جتنے دوستوں کی ممبرشپ ری سٹور ہونی تھی ہو گئی اب مزید کسی کی ممبرشپ ری سٹور نہیں ہو گی. اب جس کو ممبرشپ چاہے اس کو فیس دینا ہو گی. پندرہ سو یا پندرہ ڈالر ایک سال کے لئے
Contact
[email protected]

اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں . نیا سلسلہ بستی بستی گاتا جائے بنجارا ایڈمن کے قلم سے

Page 73 of 78 FirstFirst ... 2363697071727374757677 ... LastLast
Results 721 to 730 of 774

Thread: وہ بھولی داستان جو پھر یاد آگئی

  1. #721
    Join Date
    Nov 2018
    Posts
    340
    Thanks Thanks Given 
    396
    Thanks Thanks Received 
    2,054
    Thanked in
    333 Posts
    Rep Power
    189

    Default Update no 237..???



    ۔۔۔
    میں نے عبیحہ کی طرف دیکھا اور کہا چلو وہ سب تو نہر کی طرف گئے ہیں ۔
    عبیحہ نفی میں سر ہلاتے ھوے بولی ابھی تو میں نے سارا باغ دیکھنا ھے ابھی تو میں نے ایک ھی امرود کھایا ھے ۔
    عبیحہ کی بات سن کر میں نے بڑی مشکل سے اپنی ہنسی روکی ۔
    اتنے میں مالی نے میری کمر تھپتھپاتے ھوے کہا کوئی گل نئی یار تمہارے مہمان ہمارے مہمان ہیں انکو دیکھاو سارا باغ اور اگر میرے لائک کچھ ھو تو بتا دو ۔
    میں نے کہا نہیں یار بڑی مہربانی ۔
    تو مالی میرے گلے مل کر بولا جاندے یار اے ہو جیاں گلاں نئی کردیاں ۔
    اچھا میں چلنا ایں تسی کرو موجاں ۔۔۔۔۔
    اور پھر مالی جس طرف سے آیا تھا اسطرف واپس چلا گیا اور اس کے جاتے ھی عبیحہ نے جلدی سے نقاب اتارا اور میری طرف بڑی ادا سے دیکھتے ھوے بولی اب تو نقاب کرنے کی ضرورت نہیں ۔۔۔
    میں نے نفی میں سر ہلایا اور ہم دونوں چلتے ھوے باغ کے اندرونی حصے کی طرف جانے لگ گئے ۔۔
    عبیحہ آہستہ آہستہ منہ میں کوئی گانا گنگنا رھی تھی اور آہستہ آہستہ میرے ساتھ چلتی ھوئی کبھی درخت کے پتے توڑتی تو کبھی ٹہنیوں کو کھینچتی ۔
    اور میں اسکی اٹھکیلیاں دیکھ دیکھ کر اندر ھی اندر خوش ھوے جارھا تھا ۔
    کچھ ھی دور جاکر مجھے امرود کا ایک درخت نظر آیا جس کے امرود اوپر سے پیلے اور اندر سے سرخ ھوتے تھے ۔
    میں اس درخت کے پاس رک گیا اور پکا ھوا امرود تلاش کرنے لگ گیا کیونکہ جو امرود نیچے تھے وہ کچے تھے ۔
    اور پکے امرود اوپر لگے ھوے تھے جو میری پہنچ سے باہر تھے ۔
    میں نے جمپ لگا کر بہت کوشش کی کہ کوئی امرود میرے ھاتھ لگ جاے مگر ناکامی ھوئی ۔
    آخر کار مجھے درخت پر چڑھنا پڑا اور اوپر چڑھ کر میں کافی سارے امرود توڑ کر جیبیں بھر میں اور پھر نیچے آگیا اور جیب سے امرود نکال کر عبیحہ کو دیا اور بولا ۔
    عبیحہ تم نے ایسا امرود کبھی نہیں کھایا ھوگا عبیحہ امرود کو ھاتھ میں گھما کر دیکھتے ھوے بولی ۔
    کیوں اس میں کونسی خاص بات ھے یہ بھی عام امرودوں جیسا ھی ھے ۔
    میں نے کہا یہ صرف خاص لوگوں کے لیے ھوتا ھے زرہ اسکو بائٹ کرو اور پھر دیکھو۔۔
    عبیحہ نے کندھے اچکا کر امرود کو دانتوں میں لے کر امرود کو بائٹ کیا اور کھانے لگ گئی اور ساتھ ھی بولی واو یار یہ تو بہت میٹھا ھے اور اسکا ٹیسٹ بھی بہت اچھا ھے ۔
    میں نے کہا اب ذرہ امرود کو دیکھو ۔
    عبیحہ نے امرود کو دیکھا تو امرود اندر سے بلکل سرخ تھا ۔
    عبیحہ امرود کو بڑی حیرانگی سے دیکھتے ھوے بولی واوووووو یار یہ کیسے ھوسکتا ھے ۔
    میں نے کہا یہ اوپر والے کا کام ھے وہ جو چاھے کرسکتا ھے ۔
    عبیحہ بولی واقعی یار یہ تو میرے لیے سر پرائز ھے میں نے واقعی ایسا امرود اپنی زندگی میں پہلی دفعہ دیکھا ھے ۔
    میں نے کہا ۔۔
    اور یہ بھی یاد رکھنا کہ یہ سپیشل لوگوں کے لیے ھوتا ھے ہر ایسے غیرے کے لیے نہیں ۔۔
    عبیحہ میری طرف بڑے رومینٹک انداز سے دیکھتے ھوے بولی ۔
    ہممممم اسکا مطلب ھے کی ایم سپیشل فار یو ۔
    میں نے اثبات میں سر ہلاتے ھوے کہا ۔
    یس۔۔۔

    عبیحہ بولی. واوو
    اور پھر عبیحہ نے بڑی مستانی آنکھوں سے میری طرف دیکھا اور بولی ۔
    میں اس نوازش کی وجہ جان سکتی ہوں کہ میں کیوں خاص ھوں ۔۔۔
    میں نے بھی عبیحہ کی نظروں کے انداز کی کاپی کرتے ھوے اسی انداز میں جواب دیا ۔
    کیوں کے آپ میری سب سے خوبصورت کزن ھو اور پہلی دفعہ آپ ہمارے گھر آئی ہیں تو اتنا تو ہمارا حق بنتا ھے کہ آپکو سپیشل سمجھوں ۔۔۔
    عبیحہ میری بات سن کر مسکرائی اور بڑی ادا سے اپنے سیاہ سلکی لمبے بالوں میں ھاتھ پھیرتے ھوے بالوں کو جھٹکتے ھوے بولی ۔
    ہممممممم میں تو کچھ اور ھی سمجھی تھی ۔۔۔
    میں نے حیرانگی کا اظہار کرتے ھوے کہا ۔
    میں سمجھا نہیں کہ کچھ اور۔۔۔۔۔۔
    عبیحہ طنزیہ مسکراہٹ چہرے پر لاتے ھوے بولی ۔
    کچھ نہیں اور ساتھ ھی سر نیچے کر کے اپنے پیروں کو دیکھتے ھوے بولی ۔۔۔
    چلو مما لوگوں کے پاس چلتے ہیں ۔۔
    مجھے عبیحہ کا موڈ کچھ اوف لگا ۔۔
    میں نے رک کر عبیحہ کے ھاتھ کو پکڑ لیا اور اسکو گھما کر اپنی طرف اسکا رخ موڑا تو عبیحہ سر جھکائے میرے سامنے فرمانبرداری سے کھڑی ھوگئ۔۔۔
    میں نے عبیحہ کی ٹھوڑی کو پکڑ کر اسکا چہرہ اوپر کیا تو عبیحہ نے چہرہ تو اوپر کرلیا مگر اپنی جھیل سی آنکھوں پر پلکوں کی چادر بچھا کر آنکھوں کو چھپا لیا ۔
    میں بڑے غور سے عبیحہ کے چہرے کو دیکھنے لگ گیا آج پہلی دفعہ میں عبیحہ کے چہرے کو اتنے قریب سے اور اتنے غور سے دیکھ رھا تھا ۔۔۔
    بڑی بڑی کالی سیاہ آنکھیں ۔۔
    تیکھا ناک گالوں کی رنگت گلابی مانند درمیانے گلابی ہونٹ نہ موٹے نہ باریک ۔
    چہرہ اتنا کلین کہ کہیں بھی بالوں کی لو تک نظر نہیں آرھی تھی ۔
    آنکھیں بند ھونے کے باوجود عبیحہ میری نظروں کی تاب نہ لاسکی اور ٹھوڑی سے میری انگلیاں ہٹاے بغیر ھی اپنے چہرے کا رخ دوسری طرف پھیر لیا ۔۔۔
    میں نے پھر عبیحہ کا چہرہ اپنے چہرے کے سامنے کرلیا ۔
    عبیحہ نے پھر چہرہ دوسری طرف کرنا چاھا مگر میں نے عبیحہ کی ٹھوڑی کو تھوڑا مضبوطی سے پکڑا تو عبیحہ نے دوبارا اپنا چہرہ دوسری طرف نہیں کیا ۔
    اور ساتھ ھی میں نے ٹھوڑی کو چھوڑ کر اہنے دونوں ہاتھ عبیحہ کے کانوں کے اوپر رکھ کر اسکا چہرہ اہنے ہاتھوں کی گرفت میں لے لیا ۔۔۔
    عبیحہ نے آہستہ سے بس اتنا ھی کہا یاسر پلیزززز نہ کرو ۔۔
    اور پھر بند آنکھوں والی گڑیا کی طرح میرے سامنے کھڑی رھی ۔۔
    میں عبیحہ کے چہرے کو تھامے اسکے گلابی شربتی ہونٹوں کو غور سے دیکھنے لگ گیا ۔
    اور نجانے مجھ میں کہاں سے اتنی ہمت پیدا ھوئی کہ میرے ہونٹ عبیحہ کے ہونٹوں کی طرف بڑھنے لگے ۔۔
    عبیحہ کو بھی شاید میری سانسوں کی تپش اپنے ہونٹوں ہر محسوس ھوئی اس سے پہلے کہ عبیحہ کچھ کرتی مگر تب تک دیر ھوچکی تھی میں نے اپنے ہونٹوں پر زبان پھیر کر اپنے ہونٹوں کو گیلا کرتے ھی اپنے گیلے ہونٹ عبیحہ کے ہونٹوں پر رکھ دیے ۔۔
    عبیحہ نے یکدم پوری آنکھیں کھولی اور اسکے منہ سے بس ممممم نکلا اور عبیحہ نے پورے ذور سے ہونٹوں کو آپس میں بھینچ لیا اور ممممم کرتی نفی میں سر ہلاتے ھوے اپنا سر پیچھے کرنے کی کوشش کرتے ھوے پیچھے کو ہونے لگ گئی مگر میں نے عبیحہ کے چہرے کو مضبوطی سے پکڑا ھوا تھا اور اسکے ہونٹوں کو چوسنے کی کوشش کررھا تھا اور عبیحہ کے پیچھے ہونے کے ساتھ میں بھی آگے کی طرف ھوتا جا رھا تھا ایسے کرتے کرتے عبیحہ درخت کے پاس چلی گئی اور اسکی کمر درخت کے ساتھ جالگی اب عبیحہ پیچھے نہیں ھوسکتی مجھے موقع مل گیا اور میں مذید آگے ہوکر بلکل عبیحہ کے ساتھ لگ گیا ۔
    اچانک عبیحہ نے کچھ کہنے کے لیے اپنے شربتی ہونٹوں کو کھولا تو جیسے ھی عبیحہ نے ہونٹوں کو تھوڑا سا کھولا
    میں نے ساتھ ھی عبیحہ کے نچلے ہونٹ کو اپنے ہونٹوں میں بھر لیا اور اسکے شربتی ہونٹ کا رس چوسنے لگ گیا عبیحہ سے اور تو کچھ نہ ھوا اس نے دونوں ہاتھ میرے سینے پر رکھ کر مجھے پیچھے دھکیلنے لگ گئی ۔۔
    مگر مجھ پر تو جنون سوار ھوچکا تھا میں برابر اسکے ہونٹ کو چوسی جارھا تھا جبکہ عبیحہ ابھی تک مزاہمت کررھی تھی ۔

    جب عبیحہ کی مزاہمت بڑی تو میں نے اسکے چہرے سے ہاتھ ہٹاے اور اسکے دونوں ہاتھوں کو کلائیوں سے پکڑ کر اسکے سر کے اوپر اسکے ہاتھ کرکے پکڑ لیے اورپھر اسکی نازک کلاءیوں کو ایک ھاتھ میں کر کے دوسرا ھاتھ نیچے لا کر عبیحہ کا گول مٹول تنا ھوا مما پکڑ کر دبانے لگ گیا اور ساتھ میں عبیحہ کا ہونٹ چوسنے لگ گیا ۔
    میرا لن فل تن چکا تھا جو میرے انڈر ویر کو پھاڑنے پر تلا ھوا تھا ۔
    عبیحہ پھٹی آنکھوں سے مجھے دیکھی جارہی تھی اسکے چہرے کا رنگ گلابی سے سرخ ٹماٹر جیسا ھوگیا تھا ۔
    عبیحہ میرے ھاتھ سے اپنی کلائیاں چھڑوانے کی کوشش کررھی تھی مگر میرے ھاتھ سے اسکی نازک کلائیوں کا نکلنا بہت مشکل تھا ۔
    آخر عبیحہ کی مزاہمت دم توڑ گئی اور عبیحہ نے خود کو میرے حوالے کردیا ۔
    عبیحہ کا ایک مما میرے ہاتھ میں تھا جو تقریباََ آدھا ھی میرے ہورے ھاتھ میں آرھا تھا ۔
    مجھے ایسے لگ رھا تھا کہ میں کسی روئی کے گولے کو دبا رھا ہوں ۔۔۔
    عبیحہ بلکل ساکت کھڑی تھی وہ کسنگ میں بھی میرا ساتھ نہیں دے رھی تھی اور نہ ھی مزاہمت کررھی تھی ۔

    کچھ دیر میں عبیحہ کا نچلا ہونٹ چوستا رھا ۔

    اسی دوران مجھے محسوس ھوا کہ عبیحہ کا جسم جھٹکے کھا رھا ھے میں سمجھا شاید عبیحہ فارغ ھو رھی ھے اس وجہ سے اسکا جسم جھٹکے کھا رھا ھے ۔۔
    میں نے عبیحہ کے چہرے کی طرف دیکھا تو جیسے ھی میری نظر اسکی آنکھوں پر پڑی تو اسکی آنکھوں سے آنسوؤں کی ندی بہہ رھی تھی اور تب ھی مجھے ہوش آیا کہ عبیحہ کا جسم جھٹکے فارغ ھونے کی وجہ سے نہیں بلکہ ہچکیاں لینے کی وجہ سے کھا رھا ھے ۔۔۔۔۔
    مجھے ایکدم جھٹکا لگا اور میں جھٹکے سے عبیحہ سے الگ ھوا تو عبیحہ ساتھ ھی اونچی آواز میں رونے لگ گئی اور اس نے پہلے ہاتھ سے اپنے ہونٹ کو سہلایا اور پھر دونوں ہاتھ اپنے چہرے پر رکھ کر روتے ھوے درخت کے ساتھ گھستی ھوئی نیچے پاوں کے بل بیٹھ گئی ۔۔
    عبیحہ کی حالت دیکھ کر میرے تو ہاتھ پیر پھولنا شروع ھوگئے کہ یہ میں نے کیا کردیا ۔۔
    میں ذور ذور سے اپنے سر کو پیٹنے لگ گیا ۔
    عبیحہ مسلسل روے جارھی تھی ۔۔
    آخر میں حوصلہ کرکے اسکے ساتھ درخت سے ٹیک لگا کر بیٹھ گیا ۔
    اور عبیحہ کی طرف دیکھنے لگ گیا ۔
    عبیحہ کو یوں روتے دیکھ کر میرے دل کو کچھ ھونے لگ گیا ۔۔
    میں اپنے آپ پر ملامت کرنے لگ گیا کہ میں نے عبیحہ کے ساتھ ذبردستی کیوں کی ۔
    تھوڑا صبر کرلیتا شاید وہ خود ھی پہل کرلیتی مگر تم بےصبرے نکلے ۔۔۔
    میں نے حوصلہ کر کے عبیحہ کے ہاتھ پکڑ کر اسکے چہرے سے ہٹاے تو عبیحہ نے بھیگی آنکھوں سے مجھے گھورتے ھوے دیکھا ۔
    عبیحہ کی آنکھیں سرخ ھوچکی تھی ۔
    عبیحہ کو کچھ کہنے کے لیے میرے پاس الفاظ نہیں تھے ۔
    مجھے اور تو کچھ نہ سوجھا میں نے عبیحہ کے ھاتھ کو اپنے چہرے پر مارنا شروع کردیا ۔۔
    اور ساتھ ساتھ کہنے لگا ۔
    مارو مجھے میں بہت گندا ھوں مجھے تمہارے ساتھ ایسا نہیں کرنا چاہیے تھا ۔
    عبیحہ جی مارو مجھے میں ہوں ھی اسی لائک ۔۔
    میری وجہ سے آپکو اتنی تکلیف ھوئی میری وجہ سے آپکا سل دکھا میری وجہ سے آپ اتنا روئی ۔۔۔
    میں تو معافی کے لائک بھی نہیں ھوں عبیحہ جی ۔۔
    عبیحہ غور سے میرے چہرے کو دیکھی جارھی تھی ۔
    اور میں اسکے ہاتھ اپنی گال پر ماری جارھا تھا تھپڑوں کی بارش میری گال پر جاری تھی ۔۔


    وہ بھولی داستاں جو پھر یاد آگئی سچے دھاگوں سے جُڑی اردو فنڈا کی ایک لازوال سٹوری

  2. The Following 14 Users Say Thank You to Xhekhoo For This Useful Post:

    abba (07-02-2019), Admin (04-02-2019), ksbutt (05-02-2019), Lovelymale (04-02-2019), MamonaKhan (05-02-2019), mentor (04-02-2019), Mian ji (04-02-2019), Mirza09518 (05-02-2019), mmmali61 (04-02-2019), musarat (04-02-2019), omar69in (04-02-2019), Story Maker (04-02-2019), sweetncute55 (04-02-2019), waqastariqpk (04-02-2019)

  3. #722
    Join Date
    Nov 2018
    Posts
    340
    Thanks Thanks Given 
    396
    Thanks Thanks Received 
    2,054
    Thanked in
    333 Posts
    Rep Power
    189

    Default Update no 238..??




    عبیحہ نہ ھاتھ کھینچ رھی تھی اور نہ ھی کچھ بول رھی تھی بس میرے چہرے کو دیکھی. جارھی تھی ۔
    تھک ہار کر میں اسکے ھاتھ کو اپنی گال کے ساتھ لگا کر رونے لگ گیا ۔۔۔
    اچانک عبیحہ نے اپنا ہاتھ میرے ھاتھ سے کھینچا اور بڑی تیزی سے کھڑی ھوئی اور پھر میرے بازوں کو پکڑ کر مجھے کھڑا کیا ۔
    میں سر جھکا ے کسی مجرم کی طرح عبیحہ کے سامنے کھڑاتھا ۔۔
    عبیحہ نے اپنے دوپٹے سے اپنا چہرہ اور آنکھیں اچھی طرح صاف کیں اور پھر ناک کو سکیڑ کر میرے بازو کو ہلاتے ھوے بولی ۔۔
    یاسر تم نے میرے ساتھ ایسا کیوں کیا ۔
    کیا سوچ کر تم نے میرے ساتھ یہ گندی حرکت کی ۔
    میری اور اپنی عمر کا فرق ھی دیکھ لیتے میں تم سے بڑی ھوں ۔
    میں تمہاری حرکتوں کو مذاق سمجھ کر اگنور کرتی رھی مگر تم تو ۔۔۔۔۔۔۔۔
    عبیحہ پھر رونے لگ گئی ۔۔۔۔۔
    میں سر جھکائے شرمندہ کھڑا عبیحہ کی باتیں سن رھا تھا ۔۔۔
    میں نے آہستہ آہستہ سر اوپر اٹھایا اور عبیحہ کی طرف دیکھتے ھوے بولا عبیحہ جی مجھے خود نہیں پتہ چلا کہ میں کیا کررھا ھوں ۔
    آپ کے حسن نے مجھے اپنے سحر میں جکڑ لیا تھا میرے لاکھ کنٹرول کرنے کے باوجود بھی میں خود پر کنٹرول نہیں کرسکا ۔
    یہ آپکے حسن کا جادو تھا جس نے مجھے یہ سب کرنے پر مجبور کردیا ۔۔
    میں ساتھ ساتھ عبیحہ کے چہرے کو بھی دیکھ رھا تھا ۔۔
    سچ کہتے ہیں سیانے ۔
    کہ عورت کی سب سے بڑی کمزوری اسکی تعریف ھے ۔۔
    اور میری باتوں نے عبیحہ کے چہرے پر آیا خوف اور غصہ تقریباََ ختم کردیا اور عبیحہ میری طرف گہری نظروں سے دیکھنے لگ گئی ۔۔
    میں نے جب دیکھا کہ میرا وار کامیاب ھورھا ھے تو میں نے پھر عبیحہ کے حسن کی تعریف کرتے ھوے ساتھ ھی اسکے سامنے ھاتھ جوڑتے ھوے کہا ۔
    عبیحہ جی آپ سے ذیادہ خوبصورت لڑکی میں نے آج تک نہیں دیکھی میں کیا کرتا آپ کے اس حسین چہرے کو جو چاند سا چہرہ دکھتا ھے اسے اتنا قریب دیکھ کر میں بہک گیا تھا میں خود پر کنٹرول نہیں کرسکا ۔۔
    اور ۔۔۔۔۔۔۔۔
    میں ساتھ ھی اپنے جوڑے ھاتھوں کو اپنے ہونٹوں کے ساتھ لگا کر رونے کی ایکٹنگ کرنے لگ گیا ۔۔
    تبھی عبیحہ نے دونوں ھاتھوں سے میرے جڑے ھاتھ پکڑے اور میرے چہرے سے ہٹا کر بولی ۔
    یاسر کیا میں تمہیں بہت اچھی لگتی ھوں ۔۔۔
    میں نے ناک کو سکیڑتے ھوے اثبات میں سرہلایا ۔۔
    عبیحہ پھر بولی کتنی اچھی لگتی ھوں ۔۔
    میں نے سر جھکائے آہستہ سے کہا ۔
    اسکا ثبوت آپ پہلے دیکھ چکی ہیں ۔۔
    عبیحہ کے چہرے پر ہلکی سی مسکراہٹ آئی اور میری ٹھوڑی کو پکڑ کر اوپر کرتے ھوے بولی ۔
    اادھر میری طرف دیکھو ۔
    میں نے پلکوں کو اوپر اٹھایا تو سامنے عبیحہ کا مسکراتا ھوا چہرہ دیکھنے کو ملا ۔
    عبیحہ بولی اب میری طرف دیکھ کر بولو کہ میں تمہیں کتنی اچھی لگتی ھوں ۔۔
    میں نے کہا بہتتتتتتت ذیادہ ۔۔

    عبیحہ بولی بس اچھی ھی لگتی ھوں ۔۔
    میں عبیحہ کی بات سن کر خاموش رھا تو عبیحہ ایک قدم آگے بڑی اور میرے سینے پر ہاتھ رکھ کر مجھے پیچھے کیا تو میں پیچھے ھوکر درخت کے ساتھ لگ گیا عبیحہ پھر ایک قدم آگے بڑھی اور بلکل میرے ساتھ لگ گئی اور میرے دونوں ھاتھوں کو پکڑ کر میرے سر کے اوپر بلکل ایسے کردیا جیسے میں نے ذبردستی عبیحہ کے ہاتھ اسکے سر کے اوپر کر کے پکڑے ھوے تھے ۔
    فرق بس یہ تھا کہ میں نے ایک ھاتھ سے اسکی دونوں کلائیان پکڑی تھیں جبکہ اس نے دونوں ھاتھون سے میری کلائیوں کو پکڑ کر میرے سر سے اوپر کر کے درخت کے ساتھ لگایا ھوا تھا ۔
    اس وجہ سے اسکے ممے میرے سینے کے ساتھ ٹچ ھورھے تھے جبکہ ایسا کرنے کے لیے عبیحہ کو پنجوں کے بل ھونا پڑا ۔
    کیوں کے میرا قد عبیحہ سے چار پانچ انچ لمبا تھا ۔
    عبیحہ نے میرے ھاتھ اوپر کر کے میرے ہونٹون کے پاس اپنے ہونٹ کرتے ھوے آہستہ سے کہا آنکھیں بند کرو ۔
    میں نے اپنی آنکھیں بند کرلیں ۔
    اور پھر مجھے عبیحہ کی گرم سانسیں اپنے نتھنوں سے ٹکراتی محسوس ھوءیں ۔
    میرا پھر سے سارا معاملہ خراب ھونا شروع ھوگیا ۔
    اتنے میں عبیحہ کی آواز پھر میرے کانوں سے ٹکرائی ۔
    اب بولو میں تمہیں کتنی اچھی لگتی ھوں۔۔۔
    میں نے کپکپاتی آواز میں آہستہ سے کہا بببہتتتتت اچھی ۔۔
    نجانے میری ایسی کیفیت کیوں ھوگئی تھی میرا جسم کانپ رھا تھا میری زبان میرا ساتھ نہیں دے رھی تھی میں خود کو عبیحہ کے سامنے بہت کمزور محسوس کررھا تھا ۔
    عبیحہ کی سانس پھر میرے نتھنوں سے ٹکرائی اور ساتھ ھی مجھے اپنے ہونٹوں پر عبیحہ کی زبان کی نوک پھرتی محسوس ھوئی ۔
    میں چاہ کر بھی آپنی آنکھیں نہیں کھول پا رھا تھا ۔
    میری کیفیت کسی لاچار بےبس جیسی ھوگئی تھی ۔۔
    جیسے ھی عبیحہ کی زبان نے میرے ہونٹوں کو چھوا تو میرا جسم کانپ آٹھا اور ناچاہتے ھوے بھی میرے ہونٹ خود باخود کھل گئے عبیحہ نے زبان میرے کھلے ہونٹوں کے اندر پھیر کر پھر واپس کھینچ لی اور پھر بڑی ھی سیکسی آواز نکال کر آہستہ سے بولی ۔
    کتنا چاہتے ھو مجھے ۔۔۔
    میں اسکے سحر میں جکڑا ھوا آہستہ سے بولا ۔
    بببببہتتتتتت ذیادہ ۔۔
    عبیحہ نے پھر زبان نکالی اور میرے نچلے ہونٹ پر زبان کی نوک رکھ کر نوک کو بڑے ھی سلو موشن میں رینگتے ھوے میری گال کی طرف لانے لگی اور گال پر پہنچ کر پوری گال کو زبان سے چاٹا اور پھر زبان کی نوک میری گال پر رکھ کر زبان کو میرے کان کی لو تک لے آئی اور میرے کان کی لو سے نیچے زبان کی نوک کو پھیرتے ھوے کان کے پیچھے لے گئی اور یکدم عبیحہ نے پورا منہ کھولا اور میرا دائیاں کان منہ میں ڈال کر لمبا سانس میرے کان میں چھوڑتے ھوے ۔۔۔
    ھااااااااااااا کیا۔۔۔

    افففففففففففف دوستو میری تو جان میری ٹانگوں میں چلی گئی اور میرا سارا جسم کانپ گیا اور میرے منہ سے آہہہہہہہہہہہہہ نکلا لن اس قدر اکڑ گیا کہ مجھے درد محسوس ھونے لگ گئی ۔
    میری ٹانگیں کانپنے لگ گئی ۔
    ظالم نے پتہ نہیں کونسا منتر میرے کان میں پھونک دیا کہ مجھے اپنے جسم سے جان نکلتی محسوس ھوئی ۔۔

    واقعی دنیا پَلی تو پَلی
    اسی تے کُش وی نئی۔۔
    پاویں لکھ پھدیاں پاڑیاں۔۔۔


    آج پھدی میرا لن پھاڑنے کے چکر میں تھی ۔۔۔
    عبیحہ نے میرے کان میں ھاااااااااا کر کے ایکدم میرے کان کو منہ سے نکال کر اپنا چہرہ پیچھے کر لیا اور پھر میرے ہونٹوں کے پاس اپنا اپنے ہونٹ لے آئی اور پھر آہستہ سے بولی ۔
    یاسرررررررر۔۔
    میں اسکے سحر میں جکڑا بولا ۔
    جججججی ۔
    عبیحہ بڑے رومینٹک انداز سے بولی ۔
    میرے لیئے کیا کرسکتے ھو۔۔۔
    میں نے بنا رکے کہا ۔
    سب کچھ سب کچھ ۔۔۔
    عبیحہ نے پھر زبان باہر نکالی اور میرے منہ کے اندر گھسیڑ کر زبان کی نوک سے میری زبان کو چھیڑنے لگ گئی جواب میں میری زبان نے بھی حرکت کی اور اسکی زبان کو چھونا چاھا تو عبیحہ نے جلدی سے زبان واپس کھینچی اور میرے ہونٹوں کو اپنے یونٹوں میں بھر کر نفی میں سر ہلایا اور پھر ہونٹوں کو چھوڑ کر آہستہ سے بولی تم کچھ نہ کرو مجھے کرنے دو ۔۔
    میں نے پھر اثبات میں سرہلایا اور بولا ججججججی اچھا ۔
    اور عبیحہ نے پھر زبان کو میرے منہ کے اندر ڈالا اور زبان کو میرے منہ میں چاروں طرف گھمانے لگی اور پھر سے میری زبان کو چھیڑنے لگ گئی ۔۔
    اور پھر زبان کو باہر نکال کر میرے نچلے ھونٹ کو منہ میں ڈال کر ذور سے چوسا اور چھوڑ دیا اور زبان کی نوک میرے نچلے ہونٹ سے نیچے رکھ کر نوک کو سرکاتے ھوے میری ٹھوڑی پر لے آئی ۔۔
    میری کلین شیو تھی اور وہ بھی تازہ شیو کی ھوئی تھی جس کی وجہ سے میری سکن بلکل بالوں سے پاک تھی اس لیے عبیحہ کو کوئی ہرابلم نہیں ھورھی تھی ۔
    عبیحہ زبان کی نوک کو مذید نیچے لاتے ھوے ٹھوڑئ سے ھوتے ھوے نیچے میرے گلے پر لے آئی اورمیری شہ رگ پر زبان کی نوک رکھ کر عبیحہ نے ایکدم پوری زبان کو میرے گلے پر پھیرا اور میرے گلے کو چاٹتے ھوے ٹھوڑی تک زبان کو لے آئی اور ایسے ھی نیچے سے اوپر تک میرے سارے گلے کو چاٹنے لگ گئی ۔۔
    ھاےےےےےے مرگیاااااااااااا۔۔

    یہ میرے منہ سے اس وقت نکلا ۔۔۔
    دوستو میں وہ مزہ وہ نشہ وہ اس لزت کی کیفیت لفظوں میں بیان نہیں کرسکتا ۔۔
    میرا جسم پھر کانپا عبیحہ کے ممے میرے سینے کے ساتھ اور اسکی پھدی والا حصہ میرے ٹراوزر میں بنے تمبو کے ساتھ لگا ھوا تھا ۔
    میری بس ھوگئی تھی میری برداشت ختم ھوچکی تھی ۔
    کہ اے سالی تے اج مینوں لکوں ای لے گئی ۔۔۔


    وہ بھولی داستاں جو پھر یاد آگئی سچے دھاگوں سے جُڑی اردو فنڈا کی ایک لازوال سٹوری

  4. The Following 13 Users Say Thank You to Xhekhoo For This Useful Post:

    abba (07-02-2019), Admin (04-02-2019), ksbutt (05-02-2019), Lovelymale (04-02-2019), MamonaKhan (05-02-2019), Mian ji (04-02-2019), Mirza09518 (05-02-2019), mmmali61 (04-02-2019), musarat (04-02-2019), omar69in (04-02-2019), Story Maker (04-02-2019), sweetncute55 (04-02-2019), waqastariqpk (04-02-2019)

  5. #723
    Join Date
    Nov 2018
    Posts
    340
    Thanks Thanks Given 
    396
    Thanks Thanks Received 
    2,054
    Thanked in
    333 Posts
    Rep Power
    189

    Default Update no 239..??




    میرا جسم پھر کانپا عبیحہ کے ممے میرے سینے کے ساتھ اور اسکی پھدی والا حصہ میرے ٹراوزر میں بنے تمبو کے ساتھ لگا ھوا تھا ۔
    میری بس ھوگئی تھی میری برداشت ختم ھوچکی تھی ۔
    کہ اے سالی تے اج مینوں لکوں ای لے گئی ۔۔۔
    میں نے جھٹکے سے ہاتھ نیچے کیے جو بنا کسی مشکل کے عبیحہ کے ہاتھوں سے نکل گئے اور ھاتھوں کو نیچے لیجاتے ھی میں نے سب سے پہلے اپنے ٹراوزر کی ڈوری کھینچ کر کھول دی اور پھر بڑی ھی پھرتی سے میں نے عبیحہ کی گانڈ سے شرٹ اوپر کی ۔
    اس سے پہلے کے عبیحہ کچھ کرتی میں نے جھٹکے سے عبیحہ کی شلوار کو لاسٹک والی جگہ سے پکڑا اور نیچے کی طرف کھینچ کر اسکی گانڈ سے نیچے کردیا ۔۔
    اور اسکی قمیض کو پکڑ کر گانڈ سے اوپر کردیا ۔۔۔
    عبیحہ میرے اس اچانک پاگل پن سے گبھرا گئی اور اس کے سارے منتر شو منتر ھوگئے ۔۔
    عبیحہ نے پیچھے ہٹنے کی کوشش کی مگر اب کون اسے پیچھے ہٹنے دیتا ۔
    میں نے پورا ھاتھ عبیحہ کی ننگی گانڈ کی دراڑ میں ڈال کر انگلی اسکی پھدی کے اوپر رکھ دی ۔
    اور ہاتھ کو اوپر کر کے پھدی اور گانڈ پر ذور ڈالتے عبیحہ کو اوپر کردیا ۔
    عبیحہ پیچھے تو نہ ھوسکی مگر میرے سینے پر دونوں ھاتھ رکھ کر مجھے پیچھے دھکلیتے ھوے کہنے لگی ۔
    ننننننہیں یاسر یہ کیا کررھے ھو نہیں ایسا مت کرو چھوڑو مجھے پلیزززز چھوڑو ۔
    مگر اب کون اس جادوگرنی کی آواز سنتا ۔۔
    میں نے بڑی پھرتی سے دوسرا ھاتھ نیچے لیجاکر اپنا ٹرازور انڈر ویر سمیت نیچے کر کے لن کو پھدی کے ساتھ جنگ کرنے کے لیے آزاد کردیا ۔۔
    اور ساتھ ھی عبیحہ کی قمیض کو پکڑ کر آگے سے بھی اوپر کرتے ھوے لن اسکے چڈوں میں گھسیڑ دیا ۔۔
    اففففف مجھے ایسا لگا جیسے میرا لن کسی فوم کی گرفت میں آگیا ھے کیونکہ لن چڈوں گھستے ھی عبیحہ نے چڈوں کو بھینچ لیا تھا اور ھاتھ نیچے لیجا کر میری ناف پر ھاتھ رکھے مجھے پیچھے دھکیلنے کی کوشش کرنی لگ گئی اور ساتھ ھی اسکا رنگ اڑ گیا تھا عبیحہ احتجاج کے ساتھ رونے بھی لگ گئی ۔
    کہ یاسر میں ایسی لڑکی نہی ھوں میرے ساتھ یہ ظلم مت کرنا میں مرجاوں گی میری عزت برباد ھوجاے گی ۔
    تمہیں فلاں کا واسطہ فلاں کا واسطہ ۔
    مگر مجھے کچھ سنائی نہیں دے رھا تھا ۔
    عبیحہ کی پھدی میرے لن کے ساتھ چپکی ھوئی تھی پھدی کا گیلا پن اور بالوں سے پاک ملائم پھدی کی گرمائش بتا رھی تھی کہ پھدی میں بھی آگ لگی ھوئی ھے ۔
    میں نے جوش میں بھی تھوڑا ہوش سے کام لیتے ھوے لن پھدی کے اندر کرنے کا ارادہ ملتوی کرتے ھوے ۔۔
    ویسے ھی چڈوں میں گھسے مارنا شروع ھوگیا اور ساتھ ھی عبیحہ کو کہنے لگ گیا ۔
    جان اب مجھے نہ روکو میں خود سے کنٹرول کھو بیٹھا ھوں ۔۔
    عبیحہ بولی ۔
    یاسر میں برباد ھو جاوں گی چھوڑ دو مجھے نہ کرو نہ کرو ۔
    میں نے اسکے بےوجہ شور شرابے کو خاموش کرانے کے لیے اسے دھمکی دی اور بولا ۔۔
    چپ ھوجاو مجھے ایسے ھی فارغ ھونے دو ورنہ میں نے تمہاری پھدی کے اندر سارا لن ڈال دینا ھے چپ کر کے مجھے کرنے دو اور خود بھی مزہ لو ۔۔
    میری دھمکی کارگر ثابت ھوئی کیونکہ عبیحہ کو میری کیفیت اور جنون دیکھ کر یقین ھوگیا تھا کہ مجھ پر اب اسکی چیخ پکار کا اثر نہیں ھونے والا ۔
    اسلیے خاموشی ھی بہتر ھے شاید خاموشی سے پھدی کا نقصان بچ جاے ۔۔
    میری بات سنتے ہی عبیحہ خاموش ھوگئی اور پھر آہستہ سے بولی یاسر اندر تو نہیں کرو گے میں گھسے مارتا ھوا بوا بولا کہا نہ کہ نہیں اندر کرتا اب خاموش ھوجاو ۔۔
    عبیحہ نے اثبات میں سر ہلایا
    اور خاموش ھوگئی ۔
    اب پوزیشن یہ تھی کہ عبیحہ کی شلوار اسکے گھٹنوں تک تھی اور اسکی قمیض گانڈ اور ناف سے اوپر تھی جبکہ میرا لن ھی صرف ٹراوزر سے باہر تھا ۔
    اور میرا ایک ھاتھ عبیحہ کی گانڈ کی دراڑ میں تھا اور دوسرا ھاتھ اسکی کے چوتڑے پر اور عبیحہ کے دونوں ھاتھ میرے کندھوں کو پکڑے ھوے تھے ۔
    اور میں اسکے نرم نرم روئی کے گولے جیسے چڈوں مین لن گھسیڑ کر گھسے مار رھا تھا اور ساتھ ساتھ اسکی گانڈ کے دراڑ میں ھاتھ ڈالے اسکی پھدی کو بھی انگلی سے رِب کررھا تھا اور دوسرے ھاتھ سے اسکے ملائم چوتڑے کو بھی دبارھا تھا ۔

    کچھ ھی دیر میں میرے لن نے پھدی کو رگڑ رگڑ کر مذید گیلا کردیا اور عبیحہ کی بھی آنکھیں بند ھونے لگ گئی اور میں نے ساتھ ھی اسکے نچلے ھونٹ کو منہ میں بھر لیا اور اسکا ہونٹ چوستے ھوے گھسے مارنے لگ گیا عبیحہ بھی اب گھسوں مین میرا ساتھ دینا شروع ھوگئی اور وہ بھی کبھی چڈوں کو ڈھیلا چھوڑتی تو کبھی کس کر لن کو جکڑ لیتی اور پھدی کو لن کے ساتھ رگڑتے ھوے میرا اوپر والا ہونٹ بےدردی سے چوستی کچھ ھی دیر میں عبیحہ کی سپیڈ مجھ سے بھی تیز ھوگئی اور پھر اس نے بہت ھی ذور سے چڈوں کو بھینچ کر میرے لن کو جکڑ لیا اور گانڈ کی دراڑ میں گھسے میرے ھاتھ کو جکڑ لیا اور پھر اسکی پھدی سے گرم گرم منی مجھے اپنے لن پر محسوس ھونے لگ گئی اور ساتھ ھی اسکے جسم نے زبردست جھٹکے کھانے شروع کردیے اور اسکے منہ سے غوں غوں مممممممم کی اوازیں میرے منہ کے اندر نکلنا شروع ھوگئی ۔عبیحہ کی پھدی مذید گیلی ھونے کی وجہ سے میرا لن بھی چکنا ھوگیا اور مجھے گھسے مارنے میں مذید آسانی اور ذیادہ مزہ آنے لگ گیا ۔
    میں نے اپنے گھسوں کی رفتار مذید تیز کردی اور چند ذور دار گھسوں کے بعد میرے لن سے منی کی پچکاریاں عبیحہ کے چڈوں میں ھی نکلنے لگ گئیں اور میں نے اسکی گانڈ کو مذید اپنی طرف کر کے اسے اپنے ساتھ چپکا لیا اور اسکے ہونٹ کو کھانے کے انداز میں چوسنے لگ گیا ۔۔
    میری قسمت ماڑی کہ مجھے یہ بھی ہوش نہ رھا کہ ہم کھڑے کہاں ہیں جگہ کونسی ھے کوئی بھی آسکتا ھے ۔
    اس سے پہلے کہ ہم دونوں سنبھلتے کہ اچانک ۔۔۔۔؟؟؟؟؟.





    ۔



    وہ بھولی داستاں جو پھر یاد آگئی سچے دھاگوں سے جُڑی اردو فنڈا کی ایک لازوال سٹوری

  6. The Following 17 Users Say Thank You to Xhekhoo For This Useful Post:

    abba (07-02-2019), Admin (04-02-2019), farooq1992 (04-02-2019), irfan1397 (05-02-2019), ksbutt (05-02-2019), Lovelymale (04-02-2019), MamonaKhan (05-02-2019), Manilove123 (08-02-2019), mentor (04-02-2019), Mian ji (04-02-2019), Mirza09518 (05-02-2019), mmmali61 (04-02-2019), musarat (04-02-2019), omar69in (04-02-2019), shikra (04-02-2019), sweetncute55 (04-02-2019), waqastariqpk (04-02-2019)

  7. #724
    Join Date
    Apr 2009
    Posts
    22
    Thanks Thanks Given 
    17
    Thanks Thanks Received 
    36
    Thanked in
    19 Posts
    Rep Power
    13

    Default

    بہت زبردست ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

  8. The Following 2 Users Say Thank You to farooq1992 For This Useful Post:

    MamonaKhan (05-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  9. #725
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    4
    Thanks Thanks Given 
    4
    Thanks Thanks Received 
    18
    Thanked in
    3 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    Bohat he zabardast maza aa gyazara jaldi update dea karo jani

  10. The Following 2 Users Say Thank You to Ms tari For This Useful Post:

    MamonaKhan (05-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  11. #726
    Join Date
    Oct 2009
    Location
    Vehari
    Posts
    945
    Thanks Thanks Given 
    33
    Thanks Thanks Received 
    17
    Thanked in
    5 Posts
    Rep Power
    285

    Default



    ہائے ظالم کہاں لا کر چھوڑا... میری ضوفی کو بھی بھلا دیا... عبیحہ باجی نے
    The Magician!
    Hide The Face Fuck The Base

  12. The Following 4 Users Say Thank You to mentor For This Useful Post:

    Lovelymale (04-02-2019), MamonaKhan (05-02-2019), sajjad334 (06-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  13. #727
    Join Date
    Aug 2008
    Location
    Islamabad
    Posts
    121
    Thanks Thanks Given 
    390
    Thanks Thanks Received 
    77
    Thanked in
    41 Posts
    Rep Power
    34

    Default

    Waaaahhhhh, kia shandar update di hai, pathar bhi pighlaa ke hi chora, balkeh pighlaya kia, paani paani kar diya. Maza agaya.

  14. The Following 2 Users Say Thank You to Lovelymale For This Useful Post:

    MamonaKhan (05-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  15. #728
    Join Date
    Oct 2018
    Posts
    4
    Thanks Thanks Given 
    2
    Thanks Thanks Received 
    9
    Thanked in
    3 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    Waah Zabardast. One of most awesome story i ever read on UF. Buht kam aisa hua hai k mainay office mai koi story parhi ho aur login ho k comment kiya ho. ....

  16. The Following 2 Users Say Thank You to Lost Soul For This Useful Post:

    MamonaKhan (05-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  17. #729
    Join Date
    Dec 2009
    Posts
    48
    Thanks Thanks Given 
    73
    Thanks Thanks Received 
    88
    Thanked in
    46 Posts
    Rep Power
    15

    Default

    Wah Xhekhooooo g wah ------- der aaid darust aaid-------- kia likhtay ho aap... alfaz nain mil rahay jis se aap ki tahreef kar sakoon

  18. The Following 2 Users Say Thank You to sajjad334 For This Useful Post:

    MamonaKhan (05-02-2019), Xhekhoo (04-02-2019)

  19. #730
    Join Date
    Dec 2018
    Posts
    3
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    4
    Thanked in
    1 Post
    Rep Power
    0

    Default

    great bhai lajawab kia shandar update d hy mza a gya

  20. The Following 4 Users Say Thank You to Kashif9395 For This Useful Post:

    abba (07-02-2019), MamonaKhan (05-02-2019), omar69in (04-02-2019), Xhekhoo (06-02-2019)

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •