نہیں بلکہ ٹھیک سے بتاؤ ۔۔۔ کہ تم کو مزہ آیا تھا کہ نہیں؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟ تو میں نے جواب دیتے ہوئے ان سے کہا۔۔۔۔ جی آنٹی یہ سب دیکھتے ہوئے پہلے تو بہت غصہ آیا تھا ۔۔۔پھر۔۔۔۔ مجھے کافی مزہ آیا تھا ۔۔۔تب وہ چلتے چلتے رک کر ۔۔۔۔۔میری طرف دیکھتے ہوئے ۔۔۔۔بڑے ہی عجیب لہجے میں کہنے لگیں ۔۔۔کیا۔۔تم بھی ویسا ہی مزہ لینا چاہو گے؟؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟ تو میں کچھ نہ بولا ۔۔۔ لیکن جب دوسری دفعہ انہوں نے مجھ سے یہی سوال کرتے ہوئے کہا۔۔۔۔۔۔۔ کہ۔۔۔جلدی سے جواب دو ۔۔پھر آس پاس دیکھتے ہوئے کہنے لگیں۔۔۔دیکھ لو دن کے اس پہر آس پاس کوئی موجود نہیں ہے ۔۔۔۔۔ اس لیئے میں تم سے آخری دفعہ کہہ رہی ہوں ۔۔۔۔۔کہ اگر تم نے میرے ساتھ ویسا ہی مزہ لینا ہے تو بولو۔( جی تو میرا بھی یہی کر رہا تھا کہ ابھی اس آنٹی کی بچی کو نیچے گرا کر اس پر چڑھ جاؤں اور ۔۔۔چود چود کر اس کو بے حال کر دوں ۔۔۔لیکن پتہ نہیں کیوں مجھے اس آنٹی سے ڈر لگ رہا تھا کہ کہیں ایسا نہ ہو جائے کہیں ویسا نہ ہو جائے۔۔۔) ۔لیکن ان کے بار بار پوچھنے پر آخر میں نے ۔۔ ہاں میں سر ہلا دیا۔۔۔۔۔۔ میری بات سن کر آنٹی ایک دم سے سیریس ہو کر کہنے لگیں۔۔۔ سنو۔۔۔ میں تم ویسا کیا اس سے ہزار گنا زیادہ مزہ دوں گی ۔۔۔۔ لیکن ایک شرط پر ۔۔۔تو میں نے ان سے پوچھا ۔۔۔وہ کیا آنٹی جی؟ تو وہ کہنے لگیں ۔۔۔۔ یہ بات تم کسی سے بھی نہیں کرو گے حتٰی کہ اپنے قریبی دوستوں سے بھی نہیں۔۔۔تو میں نے بظاہر جھجھک کر کہا ۔۔۔ جیسا آپ کہیں گی میں ویسا ہی کروں گا۔۔۔ تب انہوں نے اپنا ہاتھ آگے بڑھایا اور بولی ۔۔۔۔۔ پکی بات ہے نا ۔۔۔تو میں نے ان کا ہاتھ پکڑ کر کہا جی ہاں۔۔۔۔تو وہ کہنے لگی ۔۔۔۔ٹھیک ہے یہاں سے دو تین فرلانگ کے فاصلے پر ایک پرانا سا باغ ہے جو کہ اب اجڑ چکا ہے وہاں پہنچ کر میں تمہیں مزہ دوں گی۔۔ …

  10. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  11. #146
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    جس باغ کے بارے میں آنٹی نے میرے ساتھ بات کی تھی وہ آبادی سے کافی ہٹ کر واقعہ تھا کبھی اس باغ کے آس پاس سرکنڈوں کی باؤنڈری وال لگی ہو گی لیکن اب اس وال کے کچھ کچھ آثار باقی تھی ۔۔۔ اس باغ کے آخری کونے میں ۔۔۔ شہتوت کے گھنے درخت لگے ہوئے تھے ۔۔ان درختوں کے پاس مالی کے رہنے کے لیئے ایک چھوٹی سی کوٹھری بھی بنی ہوئی تھی جو کہ اب گر چکی تھی لیکن اس کوٹھری کے پاس ایک ہینڈ پمپ لگا ہوا تھا جو کہ ابھی تک چالو تھا ۔۔۔۔۔ ہم دونوں ادھر ادھر دیکھتے ہوئے بڑی احتیاط کے ساتھ گھوم گھما کر اس جگہ پر پہنچے تھے وہاں جا کر پہلے تو آنٹی نے اپنی قمیض کو اچھی طرح دھویا ۔۔۔پھر میری طرف دیکھتے ہوئے کہنے لگی ۔۔۔۔ میرے ساتھ آؤ ۔۔اور پھر مجھے شہتوت بڑے سےدرخت کے پا س لے گئی۔۔۔۔اور وہاں جا کر درخت کے تنے سے ٹیک لگا کر کھڑی ہو گئی۔۔اور میری طرف دیکھنے لگی۔۔۔۔۔۔۔ جیسے ہی میں ان کے قریب پہنچا ۔۔۔تو انہوں نے میرے لیئے اپنے بازو کھول دیئے۔۔۔۔ میں سیدھا ان کے سینے کے ساتھ جا لگا۔۔۔تو وہ مجھے اپنی طرف دباتے ہوئے بڑے ہی گرم لہجے میں کہنے لگیں۔۔۔۔۔۔۔ مجھ سے پیار کرو۔۔۔۔۔۔اور اس کے ساتھ ہی انہوں نے اپنے ہونٹوں کو میرے گالوں پر رکھ دیا اور مجھے چومنے لگیں۔۔۔۔ اتنی دیر میں ۔۔۔۔ ان کے ساتھ لگتے ہی میرے چھوٹے سے پپو۔۔نے ۔۔ بڑا ہونا شروع کر دیا ۔۔اور پھر جب وہ مستی میں آ کر میرے گالوں پر چمی دے رہی تھیں تو عین اس وقت میرا پپو اپنے جوبن میں آ کر ان ۔۔۔کی دونوں رانوں کے بیچ میں پہنچ چکا تھا ۔۔۔۔ میرے لن کو اپنی رانوں کے بیچ میں محسوس کرتے ہی انہوں نے ہاتھ بڑھا کر اسے پکڑ لیا اور پھر مجھے چومتے ہوئے کہنے لگیں۔۔۔۔۔ تم تو چھوٹے سے ہو ۔۔۔ لیکن سامان تم نے بہت بڑا رکھا ہوا ہے۔۔۔۔ تو میں نے بھی جوش میں آ کر ان سے کہا۔۔۔۔۔ آنٹی میرا یہ بڑا ۔۔۔۔۔ آپ کو اچھا لگا ؟؟۔۔۔تو میرے لن کو اپنے ہاتھ میں دباتے ہوئے بولیں ۔۔۔۔ ایسی پیاری چیز بھی کسی کو بری لگی ہے۔۔۔۔ پھر انہوں نے اپنے ہاتھ سے میرے لن کو چھوڑا اور درخت کے تنے کی طرف پشت کر کے کھڑی ہو گئیں اور اپنی گیلی قمیض کو اوپر اُٹھا لیا ۔۔۔۔پھر اپنے منہ کو پیچھے کی طرف کر کے اپنی گانڈ کی طرف اشارہ کر کے کہنے لگیں ۔۔۔۔۔۔۔ بس میں تو کسی اور نے اس کے ساتھ مزے کیے ہیں ۔۔۔۔۔ لیکن اب تم آگے بڑھو اور ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میری گانڈ کے ساتھ جیسے مرضی ہے مزے کر لو۔۔




    اس کے ساتھ ہی انہوں نے اپنی گانڈ کو تھوڑا اور پیچھے کی طرف کر لیا جس کی وجہ سے ان کی موٹی گانڈ اور بھی نمایاں ہو کر سامنے آگئی ۔۔۔۔۔۔ یہ دیکھ کر میں آگے بڑھا۔۔۔۔۔۔ اور اپنے لن کو پکڑ کر ان کی بڑی سی گانڈ کی دراڑ میں گھسا دیا۔۔۔۔۔ واؤؤؤؤؤؤؤؤؤؤؤ۔۔۔۔۔ان کی گانڈ بہت ہی نرم اور ۔ملائم تھی ۔۔۔ اور ان کی نرم و ملائم گانڈ کے دونوں پٹ میرے لن کے ساتھ جڑے ہوئے تھے۔۔۔۔ آنٹی بار بار اپنی ان دونوں پہاڑیوں کو میرے لن کے ساتھ اوپن کلوز کر رہیں تھیں۔۔اور ان کے اس طرح گانڈ کو کھل بند کرنے سے مجھے بڑا مزہ مل رہا تھا کچھ دیر تک ایسا کرنے کے بعد ۔۔۔۔۔اپنی گانڈ کو میرے لن پر دباتے ہوئے انہوں نے اپنا منہ پیچھے کی طرف کیا اور کہنے لگی۔۔۔۔۔۔۔اس کو تھوڑا سا اور آگے کی طرف دھکیلو۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تو اس پر میں نے تھوڑا زور لگایا تو اب میرے لن کی ٹوپی ان کی گانڈ کے گول سوراخ کے ساتھ ٹچ ہونا شروع ہو گئی ۔۔۔۔ جیسے ہی میری ٹوپی ان کے سوراخ کے ساتھ ٹچ ہوئی تو انہوں نے اپنی گانڈ کو باہر کی طرف تھوڑا اور نکال لیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔اور اپنی گانڈ کی دونوں پہاڑیوں کو اپنے انگلیوں سے مزید کھول کر مست آواز میں بولیں ۔۔۔۔ تھوڑا اور دھکیل نا۔۔۔یہ سن کر میں نے لن کو تھوڑا اور آگے کیا تو ۔۔۔ لن کا اگلا سرا۔تھوڑا سا پھسل کر ان کی گانڈ کے ادھ کھلے سوراخ میں داخل ہوگیا ۔۔ان کا سوراخ بہت نرم تھا ۔ اپنے سوراخ میں ٹوپے کے اگلے سرے کو فیل کرتے ہی انہوں نے ایک نظر پیچھے دیکھا ۔۔۔اور پھر اپنی گانڈ کو دوبارہ سے اوپن کلوز کرنا شروع کر دیا۔۔۔اور پھر بار بار ایسے کرتے ہوئے مجھ سے کہنے لگیں کہ اب بتاؤ کہ پہلے والے کام میں زیادہ لزت تھی یا اب تم کو زیادہ مزہ مل رہا ہے ؟؟؟؟؟۔۔تو میں نے ٹوپے کو مزید آگے دھکیلتے ہوئے کہا۔۔۔ اب زیادہ مزہ مل رہا ہے۔۔۔یہ سن کر وہ اپنی گانڈ کو اور بھی جوش سے کھل بند کرنے لگیں۔۔۔ ۔۔۔ اور مجھے ان کے اس عمل سے۔۔۔۔۔ اتنی لزت ملی کہ اس لزت کے مارے میرے منہ سے سسکی سی نکل گئی۔۔۔۔تو وہ چونک کر بولی۔۔۔۔۔۔کیوں مزہ آ رہا ہے ناں؟ تو میں نے ہلکا سا گھسا مارتے ہوئے کہا ۔۔۔۔۔ ریئلی آنٹی جی آپ کی گانڈ بہت گرم اور مست ہے۔۔تو وہ اسی شہوت ذدہ لہجے میں کہنے لگیں۔۔اسی گرمی کی وجہ سے تو وہ لڑکا فارغ ہوا تھا ۔۔۔ پھر میری طرف دیکھتے ہوئے ایک آنکھ میچ کر بولیں ۔۔۔۔۔ ۔ ۔۔۔۔۔۔۔ لیکن تم نے ابھی فارغ نہیں ہونا۔۔اس پر میں آگے بڑھا اور لن کو ان کی گانڈ میں مزید آگے ۔۔۔دھکیلتے ہوئے بولا۔۔۔۔ آنٹی میں پوری کوشش کروں گا۔۔۔کہ جلدی ڈسچارج نہ ہوں لیکن۔۔۔کیا کروں آنٹی سچ مُچ آ پ کی گانڈ بڑی غضب کی ہے ۔۔۔۔ تو اس پر وہ اپنی گانڈ کو میرے لن ۔۔۔۔۔پر دباتے ہوئے بولیں ۔۔۔۔۔۔اپنے لن کو تھوڑا اور آگے لے لاؤ نا۔۔ تو اس پر میں نے اپنے لن کو تھوڑا اور آگے دھکیلتے ہوئے ان سے کہا۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔ آنٹی جی میں آپ کی گانڈ مارنا چاہتا ہوں تو وہ مستی بھرے لہجے میں کہنے لگیں ۔۔۔تو ابھی کیا کر رہے ہو؟ تو میں نے ان سے کہاکہ ابھی تو آپ کی شلوار کے اوپر اوپر سے ڈالا ہے ۔۔۔۔جبکہ میں ۔۔ آپ کی ننگی گانڈ میں۔۔۔ اپنے ۔۔۔۔ لن کو ڈالنا چاہتا ہو ں ۔۔۔




    میری بات سن کر انہوں نے اپنا ایک ہاتھ پیچھے کیا اور اپنی گانڈ میں گھسے ہوئے لن کو بڑی نرمی کے ساتھ پکڑ کرباہر نکالا ۔۔۔۔اور کہنے لگیں۔۔جی تو میرا بھی یہی کرنے کو چاہ رہا تھا ۔۔۔اس لیئے ۔ ٹھیک ہے ۔۔۔۔ پہلے ایسا کر لیتے ہیں ۔۔۔۔۔۔ اور پھر مجھے گھاس پر بیٹھنے کو کہا۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ان کے کہنے پر جیسے ہی میں گھاس پر بیٹھنے لگا۔۔۔۔تو وہ بولیں ۔۔۔ اونہوں۔۔۔۔ایسے نہیں پہلے شلوار تو اتار لو ۔۔۔۔اس پر میں نے اپنی شلوار اتاری اور گھاس پر ننگا بیٹھ گیا ۔۔۔۔۔ اس کے بعد آنٹی نے کچھ دیر ادھر ادھر کا جائزہ لیا۔۔۔ پھر وہ بھی میرے ساتھ گھاس پر بیٹھ گئی۔۔۔اور میرے لن کو اپنے ہاتھ میں پکڑ کر بولی۔۔۔۔۔ کمال کی چیز ہے تمہاری۔۔۔۔۔ پھر اپنے ہاتھ کو میرے لن پر اوپر نیچے کرتے ہوئے بولیں ۔۔۔۔۔ کتنی دفعہ لی ہے؟ ان کی بات سن کر میں نے معصوم بنتے ہوئے کہا۔۔۔ کیا لی ہے؟ تو وہ مسکرا کر کہنے لگیں۔۔۔۔ میرا مطلب ہے آج تک کتنی لڑکیوں کو چودا ہے؟ تو میں نے سفید جھوٹ بولتے ہوئے کہا ۔۔۔ ابھی تک تو کسی کو بھی نہیں چودا۔۔۔۔تو وہ حیران ہو کر کہنے لگیں۔۔۔۔۔اتنا شاندار لن ابھی تک کسی بھی پھدی میں نہیں گیا۔۔۔تو میں نے بے چارگی کی ایکٹنگ کرتے ہوئے کہا ۔۔۔۔ نہیں جی؟ تو اس پر وہ میری طرف دیکھتے ہوئے کہنے لگیں ۔۔۔تو گزارہ کیسے کرتے ہو؟ تو میں نے تھوڑا جھجک کر جواب دیتے ہوئے کہا جی مُٹھ مارتا ہوں۔۔۔۔۔۔ میری بات سن کر وہ بڑی ہنسی ۔۔۔اور کہنے لگی۔۔۔۔۔ اس کا مطلب ہے کہ آج میں تمہارا کنوار پن توڑنے لگی ہوں ۔۔۔۔تو میں نے شرمانے کی ایکٹنگ کرتے ہوئے اپنا سر جھکا لیا۔۔۔یہ دیکھ کر وہ اُٹھ کھڑی ہوئی اور ۔۔۔۔ ایک بار پھر ارد گرد کا جائزہ لیتے ہوئے اپنی شلوار اتارنے لگیں ۔۔۔

  12. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  13. #147
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,817
    Thanks Thanks Given 
    405
    Thanks Thanks Received 
    2,691
    Thanked in
    705 Posts
    Rep Power
    347

    Default


    اپنی شلوار کو اتار کر انہوں نے ایک سائیڈ پر رکھا اور پھر اپنی گانڈ پر بہت سا تھوک لگا کر اسے چکنا کر لیا اور اس دوران مجھ سے کہنے لگی تم بھی اپنے لن پر تھوک لگا کر اسے چکنا کر لو کہ اس طرح بغیر کسی تکلیف کے تمہارا لن میرے اندر چلا جائے گا چنانچہ ان کے کہنے پر میں نے اپنے لن پر بہت سا تھوک پھینکا اور پھر اپنے ہاتھ سے اسے مل دیا ۔۔جب میرا لن تھوک سے اچھی طرح نہا گیا تو وہ میرے اوپر آئیں اور اپنی گانڈ کو میرے لن کی سیدھ میں لے کر اس پر بیٹھنے لگیں۔ ۔۔۔۔۔۔نیچے جھکتے ہوئے انہوں نے میرے لن کو اپنے ہاتھ میں پکڑا ۔۔۔۔۔اور اپنی گانڈ کے سوراخ پر رگڑتے ہوئے بولیں۔۔۔۔۔۔مجھے تمہارے لن کا سائز بہت پسند آیا ہے اور پھر آہستہ سے میرے ٹوپے کو اپنے سوراخ کے تھوڑا سا اندر کر لیا۔۔۔۔ جب میرے لن کا ٹوپا ان کی گانڈ کے رِنگ میں داخل ہو گیا ۔۔۔۔ تو انہوں نے میری طرف دیکھا اور کہنے لگیں ۔۔میری گانڈ چکنی ہے نا؟ تو میں نے بھی ترنت جواب دیتے ہوئے کہا۔۔۔میرا لن بھی تو چکنا ہے نا ۔۔۔ میری بات سن کر ان کے چہرے پر شہوت بھری مسکان ابھری اور وہ مجھ سے مخاطب ہو کر کہنے لگیں۔۔۔۔ لو پھر۔۔۔تمہارا چکنا ۔۔میری چکنی کے ۔۔۔۔ اندر جانے لگا ہے۔۔۔اور ایک دم سے میرے لن کو اپنے اندر لے کر ۔۔۔۔۔ سسکتے ہوئے بولیں۔۔۔۔۔۔ اُف۔ف۔ف۔ف۔ف۔ بڑا ہی فٹ لن ہے تمہارا ۔۔۔۔۔ میری گانڈ میں پھنس پھنس کر جا رہا ہے۔۔۔۔۔آنٹی کی گانڈ کے ٹشو اس قدر نرم تھے کہ لن کے اندر داخل ہوتے ہی وہ اس کے ساتھ چپک گئے۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔ اور پھر وہ لن کو اپنی گانڈ میں لیئے آہستہ آہتہ اوپر نیچے ہو رہیں تھیں۔۔۔۔۔۔۔۔ اور ساتھ ساتھ کمنٹری بھی کرتی جا رہیں تھیں کہ تمہارے لن سے میری گانڈ بھر گئی ہے۔۔اور مجھے بڑا مزہ مل رہا ۔۔اور کبھی مجھ سے کہتیں بتاؤ نا میری گانڈ میں لن پھنسا کے تم کو کیسا لگ رہا ہے۔۔تو میں جواب میں کہتا کہ آنٹی جی مجھے آپ کی گانڈ مارنا بہت اچھا لگ رہا میری باتیں سن کر وہ اور جوش کے ساتھ میرے لن پر اُٹھک بیٹھک کرتی رہیں اور پھر کچھ ہی دیر بعد اچانک ہی وہ میرے لن سے اُٹھ گئیں تو میں نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے ان سے کہا ۔۔کیا ہوا آنٹی ۔۔۔۔۔ اتنا مزہ مل رہا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔تو وہ میری طرف دیکھتے ہوئے شہوت بھرے انداز میں کہنے لگیں۔۔۔ مجھے تم سے زیادہ مزہ مل رہا تھا میری جان ۔۔۔۔۔۔ لیکن کیا کروں ۔۔۔۔۔کہیں اور سے تمہارے لن کی بڑی سخت فرمائیش آئی ہے۔۔۔ تو میں نے حیران ہوتے ہوئے ان سے کہا ۔۔۔۔ میری فرمائیش؟ تو وہ ہنس کر بولیں تمہاری نہیں ۔۔۔۔۔ بلکہ تمہارے لن کی فرمائیش آئی ہے۔۔۔ اس پر میں نے ہونقوں کی طرح ان کی طرف دیکھا اور کہنے لگا۔۔۔ کس نے فرمائیش کی ہے ۔۔۔۔۔ میری بات سن کر انہوں نے اپنی پھدی کو میرے منہ پر جوڑتے ہوئے کہا ۔۔۔۔۔۔ اس کی ۔۔۔۔۔ فرمائیش ہے۔۔۔۔ اور اس کے ساتھ ہی اپنی پھدی کو میرے منہ پر رگڑنے لگیں ۔۔۔ان کی چوت سے بڑی ہی شہوت انگیز مہک آ رہی تھی ۔۔۔۔ اور میرا جی چاہ رہا تھا کہ میں اس شہوت انگیز اور مست مہک کو مزید سونگھوں لیکن انہوں نے اس کا موقعہ نہ دیا ۔۔۔۔اور فوراً ہی اپنی چوت کو میرے منہ سے ہٹا کر مجھے اُٹھنے کا کہا۔۔۔۔ ان کی بات سن کر میں ان کی دونوں ٹانگوں کے درمیان دیکھتے اُٹھ کھڑا ہوا۔۔۔۔۔ جیسے ہی میں اوپر اُٹھا ۔۔ تو انہوں نے اپنی چادر کو گھاس پر بچھایا اور خود لیٹ کر اپنی دونوں ٹانگوں کو ہوا میں لہرا کر بولیں۔۔۔۔۔ اب آ بھی جاؤ۔۔۔ اس پر میں نے اپنے دونوں گھٹنوں کو زمین پر لگایا ۔۔۔اور ان کی طرف دیکھتا ہوا بولا۔۔۔۔۔ آپ کو تو اوپر آنا پسند نہیں تھا؟ تو وہ میری آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کہنے لگیں۔۔۔۔۔۔۔ مجھے اوپر آ کر گانڈ میں لینا۔۔۔۔۔ جبکہ ٹانگوں کو کندھوں پر رکھ چوت مروانا پسند ہے۔۔۔ پھر کہنے لگیں اب دیر نہ کر اور میری ٹانگوں کو اپنے کندھوں پر رکھ لو اور ۔۔۔۔۔۔۔پھر اپنے اس موٹے ڈنڈے سے میری چوت کی دھلائی کرنی شروع کر دو۔۔۔۔



    ان کی بات سن کر میں نے ان کی دونوں ٹانگوں کو اپنے کندھوں پر رکھا اور لن پہ تھوک لگا کر اسے ان کی چوت پر رکھ کر رگڑنے لگا تو وہ بولیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اندر ڈال ۔۔۔۔۔ اور میں نے لن کو ہلکا سا پش کیا تو وہ بڑی آسانی کے ساتھ آنٹی کی سلپری چوت میں اندر تک گھس گیا۔۔۔۔۔۔ یہ دیکھ کر آنٹی مجھ سے کہنے لگیں۔۔۔۔۔۔ مجھے پوری طاقت سے چودو ۔۔۔ ۔۔۔۔۔ آنٹی کی بات سن کر میں نے اپنی گانڈ کا زور لگا کر ان کو چودنا شروع کر دیا۔۔۔ میرے ہر گھسے پر ان کی آہ نکل جاتی تھی۔۔۔اور وہ مجھ سے کہتیں تھیں کہ ۔۔فل طاقت لگا ۔۔۔۔۔اور دھلائی کر میری چوت کی ۔۔۔چود دے مجھے ۔۔۔۔ میری پھدی مار رررررررررررررررررررررررررررررر۔۔۔۔۔۔۔۔۔اور مارررررررررررررگھسے مارتے مارتے مجھے محسوس ہوا کہ آنٹی کی کھلی پھدی اچانک ہی تنگ ہونا شروع ہو گئی ہے ۔۔۔ اور اس نے میرے لن کے ساتھ لپٹنا شروع کر دیا ہے اس وقت آنٹی کی تنگ ہوتی پھدی مارتے ہوئے مجھے اس قدر مزہ مل رہا تھا کہ میں نے پورے جوش اور تیزی کے ساتھ لن کو ان آوٹ کرنا شروع کر دیا۔۔۔۔۔ اِدھر جیسے جیسے آنٹی کی پھدی تنگ سے تنگ تر ہوتی جا رہی تھی ۔۔۔۔اُدھرویسے ویسے میرے دھکے شدید سے شدید تر ہوتے جا رہے تھےاور پھر میرے ان دھکوں کی وجہ سے آنٹی کی چوت ایک دم سے کھل بند ہوئی۔۔اور اس نے پانی چھوڑنا شروع کر دیا۔۔۔۔ ادھر دھکے مارتے مارتے ۔۔۔۔۔اچانک ہی میرے لن سے منی کا سیلاب نکلا ۔۔اور آنٹی کی پانی سے بھری ہوئی پھدی میں سے پانی ہوتا ہوا باہر نکلنا شروع ہو گیا۔۔۔۔۔۔۔۔آنٹی اور میں دونوں چھوٹ چکے تھے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


    ........................ جاری ہے .........................

  14. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    Lovelymale (11-09-2019), omar69in (Today)

  15. #148
    Join Date
    Aug 2008
    Location
    Islamabad
    Posts
    153
    Thanks Thanks Given 
    699
    Thanks Thanks Received 
    120
    Thanked in
    63 Posts
    Rep Power
    38

    Default

    Zabardast. Very hot update. Maza agaya.

  16. The Following User Says Thank You to Lovelymale For This Useful Post:

    shahg (13-09-2019)

  17. #149
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    21
    Thanks Thanks Given 
    93
    Thanks Thanks Received 
    19
    Thanked in
    16 Posts
    Rep Power
    13

    Default

    بہت اعلی شاندار

  18. The Following User Says Thank You to waqastariqpk For This Useful Post:

    shahg (13-09-2019)

  19. #150
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    22
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    25
    Thanked in
    19 Posts
    Rep Power
    4

    Default

    شاندار اپڈیٹ جی مرشد تسی تے پھٹے ای چک دتے نے
    ودیا تے سزلنگ اپڈیٹ سی جناب
    اگلی اپڈیٹ دا ہمیش دی طراں بے صبری نال انتظار روے گا

    ‏وقت سیکھا دیتا ہیں جینے کاسب ہنر ___ 💕
    پھر کیا نصیب 'کیا مقدر اور کیا ہاتھوں کی لکیریں💕

  20. The Following 2 Users Say Thank You to ArmanM For This Useful Post:

    omar69in (Today), shahg (13-09-2019)

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •