اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

Page 21 of 21 FirstFirst ... 111718192021
Results 201 to 209 of 209

Thread: محبت کے بعد....................

  1. #201
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default


    حقیقت یہ ہے کہ ان کی چوت کی مہک بہت ہی تیز اور سیکسی تھی اور اسے سونگھ کر مجھے نشہ سا ہونے لگا۔۔۔ یہاں پر زنانہ چوت کی مہک بارے میں آپ لوگوں سے اپنی ایک اور بات شئیر کرنا چاہوں گا اور وہ یہ کہ پہلے میں سمجھتا تھا کہ چوت کی مہک سونگھنے کا صرف مجھے ہی شوق ہے یا یہ عطر صرف مجھے ہی اچھا لگتا ہے۔۔۔۔ لیکن۔۔۔۔ جب نیٹ پر آیا تو پتہ چلا کہ زنانہ پینٹی لوورز کی ایک دینا آباد ہے ۔۔۔۔ہا ں تو میں کہہ رہا تھا کہ میری طرف جھکتے ہی میڈم نے مجھے بالوں سے پکڑا ۔۔۔اور ایک گالی دیتے ہوئے بولی۔۔۔۔ میرے سامنے جھوٹ بولتے ہو حرامزادے۔۔۔پھر پھنکارتے ہوئے کہنے لگی۔۔۔ شاید تم کو معلوم نہیں کہ دارالامان میں ایک سے بڑھ کر ایک حرافہ عورت ہوتی ہے لیکن مجال ہے کہ میرے سامنے چوں بھی کر جائے۔۔پھر دانت پیستے ہوئی بولی۔۔۔ اور مجھ سے بات کرتے ہوئے ان کی جان جاتی ہے ۔۔۔اور ایک تم ۔۔۔۔کل کے چھوکرے ہو کر میرے سامنے جھوٹ بول رہے ہو۔۔۔پھر کہنے لگی۔۔۔۔ آسیہ نے کل سے فون کر کر کے میری مت مار ی ہوئی ہے کہ شاہ آئے تو اس کا خیال رکھنا ۔۔شاہ کو کوئی تکلیف نہیں ہونی چایئے وغیرہ وغیرہ ۔۔۔۔ اور اس کے لہجے سے تمہارے لیئے جو وارفتگی اور پیار چھلک رہا تھا وہ بہن بھائی۔۔۔۔ والا ہر گز نہیں ہو سکتا ۔۔۔۔ اس کے بعد وہ دوبارہ سے نیچے جھکی اور مجھے بالوں سے پکڑ کر اُوپر اُٹھایا ۔۔۔۔۔ عین اسی لمحے پنکھے کی تیز ہوا ۔۔۔ اس کی چوت کی طرف سے ہوتی ہوئی ۔۔۔اپنے ساتھ اس کا نشہ آور عطر بھی ساتھ لے آئی اور میں نے میڈم کی چوت سے نکلنے والی سٹرانگ کو مہک آنکھیں بند کر کے اپنے اندر اتار لیا۔۔۔۔۔۔ میری اس حرکت سے تجربہ کار میڈم سمجھ گئی ۔۔۔ کہ یہ مریضِ مہک ہے۔۔۔۔۔ لیکن شو نہیں کیا ۔۔۔۔اور پھر ویسے ہی پھنکارتے ہوئے کہنے لگی۔۔۔۔۔۔سچ بتا ورنہ اس حرافہ نبیلہ کو ایسی پٹی پڑھاؤں گی کہ تم کیا تمہارا سارا خاندان جیل میں سڑتا رہے گا۔۔۔میڈ م کے منہ سے نبیلہ کا نام سن کر میرا سارا نشہ ہرن ہو گیا ۔۔۔۔اور میری گانڈ پھٹ کے گلے میں آ گئی ۔اور میں سوچنے لگا کہ اگر واقعی اس حرامن نے ایسا کر دیا تو۔۔۔؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟





    چنانچہ میڈم کی یہ دھمکی کام کر گئی۔۔۔۔اور میں چوت کی مہک بھول گیا اور اس کی طرف دیکھتے ہوئے بولا۔۔۔۔ پلیززززززززززززززززز۔۔۔ایسا نہ کیجئے گا۔۔ تو وہ اپنی چوت کو تھوڑا اور آگے کرتے ہوئے کہنے ل گی۔۔۔ نہیں کروں گی۔۔۔۔۔ بلکہ اُلٹا تمہاری ہر ممکن مدد کروں ۔۔۔۔ اگر تم سچ بتا دو گے تو۔۔۔۔ اور ساتھ ہی اپنی لمبی قمیض کو اوپر اُٹھا کر اپنے چہرے پر لگے پسینے کو پونچھتے ہوئے بولی ۔۔۔اف۔۔۔۔۔گرمی کتنی ہے۔۔۔ جیسے ہی میڈم نے اپنی قمیض کو اوپر کیا۔۔۔۔ تو میری نظر ان کی چوت کی لکیر پر جا پڑی۔۔۔۔۔۔ جہاں سے مست مہک کے جھونکے آ رہے تھے۔۔۔۔۔۔۔ پھر میں مست ہو گیا ۔۔۔ اور بے اختیار میڈم کی چوت کی طرف ناک کر کے نشئیوں کی طرح ایک لمبی سانس لی۔۔۔۔۔۔۔میرے اس طرح سانس لینے سے وہ جل ترنگ سی ہنسی اور ۔۔۔۔۔۔۔ کہنے لگی۔۔۔۔۔لگتا ہے کہ مہک کچھ زیادہ ہی پسند آ گئی ہے ۔۔۔تو میں نے ان کی طرف دیکھتے ہوئے کہا۔۔۔ نہ ۔نہ۔۔۔۔ نہیں ایسی تو کوئی بات نہیں ہے جی۔اور ایک بار پھر ایک لمبی سانس لی ۔۔۔یہ دیکھ کر وہ ہنس کر کہنے لگی اچھا یہ بتاؤ ۔۔۔۔۔ میری والی کی مہک اچھی ہے یا تمہاری یار ۔۔۔۔۔ آسیہ کی چوت کی۔۔۔؟ ان کی بات سن کر میں گڑبڑا گیا ۔۔۔۔اور انجان بنتے ہوئے بولا۔۔۔۔کک کون سی مہک جی۔۔۔۔۔ میری بات سن کر انہوں نے مجھے بالوں سے پکڑا اور میری ناک کو اپنی پھدی کے قریب لا کر بولی ۔۔۔یہ والی مہک میری جان۔۔۔۔۔ اس وقت ان کی چوت میری ناک سے ایک آدھ ہی سینٹی میٹر کے فاصلے پر تھی اس لیئے مجھ پر نشہ سا چھانے لگا۔۔۔ ۔۔۔۔اور پھر جیسے ہی میں نے اپنی ناک کو تھوڑا آگے کیا ۔۔۔۔تو۔۔انہوں نے فوراً ہی میرے سر کو پیچھے دھکیلا ۔۔۔۔۔۔ اور کہنے لگی ہاں اب بول۔۔۔ تو میں نے دستی جواب دیتے ہوئے کہا۔۔۔۔ آپ کی مہک بہت سٹرانگ ہے تو وہ کہنے لگی۔۔۔تو گویا کہ آسیہ کی چوت کی مہک میرے مقابلے میں سٹرانگ نہیں ہے؟ تو میں نے سر ہلا دیا۔۔تب میڈم نے میرے سر کو چھوڑا ۔۔۔اور پھر میرے سامنے اپنی دو انگلیوں کو اپنے پاجامے کے اندر لے گئیں ۔۔۔اور انہیں پھدی پر اچھی طرح مسلنے کے بعد ۔۔۔۔ وہی انگلیاں میری ناک پر لگا کر بولیں ۔۔۔کیسی لگی؟۔۔۔۔واؤؤؤؤؤؤؤؤؤؤؤؤ۔۔جیسا کہ میں نے پہلے بھی بتایا تھا ۔۔۔۔کہ چوت کی مہک میری بہت بڑی کمزوری ہے اس لیئے میں نے اس کی انگلیوں کو اپنے ہاتھ میں پکڑ لیا۔۔۔اور پاگلوں کی طرح انہیں سونگھنے لگا۔۔۔۔۔۔۔۔۔





    ان کی چوت کی مہک لیتے لیتے نیچے سے میری شلوار میں تنبو تن گیا تھا ۔۔۔ جس پر جیسے ہی میڈم کی نظر پڑی ۔۔۔انہوں نے میز پر رکھا ہوا اپنا پاؤں ۔۔۔ہٹایا اور میری گود میں لے گئیں ۔۔۔۔اور اپنے پاؤں کے تلوے سے میرے لن پر مساج کرتے ہوئے بولیں۔۔۔۔۔۔ ہُوں ۔۔۔۔ میں بھی کہوں کہ۔۔۔۔آسیہ نے تم میں ایسا کیا دیکھا تھا کہ جو تم پر لٹو ہو گئی تھی۔۔۔۔پھر میرے لن پر مساج کرتے ہوئے بولیں ۔۔ یقیناً ۔تمہارا ہتھیار اس قابل ہے کہ آسیہ جیسی مغرور حسینہ ۔۔۔اور میرے جیسی سخت مزاج عورت کے من بھا جائے۔۔۔۔۔۔۔ پھر انہوں نے لن پر اپنے پاؤں کے تلوے کو پھیرتے ہوئے کہا۔۔۔۔ کہ اپنی شلوار اتارو۔۔۔۔ اور پھر جیسے ہی میں نے اپنا نالا کھولا تو اس دوران انہوں نے میز کو ایک سائیڈ پر کیا اور خود سامنے والے صوفے پر بیٹھ گئی۔۔۔۔ اور پھر اپنے دونوں پاؤں کے تلوؤں کی مدد سے میرے لن پر گرفت کر لی۔۔۔اور پھر اپنے پاؤں کو بڑی آہستگی کے ساتھ اوپر نیچے کرنے لگیں۔۔۔۔۔۔ اورمجھ بولیں۔۔۔۔اس لن کو تو میری پھدی میں ہونا چایئے ۔۔۔ کیا خیال ہے مجھے چودو گے ؟ تو میں نے کہا جی اگر آپ چاہیں گی تو۔۔۔۔میں حاضر ہوں ۔۔ تو وہ کہنے لگیں ۔۔۔۔ دیکھو میں ایک میچور عورت ہوں اس لیئے میں چاہوں گی کہ تم مجھے خوب گرم کر کے چودو۔۔۔پھر کہنے لگیں ۔۔۔سیکس کے دوران گندی باتیں میری کمزوری ہے تم مجھ سے جتنی زیادہ گندی باتیں کرو گے میں اتنی ہی زیادہ گرم ہووں گی اور پھر اتنا ہی زیادہ تم کو مزہ دوں گی پھر کہنے لگیں ۔۔۔۔۔ یاد رکھنا یہ مزہ آسیہ کے مزے سے سو گنا زیادہ ہو گا۔۔۔۔۔۔۔۔۔


  2. The Following User Says Thank You to shahg For This Useful Post:

    omar69in (Today)

  3. #202
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default


    میڈم کی بات سن کر میں نے ان سے کہا۔۔۔۔ ایک بات تو بتاؤ۔۔اور وہ یہ کہ د وسری عورتوں کی نسبت آپ کی چوت سے انتی زیادہ مہک کیسے آتی ہے؟ تو وہ کہنے لگی ۔۔۔یہ قدرتی ہے یا پھر شاید میں بہت گرم عورت ہوں اس لیئے۔۔۔ میری پھدی جب تپتی ہے تو ۔۔۔۔ بہت زیادہ مقدار میں سینٹ چھوڑتی ہے بلکل ایسے ہی جیسے بعض فی میل جانور جب گرم ہوتیں ہیں تو ان کا جسم ایک خاص قسم کی بوُ چھوڑتا ہے جسے سونگھ کر ان کا میل ان کی طرف کھینچا چلا آتا ہے پھر کہنے لگیں جیسے تم میری پھدی کو سونگھ کر مرنے والے ہو گئے تھے ۔۔۔میڈم کی بات سن کر میں اوپر اُٹھا اور اپنی جگہ ان کو صوفے کے بازو پر بٹھایا ۔۔۔۔اور پھر ان کی تنگ پجامی کو نیچے کیا۔۔۔۔۔ آہ ہ ہ ہ ہ ہ ہ۔۔۔ان کی تنگ پجامی کے نیچے ہوتے ہی۔۔ مجھے ان کی بالوں سے بھر ی چوت کا دیدار ہو گیا۔۔۔ اور بے اختیار میں نے اپنے منہ کو ان کے گھنے بالو ں والی پھدی کے ساتھ جوڑ دیا اور ایک لمبی سانس لے کر ان کی چوت کی مہکار کو اپنے اندر سموتے ہوئے ۔۔۔ بولا۔۔۔۔۔ چوت پر اتنے بال کیوں؟ تو وہ کہنے لگی ان بالوں کی وجہ سے ہی تو چوت کی مہک میں سو گنا اضافہ ہوتا ہے۔۔۔۔۔ پھر کہنے لگی ۔۔۔ تم پھدی چاٹو گے؟ تو میں نے اثبات میں سر ہلاتے ہوئے کہا۔۔ کہا ہاں لیکن مجھے ڈر ہے کہ اس سے آپ کی چوت کے بال بھی میرے منہ میں آ جائیں گے تو وہ کہنے لگی اس کا ایک طریقہ ہے میرے پاس۔۔۔۔۔اور وہ یہ کہ تم میری چوت کے دونوں ہونٹوں کو الگ الگ کر کے اس کے اندرونی حصے اور پھر میرے چھولے کو چاٹو۔۔۔۔۔ تو میں نے کہا ٹھیک ہے میڈم ۔۔اور دوبارہ سے ان کی چوت پر جھک گیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔ان کی چوت کی سکن تو کہیں نظر ہی نہیں آ رہی تھی اس لیئے میں نہیں بتا سکتا کہ ان کی چوت کی سکن کیسی تھی ؟ ۔۔ہاں پھدی کے دنوں ہونٹ کافی لٹکے ہوئے تھے۔۔۔اور پھدی کو دو حصوں میں جدا کرنے والی لکیر خاصی گہری اور کھلی تھی جبکہ چوت کے بالوں کے اندر ایک براؤن رنگ کا موٹا سا دانہ بھی چھپا تھا۔جسے وہ چھولا کہہ رہی تھی۔۔۔۔۔۔۔۔جیسے ہی میں نے بال ہٹا کر ان کے دانے کی طرف دیکھا تو وہ ایک سسکی لے کر کہنے لگی۔۔۔۔ میرا چھولا چوس۔۔۔۔۔ میرا چھولا ۔۔چوسسسس۔۔ اور میں نے بالوں کو ہٹا کر ان کے چھولے پر اپنی زبان رکھی اور پھر اسے اپنے منہ میں لے کر چوسنے لگا۔۔۔ ادھر میڈم لزت آمیز آواز میں بولیں ۔۔۔۔۔ چھولے کو چھوڑنا نہیں ۔۔۔۔بلکہ چوستے جاؤ۔۔۔ مجھے مزہ مل رہا ہے۔۔۔تو میں نے ان کے چھولے سے منہ ہٹا کر کہا۔۔۔میڈم اجازت ہو تو دو انگلیاں بھی آپ کی چوت میں ڈال دوں تو وہ سسکی لیتے ہوئے کہنے لگیں۔۔ دو چھوڑ چار ڈال۔۔۔اس میں اجازت کی کیا بات ہے پھدی تیری اپنی ہے اس کے ساتھ جو مرضی ہے سلوک کرو۔۔۔۔ چنانچہ ان کی بات سن کر میں نے ان کے چھولے کو چوستے ہوئے اپنی دو انگلیاں ان کی چوت میں بھی ڈال دیں ۔۔اور ان کا چھولا چوسنے کے ساتھ ساتھ ۔۔۔ اپنی انگلیوں کو بھی چوت کے اندر باہر کرنے لگا۔۔۔ان کی پھدی اندر سے خاصی کھلی اور پانی سے بھری ہوئی تھی۔۔۔۔





    میرے چھولا چوسنے کی وجہ سے میڈم بے حال سی ہو گئیں اور صوفے کے بازو پر لیٹ سی گئیں ۔۔ جیسے ہی وہ صوفے کے بازو پر پیچھے ہو کر لیٹیں ۔۔اس کے ساتھ ہی ان کی شاندار گانڈ میرے سامنے آ گئی۔۔۔ لیکن یہاں بھی وہی مسلہ تھا یعنی کہ ان کی گانڈ کے آس پاس کالے اور موٹے بالوں کی بھر مار تھی۔۔۔۔اور ان بالوں کے بیچوں و بیچ ۔۔۔ان کی شاندار موری تھی۔۔۔جس پر میں نے اپنی ایک چکنی انگلی رکھی تو وہ بڑے آرام سے ان کی گانڈ کے سوراخ میں اتر گئی۔۔۔۔۔یہ دیکھ کر میں نے میڈم سے کہا۔۔آپ بنڈ مرواتی ہو۔۔؟ تو آگے سے وہ کراہتے ہوئے بولی۔۔۔۔ تمہاری یار کی کزن ہوں ۔۔پھدی کے ساتھ ساتھ گانڈ نہ مرواؤں ۔۔۔تو اتنی اچھی گانڈ رکھنے کا کیا فائدہ۔؟؟؟؟؟؟؟؟؟۔۔۔۔ پھر کہنے لگی لگتا ہے کہ تم مجھے گانڈ کے بھی شوقین لگتے ہو؟ تو میں نے کہا۔۔۔۔۔ شوقین نہیں میڈم میں تو گانڈ کا کریزی ہوں ۔۔۔۔





    اور پھر ان کی طرف دیکھتے ہوئے بولا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ میڈم آپ میرے لن کو چوسو گی؟ میری بات سن کر انہو ں نے صوفے سے ایک جمپ ماری اور نیچے اتر کر کہنے لگیں۔۔۔۔۔تمہارے لُلے (لن) کو منہ میں نہ لینا ۔۔۔نہ صرف یہ کہ خود اپنے ساتھ بہت بڑی زیادتی ہو گی بلکہ۔۔۔۔۔میں ایک اعلیٰ درجے کے لن کے ٹیسٹ سے بھی محروم ہو جاؤں گی ۔۔۔۔۔ اور میں ایسا ہر گز نہیں چاہتی۔۔۔۔۔۔۔۔ اور ساتھ ہی مجھے صوفے پر بیٹھنے کو کہا اور خود گھٹنوں کے بل چلتی ہوئی میرے لن کے پاس پہنچ گئی اور پھر میرے لن کو ہاتھ میں پکڑ کر بولی۔۔۔۔۔۔۔ اس ظالم نے پتہ نہیں کس کس کو پاگل بنایا ہو گا۔۔۔۔۔۔اور پھر نیچے جھک کر میرے ٹوپے کو اپنے منہ میں لے لیا۔۔۔۔اور پھر بڑے ہی شاندار طریقے سے اسے چوسنے لگیں۔میڈم لن چوسنے کی ماہر لگتی تھی اس لیئے۔۔ ان کے شاندار چوپے کو دیکھ کر ۔۔۔۔۔ میں مزے سے چلا اُٹھا ۔۔۔۔ لن پورا منہ میں ڈالو ۔۔۔۔ تو وہ لن کو منہ سے نکال کر بڑے ہی شہوت زدہ لہجے میں بولی۔۔۔۔۔ مزہ آیا ؟ اور پھر دوبارہ نیچے جھک گئی اور لن کو اپنے منہ کے آخر تک لے گئیں۔۔۔۔ جس سے مجھے اتنی لذت ملی کہ میں پھر سے چلا اُٹھا ۔۔میڈم تھوڑا اور آگے لے جاؤ۔۔ اور جیسے ہی میڈم نے اپنا منہ اور آگے کیا تو اس سے میرا لن ان کے حلق میں جا پہنچا۔۔۔۔اور اس کے ساتھ ہی میڈم کو ایک زبر دست کھانسی آئی اور انہوں نے لن کو منہ سے نکال دیا۔اور کھانسی کے بعد ۔ میرے لن پر لیس دار مادے کو تھوکتے ہوئے بولیں۔۔۔۔۔اُف اتنا بڑا ہے کہ میں چاہ کر بھی پورے لن کو اپنے منہ میں نہیں لے سکی۔۔۔ یہ کہتے ہوئے وہ دوبارہ نیچے جھکیں ۔۔اور پھر میرے لن دوبارہ سے اپنے منہ میں لے لیا۔۔۔۔۔


  4. The Following User Says Thank You to shahg For This Useful Post:

    omar69in (Today)

  5. #203
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default


    کچھ دیر تک لن چوسنے کے بعد ۔۔۔۔وہ اوپر اُٹھیں اور ۔۔۔ کہنے لگی۔۔۔۔۔۔ اب چود مجھے۔۔۔۔۔اور اس کے ساتھ ہی انہوں نے صوفے کے بازو پر اپنے دونوں ہاتھ رکھ کر گانڈ پیچھے کی طرف کر لی۔۔یہ دیکھ کر میں ان کے پیچھے آ کر کھڑا ہوا گیا۔۔اور ان کی بڑی سی گانڈ دیکھ کر میری نیت خراب ہو گئی ۔۔۔اس لیئے میں نے ان سے کہا۔۔ پھدی ماروں یا گانڈ؟ تو وہ کہنے لگی۔۔۔۔ پہلے پانی والے تالاب میں نہا لو۔۔۔۔ یہ سن کر میں نے اپنے لن پر تھوک لگا یا ۔۔۔۔۔اور ان کی چوت پر رکھ کر ہلکا سا دھکا لگایا ۔۔۔۔ تو بنا کسی تردد کے میرا لن جڑ تک ان کی کھلی چوت میں گھس گیا یہ دیکھ کر میں نے ایک زور دار تھپڑ ان کی گانڈ پر مارا ۔۔۔اور بولا۔۔۔۔۔۔ اتنی کھلی پھدی رکھی ہے؟ اپنی گانڈ پر میرا تھپڑ کھا کر وہ پیچھے مڑیں اور بڑی مست آواز میں کہنے لگیں۔۔۔ تیرا کیا خیال ہے میں لن کے مزے نہ لیتی؟ تو میں نے ان سے کہا ۔۔۔۔لیکن میڈم اس سے نقصان یہ ہوا ہے۔۔۔۔۔ کہ اس سے آپ کی چوت بہت کھلی ہو گئی ہے ۔۔۔تو آگے سے وہ مست آواز میں کہنے لگیں۔۔۔۔ مزہ لینے کے لیئے۔۔۔ اتنا نقصان قابلِ برداشت ہے پھر کہنے لگی۔۔۔۔ تو ٹکا کے گھسے مار پھر ۔۔۔ لن کو میری گانڈ میں ڈال دینا کہ چوت کی نسبت اس کی موری خاصی تنگ ہے ۔۔تو اس پر میں نے ان کی گانڈ پر ایک اور تھپڑ مارتے ہوئے کہا کہ ۔۔۔۔ یہ کیوں نہیں کھلی ہوئی ؟ تو وہ کہنے لگی۔۔۔۔ زیادہ تر تو بے چارے دو چار گھسے مارتے ہی پھدی میں فارغ ہو جاتے ہیں۔۔۔ایسے میں وہ میری گانڈ کیا خاک ماریں گے؟؟ ہاں کوئی کوئی شوقین ۔۔ جس میں تڑ ہو ۔۔۔۔ دونوں سوراخوں کو اپنے لن کے مزے سے بھر دیتا ہے اور مجھے تم۔۔۔۔ ان میں سے ایک لگ رہے ہو۔اگر ایسا ہے تو میری پھدی کو رج کے مار ۔۔۔اور جب یہ چو ( ڈسچارج ) جائے تو پھر میری گانڈ کو جیسے مرضی ہے مار لینا۔۔۔۔ ۔۔۔





    ان کی بات سن میں نے پوری قوت سے گھسے مارنے شروع کر دیئے۔۔میرے ہر گھسے پر وہ یہی کہتی ہائے مار دیا۔۔۔۔ ہائے مار دیا۔۔۔۔۔۔اور پھر چند ہی گھسوں کے بعد وہ ہانپنے لگیں ۔۔تو میں رُک گیا تو وہ کہنے لگیں ۔۔۔رکے کیوں؟ تو میں نے کہا آپ سانس لے لو ۔۔۔اور اس کے ساتھ ہی میں نے ان کو قالین پر لیٹنے کو کہا۔۔۔۔۔۔ میری بات سن کر وہ بنا کوئی سوال کیئے قالین پر لیٹ گئی ۔۔۔۔۔۔اور میں نے صوفے پر پڑے کشن اُٹھا کر ۔۔۔۔ ان کی گانڈ کے نیچے فٹ کر دیئے۔جس کی وجہ سے ان کی کھلی پھدی مزید ابھر کر سامنے آ گئی۔۔۔۔۔۔۔ اس کے بعد میں نے ان کی دونوں ٹانگوں کو اپنے کندھے پر رکھا اور لن کو چوت میں ڈال کر گھسے مارنے لگا۔۔۔ جس کی وجہ سے میرا لن پوری شدت کے ساتھ میڈم کی اووری پر ضرب لگانے لگا۔اور میری ہر ضرب پر وہ یہی کہتی۔۔۔۔۔ہائے ظالما ۔تیرے لن نے ۔مار سُٹیا ۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔ان کی شہوت بھری باتیں سن کر میں نے ان کی دھلائی شروع کر دی ۔۔۔۔۔۔ اور پھر تھوڑی ہی دیر بعد ۔۔۔۔۔ میڈم نے ایک شہوت بھری چیخ ماری۔۔اور کہنے لگی۔۔۔۔۔۔اُف۔۔۔مار سُٹیا ای۔۔۔۔۔۔۔۔ اور اس کے ساتھ ہی ان کی چوت نے ڈھیروں ڈھیر پانی چھوڑ دیا۔۔۔۔۔۔۔ تو یہ دیکھ کر میں نے لن باہر نکالا اور ان کی چوت سے رسنے والے پانی سے ان کی گانڈ کو چکنا کیا۔۔۔۔اور پھر لن کو ان کی گانڈ میں ڈال کر جیسے ہی گھسہ مارا ۔۔۔۔تو وہ چیخ اُٹھی۔۔۔۔ہائے میں مر گئی۔۔ تو اس پر میں نے ان سے پوچھا کیا ہوا۔۔۔ میڈم؟؟؟ تو وہ درد بھری آواز میں بولی۔۔۔ بڑی۔۔پیڑ (درد) ہوئی اے۔۔۔۔۔۔۔ چوت کی نسبت میڈم کی گانڈ بہت ٹائیٹ ۔ اور اس کے ٹشو بہت نرم و ملائم تھے ۔۔ اور پھر میں نے جی بھر میڈم کے اس سوراخ کو بھی چودا۔۔۔سو گانڈ مارنے کا صواد آ گیا۔۔۔ ۔۔۔اور پھر سارا مال ان کی گانڈ میں چھوڑ دیا۔۔۔۔۔۔




    اس وقت صبع کے آٹھ بجے تھے اور رش کی وجہ سے کمرہ ء عدالت کھچا کھچ بھرا ہوا تھا۔۔۔۔۔۔۔ ہم سب (انکل لوگ ) ۔۔۔۔ اور شیدے کے سارے گھر والے بھی عدالت میں موجود تھے نبیلہ کے باکرہ ( کنواری) ہونے کی میڈیکل رپورٹ بھی آ گئی تھی۔۔اس کے علاوہ میں نے نبیلہ کے بالغ ہونے کا ثبوت (ووٹر لسٹ بھی اپنے وکیل کو دے رکھی تھی) ۔۔ اور اس کے ساتھ ساتھ میڈم تانیہ کے ساتھ خصوصی تعلق ہونے کی وجہ سے ہمارے بارے میں اس نے نبیلہ کو اچھا خاصہ موٹی ویٹ کر رکھا ۔۔۔۔ کچھ ہی دیر کے بعد جج صاحب کمرہ عدالت میں آ گئے۔۔۔۔۔اس وقت عدالت میں تل دھرنے کی جگہ نہ تھی۔۔۔۔ پھر جیسے ہی ہمارے کیس کے بارے میں پکارا ہوا۔۔۔تو میرے سمیت ہم سب کے دل دھک دھک کرنے لگے۔ کہ دیکھو نبیلہ کیا بیان دیتی ہے اگر اس کا بیان ہمارے حق میں ہوا۔۔ تو اسی وقت کیس نے ختم ہو جانا تھا اور اگر ۔۔۔۔۔ یہ سوچتے ہی مجھے ایک جھرجھری سی ا ٓگئی۔اور میں اس سے آگے نہ سوچ سکا۔۔۔۔۔۔۔۔ادھر جج صاحب نے نبیلہ کو کٹہرے میں طلب کیا ۔۔۔۔اور پھر اس سے حلف لینے کے بعد ۔۔۔ ۔۔۔ عدالت میں نبیلہ کی آواز گونجی وہ کہہ رہی تھی کہ جناب میں ایک عاقل او ر بالغ لڑکی ہوں اور اپنی مرضی سے امجد کے ساتھ گئی تھی جس کی وجہ سے میرے والدین نے امجد اور اس کے گھر والوں پر ناجائز پرچہ کروا دیا تھا گھر سے جانے کی وجہ میرے گھر والوں کی مجھ پر ناجائز پابندیاں تھی۔۔اس کے بعد وہ دس منٹ بولتی رہی ۔ نبیلہ کا بیان ختم ہونے کے بعد ۔۔۔۔۔ عدالت کی طرف سے اس پر سوال و جواب کیئے گئے۔۔۔ اور پھر جج صاحب نے نبیلہ کی میڈیکل رپورٹ اور دیگر ثبوت دیکھنے کے بعد اس نے امجد کو باعزت بری کر تے ہوئے ہم پر درج ایف آئی آر کو بھی ختم کر دیا۔۔۔۔فیصلہ سنا کر جیسے ہی جج صاحب ریٹائیرنگ روم میں گئے۔۔۔۔مبارک سلامت کا ایک شور ا ُٹھا اور پھر۔۔۔۔ایک دوسرے کے ساتھ گلے ملنے کے بعد ۔۔۔۔۔ سب لوگ اپنے اپنے گھرو ں کو چلے گئے۔۔۔ اور پھر کچھ دیر بعد میں بھی گھر کی طرف روانہ ہو گیا۔۔۔ابھی میں نے کچہری کا گیٹ عبور ہی کیا تھا کہ مجھ پر قیامت ٹوٹ پڑی۔۔۔ ایک ساتھ بہت سارے لوگ مجھ پر پل پڑے ۔۔اور مجھ پر مکوں تھپڑوں اور ٹھڈوں کی برسات شروع ہو گئی ۔۔۔ ۔۔۔ ۔۔۔کوئی مجھے لاتیں مار رہا تھا تو کوئی ڈنڈوں سے پیٹ رہا تھا اور کوئی ویسے ہی گالیاں دے رہا تھا ایسے میں ۔۔۔ اپنے آپ کو بچانے کے لیئے ۔۔۔میں پاگلوں کی طرح فضا میں ہاتھ پاؤں چلا رہا تھا لیکن بے سود۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ایسے میں اچانک ہی ایک زور دار ڈانڈا میرے سر پر لگا۔۔۔۔۔ جس کی وجہ سے میرا سر گھوم گیا اور میں تیورا کر زمین پر گر گیا۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔اور زمین پر گرتے انہوں نے مجھ پر ٹھڈے برسانے شروع کر دیئے۔۔اس وقت میرے انگ انگ سے درد پھوٹ رہا تھا اور میرے ناک منہ سے خون رس رہا تھا ۔۔۔ میں جو پہلے ہی نیم بے ہوش سا تھا۔۔۔ان ٹھڈوں اور لاتوں کو مزید برداشت نہ کر سکا ۔۔ ۔۔۔اور پھر آہستہ آہستہ میری آنکھیں بند ہوتی چلی گئیں ۔۔۔میں نے آنکھیں کھولنے کی بڑی کوشش کی ۔۔۔۔لیکن۔۔۔ میرے پیوٹے من بھر کے ہو گئے تھے۔۔۔۔۔۔۔ اور پھر آہستہ آہستہ میری آنکھیں ۔۔۔۔۔۔۔بند ہو نے لگیں ۔۔اسی دوران میں نے ۔۔۔ آخری دفعہ آنکھیں کھولنے کی ہر ممکن کوشش کی لیکن۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔



    ہم جو تاریک راہوں میں مارے گئے
    تیرے ہونٹوں کی پھولوں کی چاہت میں ہم
    دار کی خشک ٹہنی پہ وارے گئے۔۔۔۔۔۔
    سولیوں پر ہمارے لبوں سے پرے
    تیرے ہونٹوں کی لالی لپکتی رہی
    تیرے ہاتھوں کی چاندی دمکتی رہی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔



    ........................ ختم شد .........................


  6. The Following 2 Users Say Thank You to shahg For This Useful Post:

    abkhan_70 (Yesterday), omar69in (Today)

  7. #204
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    23
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    27
    Thanked in
    20 Posts
    Rep Power
    4

    Default

    مرشد آپ نے کہانی مکمل کرنے کا حق ادا کر دیا
    ہر کہانی کو ختم ہونا ہی ہوتا ہے
    لیکن اس کہانی کا فائنل ٹچ لاجواب تھا
    آخری کردار دار الامان کی وارڈن کا بہت شاندار تھا
    چس آ گیا
    اگلی کسی کہانی کا بے صبری سے منتظر رہوں گا
    خصوصی آپ کیلئے

    ہمیں پتا تھا کہ تیری محبت کے جام میں زہر ہے
    لیکن تیرے پلانے میں خلوص اتنا تھا کہ کہ ہم ٹھکرا نہ سکے

  8. The Following User Says Thank You to ArmanM For This Useful Post:

    shahg (Today)

  9. #205
    Join Date
    Aug 2019
    Posts
    4
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    4
    Thanked in
    4 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    Zabrdst shah g maza aa gya hai. Ap ki or story ka wait rahy ga

  10. The Following User Says Thank You to 00007 For This Useful Post:

    shahg (Today)

  11. #206
    Join Date
    Apr 2010
    Posts
    22
    Thanks Thanks Given 
    93
    Thanks Thanks Received 
    21
    Thanked in
    18 Posts
    Rep Power
    13

    Default

    shah jee kamal story ka end kiya

  12. The Following User Says Thank You to waqastariqpk For This Useful Post:

    shahg (Today)

  13. #207
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default

    Quote Originally Posted by ArmanM View Post
    مرشد آپ نے کہانی مکمل کرنے کا حق ادا کر دیا
    ہر کہانی کو ختم ہونا ہی ہوتا ہے
    لیکن اس کہانی کا فائنل ٹچ لاجواب تھا
    آخری کردار دار الامان کی وارڈن کا بہت شاندار تھا
    چس آ گیا
    اگلی کسی کہانی کا بے صبری سے منتظر رہوں گا
    خصوصی آپ کیلئے

    ہمیں پتا تھا کہ تیری محبت کے جام میں زہر ہے
    لیکن تیرے پلانے میں خلوص اتنا تھا کہ کہ ہم ٹھکرا نہ سکے



    کہانی پسند کرنے کا بہت بہت شکریہ بھائی
    جیتے ریئے آباد رہیئے

  14. #208
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default

    Quote Originally Posted by 00007 View Post
    Zabrdst shah g maza aa gya hai. Ap ki or story ka wait rahy ga
    شکریہ پیارے بھائی

  15. #209
    Join Date
    Dec 2008
    Posts
    1,842
    Thanks Thanks Given 
    417
    Thanks Thanks Received 
    2,711
    Thanked in
    721 Posts
    Rep Power
    350

    Default

    Quote Originally Posted by waqastariqpk View Post
    shah jee kamal story ka end kiya

    بڑی مہربانی جناب

  16. The Following User Says Thank You to shahg For This Useful Post:

    omar69in (Today)

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •