اردو فنڈا کے بہترین سلسلے اور ہائی کلاس کہانیاں پڑھنے کے لئے ابھی پریمیم ممبرشپ حاصل کریں

Page 1 of 3 123 LastLast
Results 1 to 10 of 29

Thread: پہلا سیکس بھابھی کے ساتھ

  1. #1
    Join Date
    Jan 2010
    Posts
    16
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    3
    Thanked in
    2 Posts
    Rep Power
    14

    Default پہلا سیکس بھابھی کے ساتھ

    پہلا سیکس بھابھی کے ساتھ
    دوستوں یہ ان دنو ں کی بات ہے جب میں ہائی سکول میں پڑھتا تھاتب میرے مکان مالک کی بہو تھی جو بانجھ تھی ۔ اس کا نام عاصمہ تھا۔وہ دبلی پتلی گوری چٹی اور خوبصورت عورت تھی۔ یہ تب کی بات ہے جب مین نے اپنی ذندگی میں سیکس کو محسوس کیا تھا۔ سکول سے واپسی پر راستے میں ایک بک سٹال آتا تھا۔ میں اس پر رک کر مختلف کتابیں دیکھا کرتا تھا جس میں ہوس کی آگ، شباب ایک عذاب اور دوسری بہت سی سیکس کی کتب شامل تھیں۔ لیکن کبھی لینے کی ہمت نہیں ہوئی تھی۔
    میرا ایک دوست تھا ماجدتھا۔ ایک دن میں اس کے ساتھ اس کے گھر گیا وہاں اس نے مجھے سیکس کی ایک کتا ب دی جو میں گھر میں چھپ چھپ کر پڑھتا تھا۔ اسے پڑھ کر میرا لن کھڑا ہو گیااور مجھ پہلی بار چوت ، ممے اور گانڈ جیسی چیزوں کا پتہ چلا تھا۔ اب میں اکژ ایسی کتابیں پڑھا کرتا تھااور میرا عورتوں ، لڑکیوں کو دیکھنے کا نظریہ بدلا ورنہ اس سے پہلے میں سب کو بہنیں ہی بنا تا تھا۔بس یہاں سے ہی کہانی شروع ہوتی ہے۔ہمارے گھر میں وی سی آر تھا اور ہماری مکان مالک کے بیٹے سے خوب دوستی تھی۔ وہ ہمارے گھر میں فلم دیکھتے تھے۔ایک دن میں ایک فلم لایا، انگلش فلم تھی سپیسم جس میں ۳ نوڈ سین تھے۔ مجھے معلوم تھا کہ انگلش فلم میں نوڈ سین ہوتے ہیں لیکن عاصمہ بھابی کو نہیں پتہ تھا۔ میں گھر آیا تو امی گھر نہیں تھیں وہ باذار گئی ہوئی تھیں اور چابیاں عاصمہ بھابی کو دے کر گئی تھیں۔ میں وی سی آر پر فلم لگانے لگاتب عاصمہ بھابی پوچھنے لگی کہ کیا لگا رہے ہو عادل۔ میں نے کہا انگلش فلم ہے سپیسم سانپوں کی فلم ہے۔ بھابی بولی میں بھی دیکھ لوں۔ میں نے کہا نہیں بھابی آپ ڈر جاؤ گی۔ تو بھابی بولیں نہیں تم نہیں ڈرؤگئے تو میں کیوں ڈرؤں گی۔ تم لگا لو۔خیر میں نے فلم لگا لی اور بھابی کے ساتھ بیٹھ کر دیکھنے لگا۔ فلم میں ایک سین آیا جس میں ایک لڑکی نہا رہی ہوتی ہے تو ایک سانپ آتا ہے اور لڑکی کی چوچی پر کاٹتا ہے جس سے لڑکی مر جا تی ہے۔ یہ دیکھ کر بھابھی کہتیں ہیں ہٹاؤ اسے یہ گندی فلم ہے۔ میں نے کہا بھابھی آپ جاؤ یہ ایڈوینچر فلم ہے۔ بھابھی بولی یہ کیسی فلم ہے جس میں لڑکی نہا رہی ہے اور وہ بھی ننگی۔ میں نے کہا یار بھابھی جاؤ اور مجھے دیکھنے دو۔بھابی گئیں نہیں اور دیکھتی رہی۔ ۱۵ منٹ بعد ایک کس سین آیا بھابھی چپ رہی۔ پھر آدھے گھنٹے بعد ایک اور ننگا سین آیا۔ بھابھی پھر بھی چپ رہی۔ آخر میں بھابھی ڈر بھی گئیں جب سانپ کو مارتے ہیں۔ وہ مجھ سے کہنے لگئیں کہ بہت گندی فلم تھی۔ ایسی فلمیں مت دیکھا کرو۔ وہ مجھ سے آنکھیں بھی نہیں ملا رہی تھیں۔ خیر بات آئی گئی ہو گئی۔
    کبھی کبھی بھابھی مجھے پڑھاتی بھی تھیں۔ ایک دن بھابھی مجھے بیالوجی پڑھا رہی تھیں او رفراگ سیکس چیپٹر تھا۔ بھابھی نے جو کپڑے پہنے تھے وہ بھی سفید تھے بالکل بھا بھی کی طرح اجلے۔کپڑے سوراخوں والے ڈیزائن کے تھے۔ بھابھی نیچے برا نہیں پہنتی تھی۔ مجھے اس میں سے بھابی کے نپل دکھ رہے تھے۔ میں نے بھابھی سے پوچھا یہ سیکس میں کیا ہوتا ہے اور فراگ کے بچے کس طرح پیدا ہوتے ہیں۔ بھابھی ڈر گئی کہ یہ میں نے کیا پوچھ لیا ہے۔وہ بولی یہ ایک پراسس ہوتا ہے جس کرنے کے بعد فراگ انڈے دیتا ہے۔ میں نے کہا یہ کیسے ہوتا ہے تو بھابھی بولی کتاب میں سب لکھا ہے پڑھ لو وہاں سے۔میں نے پوچھا بھابھی کیا آدمی بھی سیکس کے بعد انڈے دیتا ہے۔ یہ سن کر بھابی ہنس دی اوربولی نہیں پاگل عورتیں بچے پیدا کرتیں ہیں اور میرے گال پر پیار سے نوچنے کر بولی بہت بے وقوف ہو تم تو۔میں نے پوچھا بھابھی کیسے سیکس کیا جاتا ہے۔ بھابھی بولی ۔ یہ بھی پوچھا جاتا ہے۔ جب تو بڑا ہوگا خد ہی پتا چل جائے گا۔میں نے کہا بھابھی آپ نے کبھی سیکس نہیں کیا ہے ؟ آپ کی تو شادی ہو چکی ہے پر آپ نے بچہ نہیں دیا ہے۔ بھابھی میرے اس سوال پر بھچکا کر رہ گئی۔ان کا چہرہ لال ہو گیا اور وہ نیچے چلی گئی۔اس کے بعد کافی دنوں تک میں نے بھابھی کی شکل نہیں دیکھی۔جب میں ان کے پاس پڑھنے کو گیا تو مجھے ان کے نوکر نے واپس کر دیا۔ پھر ایک دن میں فلم لایاسپائڈرمین اور بھائی صاحب کو بلالیا فلم دیکھنے کے لیے۔ان کے ساتھ بھابھی بھی آگئی۔سردیوں کے دن تھے۔ ہم سب ایک بستر میں لیٹے ہوئے تھے۔ بھابھی میر ے اور بھائی صاحب کے درمیان میں تھی۔فلم دیکھتے دیکھتے ہی بھابھی سو گئی۔ اور رضائی میں ہی ان کی ٹانگوں سے قمیض ہٹ گئی۔میں فلم دیکھ رہا تھا۔میں نے لیٹے ہوئے کروٹ لی ۔ دیکھابھابھی سو رہی ہے۔میرا ہاتھ نیچے بھابھی کی ٹانگوں سے لگا۔ مجھے احساس ہو ا کہ بھابھی کی قمیض اوپر اٹھی ہے۔میں نے ہمت کر قمیض تھوڑی اور اوپر اٹھاکربھابھی کا پیٹ سہلانہ شروع کردیا۔ان کے نرم و ملائم پیٹ پر ہاتھ پھیرتے ہوئے مجھے عجیب سے سرور مل رہا تھا۔ساتھ ساتھ میں بھابھی کو بھی دیکھ رہا تھاکہ وہ جاگ نہ جائیں۔ بھابھی گہری نیند میں تھی ۔ ان کو پتہ نہیں چل رہا تھا۔ پھر میں نے بھابھی کی شلوار میں آہستہ سے ہاتھ ڈالا اور ان کی رانیں سہلانہ شروع کر دیں۔ میرا لن شلوار میں کھڑا ہو کر جھٹکے کھا رہا تھا۔ بھابھی کی رانیں سہلاتے سہلاتے میں جھڑ گیا۔میں اٹھ کر باتھ روم گیااور اور لن صاف کیا۔ اور دوبارہ بستر میں آکر لیٹ گیا۔ بھابھی اب جاگ رہی تھی۔میں ڈر رہا تھا کہ شاید ان کو پتہ چل گیا ہے لیکن ان کی طرف سے خاموشی پا کر مجھے کچھ اطمینان ہوا۔ فلم ختم ہوئی تو بھائی صاحب اور بھابھی اٹھ کر چلے گئے۔ اگلے دن میں بھابھی کے پاس پڑھنے گیاتو وہ مجھے غصے سے دیکھ رہی تھی۔ میں پاس بیٹھا تو وہ مجھے کہنے لگئیں کہ رات کو میری ٹانگوں کے ساتھ کیا کر رہے تھے۔ میں نے کہا کچھ نہیں ۔ وہ کہنے لگی ابھی تمہاری امی کو شکایت لگاتی ہوں۔ میں رونے لگامجھ معاف کر دیں آئندہ ایسا نہیں ہو گا۔پھر کتاب نکال کر پڑھنے لگا۔ کچھ دیر بعد بھابھی مجھ سے پوچھنے لگی میں تمہیں کیسی لگتی ہوں۔ یہ بہت ہی عجیب سوال تھا۔ میں پریشان ہو گیا۔ میں نے کہا بھابھی مجھے آپ بہت اچھی لگتی ہو۔ آپ بہت پیاری ہو۔بھابھی مجھ سے پوچھنے لگی تمہیں میرے پیر سہلانہ اچھا لگتا ہے۔ میں بھابھی کی طرف دیکھنے لگااور کہا ہاں بھابھی۔ بھابھی نے میرا ہاتھ پکڑ لیا۔ ان کے نرم نرم ہاتھ کا لمس پاتے ہی میرے جسم میں چیونٹیاں رینگنے لگئیں۔انہوں نے میرا ہاتھ اپنی ٹانگوں پر رکھ دیا۔ میں ان کو سہلانے لگا۔ مجھے بہت اچھا لگ رہا تھا۔ بھابھی پوچھنے لگی عادل کیا تمہا را دل کرتا ہے کہ اپنی بھابھی کو ننگا دیکھو۔ میں نے کہا بھابھی کرتا تو ہے اور کبھی کبھی ذینے پر سے جھانک کر آپ کو نہاتے ہوئے بھی دیکھ لیتا ہوں۔ یہ سن کر بھابھی شرما گئی۔ ہائے یہ سب کب ہوا مجھے تو پتہ بھی نہیں چلا۔ میں نے کہا بھابھی بس آپ کی کمر ہی نظر آتی ہے اور کچھ نہیں دیکھا۔بھابھی بولی کیا تم سچ میں اپنی بھابھی کو ننگا دیکھناچاہتے ہو۔ تمہاری بھابھی بہت سندر ہے۔میں نے شرماتے ہوئے کہا جی بھابھی۔ بھابھی بولی تم نے پہلے مجھ سے کیوں نہیں کہا ۔ میں نے کہا کیا بھابھی آپ سچ میں مجھے ننگی ہو کر دکھاؤ گی۔یہ سن کر بھابھی کھلکھلا کر ہنس دی اور کہنے لگی میرے بھولے دیور راجا۔ کہو تو ابھی ہو جاؤں۔ یہ سنتے ہی میں بھابھی سے لپٹ گیا۔بھابھی مجھے پیار کرتے ہوئے بولی لو جیسا چاہے دیکھ لو۔ پر تم کو قسم ہے چودنا نہیں۔ میں نے پوچھا چودنا کیا ہوتا ہے۔ بھا بھی بولی وہ بھی سکھا دوں گی ابھی صرف مجھے ننگاکرو اور پیار کرو۔ میں نے بھابھی کی قمیض اتاراب بھابھی برا اور شلوار میں تھی۔ نیٹ کی برا میں سے دودھ کی طرح سفید چھاتیاں جھلک رہی تھی۔ بھابھی پھر گھوم کر بولی لو اب بر ا اتا ر کر پورا نظارہ کرو۔ میں نے برا کا ہک کھول دیا اور بھابھی نے برا اتار کر میرے سامنے منہ کیا۔ کیا مست نظارہ تھا۔ دو خوبصورت تربوذ کی طرح کی چھاتیاں جن پر براؤن رنگ کے نپل تھے۔ میں تو پاگل ہو رہا تھا یہ منظر دیکھ کر۔ بھابھی کا جسم بے داغ اور دودھ کی طرح سفید تھا بس نپل براؤن تھے باقی سب کچھ سفید تھا۔ میرا لن لوہے کی اکڑا ہو تھا ۔بھابھی نے مجھے اپنے ساتھ چمٹا لیا۔ساتھ میں بھابھی نے میرے کپڑے بھی اتروا دیئے ۔میں نے بے اختیار بھابھی کے گالوں کو چومنا شروع کر دیا۔ پھر میں نے بھابھی کے ہونٹوں پر کس کیا۔ بھابھی بولی ایسے نہیں اور میرے ہونٹ اپنے ہونٹ میں دبا کر میرے ہونٹ چوسنا شروع کر دیے۔مجھے بہت مزا آرہا تھا میں نے بھی بھابھی کے ہونٹ چوسنا شروع کر دیے ان کے ہونٹوں کا رس مجھے بہت اچھا لگ رہا تھا۔ میں لگا تار بھابھی کے ہونٹو ں کا رس ۱۰ منٹ تک پیتارہا۔اس دوران میرے لن نے جھٹکا کھاتے ہوئے پانی چھوڑ دیا۔ بھابھی بولی میرے راجا اتنی جلدے خلاص ہوگئے۔میں بولا بھابھی مجھ سے برداشت نہیں ہو رہا تھا۔ بھابھی ہنس کر بولی کیا اپنی بھابھی کا دودھ نہیں پیو گئے۔میں نے کہا بھابھی کیوں نہیں پیؤگا۔ یہ سنتے ہی بھابھی نے اپنی چوچی میرے منہ میں ڈال دی جسے میں مزے سے چوسنے لگا۔ بھابھی کی میٹھی میٹھی چوچیا ں چوسنے کا بہت مزا آرہا تھا۔ میں لگاتار چوچی چوس رہا تھا۔ بھابھی نے میرا ہاتھ اپنی شلوار کے اندر چوت کے اوپر رکھ دیااور بولی اس کو سہلاؤ۔میں نے ذورذور سے سہلانہ شروع کر دیا۔ ۵ منٹ بعد بھابھی کی چوت نے پانی اگلنا شروع کر دیا اور بھابھی نے مجھے پیار سے چومنا شروع کر دیا۔ میں ذندگی میں پہلی بار عورت کے جسم کی لزت سے آشنا ہوا تھا۔میں پھر فارغ ہو گیا۔ بھابھی بولی دھت جب دیکھو دھار مار دیتا ہے۔ ابھی اناڑی ہے نا۔ کچھ نہیں ہوتا سب سکھا دوں گی۔پھر بھابھی نے اور میں نے کپڑے پہن لیے ۔ بھابھی کہنے لگی۔اب مجھ تنگ نہیں کرنا جب پیار کرنا ہو ، دن میں میرے پاس آجانا۔چلو اب پڑھائی کرتے ہیں۔میں نے کہا بھابھی یہ تو بتا دو چودنا کس کو کہتے ہیں ۔ بھابھی بولی یہ جو لن ہے اس کو کھڑا ہونے کے بعد چوت کے سوراخ میں ڈال کر جھٹکے مارتے ہیں اور فارغ ہوتے ہیں اس کو چودنا کہتے ہیں۔میں نے پوچھا کیا بھائی صاحب بھی آپ کو ایسے ہی چودتے ہیں۔ بھابھی بولی اور نہیں تو کیا۔میں نے کہا بھابھی میں بھی آپ کو چودوں گا۔ بھابھی بولی نہیں ابھی تم بہت چھوٹے ہو۔جب بڑے ہو جاؤ گئے پھر جیسے چاہے چودنا۔ ابھی اوپر سے ایسے ہی مزے لو۔ کیا اس طرح مزا نہیں آتا۔ میں نے کہا آتا ہے۔تو بھابھی بولی تو پھر اور کیا چاہی ہے۔ پھر میں بھابھی سے روز یوں ہی پڑھتا کبھی چوچی چوستے ہوئے۔ کبھی چوت میں انگلی کرتے ہوئے ، کبھی ٹانگیں سہلاتے ہوئے۔چوچی تو روز ہی چوستا تھا کیونکہ چوچی چوسنے میں بہت مزا تھا۔ یہ تھی میرے کہانی اس کے بعد میں نے بھابھی کو چودا بھی۔ وہ پھر کبھی اگلی کہانی میں بتاؤں گا۔ ابھی میری شروعات کو پڑھیں اور بتائیں کہ کیسی لگی میری کہانی۔ اب اجازت دیجئیے۔
    Last edited by Story Maker; 18-10-2018 at 07:14 PM.

  2. The Following User Says Thank You to nani420 For This Useful Post:

    omar69in (16-12-2018)

  3. #2
    Join Date
    Mar 2009
    Posts
    7,299
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    20
    Thanked in
    20 Posts
    Rep Power
    1877

    Default

    Dear nani420 : Tumhari yea Urdu Font main kahani kafi achi lagi hai dost. Chund alfaz ke hijjay drust nahi hein. Mujhy umeed hai ke jub tum apni agli kahani likhu gey tu aur bhi behtur likhu gey.

    Thanks!

  4. #3
    Join Date
    Oct 2010
    Location
    Lahore
    Posts
    136
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    71

    Post

    kafi achi story h dear....
    likhne ka silsila jari rakhna mje umd h tm bht acha likh skte ho....
    thnx for sharing yr.....

  5. #4
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    every where
    Posts
    124
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    5
    Thanked in
    4 Posts
    Rep Power
    23

    Default

    nice story................ thanks for sharing

  6. #5
    Join Date
    Apr 2009
    Posts
    27
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    14

    Default

    nice story................ thanks for sharing ,,,,,,,, lakin abe mahnet ke zroorat ha

  7. #6
    Join Date
    Apr 2010
    Location
    c:\windows\system32\virus\Me...ςεяτίfί3δ ρнγ&#35
    Posts
    148
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    12
    Thanked in
    6 Posts
    Rep Power
    25

    Default

    kahani achi likhi hai dear tum nay isko jald hi update kar dena

  8. #7
    Join Date
    May 2009
    Location
    Hazara Provens
    Posts
    193
    Thanks Thanks Given 
    2
    Thanks Thanks Received 
    2
    Thanked in
    2 Posts
    Rep Power
    31

    Default

    Achi koshash ha
    keep it up
    thanks
    BOOBS LOVER

  9. #8
    Join Date
    Aug 2010
    Posts
    1
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    0

    Angry

    achi likhi hai dear tum nay isko jald hi update kar dena.

  10. #9
    Join Date
    Oct 2010
    Posts
    290
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    42

    Default

    Greeeeeeeeeeeet yar zabardsat kahani likhee ha up date karo mazeed foran.
    Thanks for sharing

  11. #10
    Join Date
    Oct 2010
    Posts
    1
    Thanks Thanks Given 
    0
    Thanks Thanks Received 
    0
    Thanked in
    0 Posts
    Rep Power
    0

    Default

    zabardast kahani likhee hai yaar
    kaash key hamay bhi aisi bhabhi mil jati to hum bhi teen age me sex ke mazay lete

    agla hisa jald he bhaijo

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •